اعلیٰ افسرنے دوسرے نکاح کیلئے ڈرامہ کیا،ایس ایچ او

firing-policeکراچی ایس ایچ اوتیموریہ نے بتایا کہ پولیس مغوی کی اہلیہ سے موبائل فون نمبر لے کر اس نمبر کی لوکیشن چیک کرائی تو نیاناظم آباد منگھوپیر کی لوکیش معلوم ہوئی پولیس نے بھاری نفری کے ہمراہ مذکورہ لوکیشن کے ایڈریس پر چھاپہ مارا اور قریب رہائشی افراد سے معلومات بھی حاصل کی لیکن مغوی سبط انور بازیاب نہیں ہوسکا۔ایس ایچ او نواز بروہی نے بتایا کہ پولیس کی تھوڑی سی ہلچل پر ہی پراسرار طور 11مارچ کی صبح اچانک سبط انور گھر پہنچ جاتاہے اور پولیس کو اس کے بھائی مدعی مقدمہ نے فون کرکے اطلاع دی کہ بھائی گھر پہنچ گیا۔ایس ایچ او کے مطابق سبط انور پورٹ قاسم میں بطور منیجنگ ڈائریکٹر اور باریش شخص ہے اس نے دوسری شادی کرنے کے لیے پہلی بیوی سے اغوا کا ڈرامہ رچایا تھا کیونکہ اس کی شادی کو کافی عرصہ گزر چکا تھا اورکوئی اولاد نہیں ہے۔پولیس کے مطابق پولیس نے جب سبط انور کا بیان لیا تو اس کا کہنا تھا کہ چند روز قبل قائد آباد میں میری کار کی ٹکر سے ایک خاتون کی ٹانگ ٹوٹ گئی تھی۔ اس کے اہل خانہ نے مجھے سنگین نتائج کی دھمکیاں دی تھی کہ تمھیں اب اس لڑکی سے شادی کرنا پڑے گی لیکن پولیس کے چھاپوں کے خوف سے انھوں نے مجھے چھوڑ دیا۔ایس ایچ او نے مزید بتایا کہ سبط انور ابھی انکار کررہا ہے کہ اس کا نکاح نہیں ہوا لیکن چند ہی روز میں معلوم ہوجائے گا کہ اس نے نکاح کیا ہے کہ نہیں پولیس واقعے کی مزید جانچ کررہی ہے۔

Top