قائد کو سلام، سوشل میڈیا پر اہم پیغام

Quaid-e-azam25 دسمبر قائد اعظم محمد علی جناح کے یوم پیدائش پر پاکستان سمیت دنیا بھر میں جہاں بھی پاکستانی بستے ہیں سب نے اپنے انداز میں ان کی عظمت کو سلام بھیجا۔ ایک نا ختم ہونے والا پیغامات کا سلسلہ جاری رہا، تقریبات ہوئیں، کانفرنسز منعقد کی گئیں اور عظیم قائد کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ سوشل میڈیا پر بھی بانی پاکستان کو پاکستانیوں نے دل کھول کر خراج پیش کیا۔ کچھ ایسے ہی پیغامات قارئین کراچی اپڈیٹس کی نذر کیے جارہے ہیں۔

موسیٰ غنی کہتے ہیں
To the diversely beautiful Pakistan Jinnah envisioned.
“You are free: to go to your temples, you are free to go to your mosques or any other place or worship in this State of Pakistan. You may belong to any religion or caste…

ارم فاطمہ لکھتی ہیں
ایک قائد ایک رہنما ،ایک محسن کی یاد دلاتا ہے جس کا خواب تھا ’’پاکستان‘‘ انہیں امید تھی نوجوان نسل سے کہ وہ اسے سرسبز اور شاداب رکھیں گے ۔ دعا ہے اج کی نسل اس کی ترقی اور کامیابی کے لیے کوشاں رہے اور قائد کے فرمان کو اپنا رہنما بنائے آمین

عالیہ ذوالقرنین نے پیغام میں کہا
یوم ِ قائد کے موقع پر میرا پیغام یہ ہے کہ قائد اعظم اسلام سے محبت کرنے والے ایک عظیم لیڈر تھے اس لیے انہیں زبردستی سیکولر ثابت کرنے کی کوشش نہ کی جائے اور یہ ملک اسلام کے نام پر حاصل کیا گیا تھا اس لیے اسے اسلام پر ہی قائم رکھنے میں، خواہ آپ کسی بھی مقام پر ہیں، آپ اپنا اپنا کردار ادا کیجئے-

زہرا تنویر نے کمنٹس کیے
25 دسمبر ہمارے قائد کی پیدائش کا دن ہمیں ایک ایسا لیڈر ملا جو شاید پھر کبھی نہ ملے۔ قائداعظم جیسے لیڈر دنیا میں ایک دفعہ ہی آتے ہیں۔ اگر قائداعظم نہ ہوتے تو آج ہم آزاد ریاست میں بیٹھ کر چور بازاری کر کے حکمرانی نہ کر رہے ہوتے۔

دیا خان بلوچ کہتی ہیں
25 دسمبر، اس عظیم شخصیت کی پیدائش کا دن ہے، جو ہم سب کے لئے ایک امید کی کرن لاءے ۔ قائد اعظم محمد علی جناح کا یہ احسان ہم زندگی بھر نہیں بھول سکتے ۔ آزادی ایک نعنت ہے جس کے لئے ابھی بھی بہت سی قومیں جدوجہد کر رہی ہے ۔میرا پیغام وہی ہے جو ہمارے قائد نے دیا۔ایمان، اتحاد اور تنظیم۔

گل فراز خان لکھتے ہیں
قائداعظم وہ عظیم شخصیت ہیں جنھوں نے برصغیر کے مسلمانوں کیلئے ایک الگ اسلامی ریاست کے قیام کیلئے جدوجہد کی اور کامیاب بھی ہوئے لیکن ستر سال گزرنے کے باوجود پاکستان صحیح اسلامی ریاست کی تعریف پر پورا نہیں اترتا جس کا مطلب ہے کہ قائد کے نظریہ سے غداری کی جارہی ہے-ہمیں قائدکے نظریے سے وفاداری کرتے ہوئے پاکستان کو ایک اسلامی اور فلاحی ریاست بنانے کیلئے جدوجہد کرنی چاہئے-

صائقہ حسن کا کہنا ہے
پاکستان کی کامیابی و کامرانی اس عرضِ پاک کی جاودانی اور اس پاک سرزمین کے لوگوں کو پیغام حیات دینے والی ہستی قائداعظم کو ہم دل وجان سے عقیدت پیش کرتے ہیں اس دھرتی کے لوگ اس شخصیت کی کاوشوں کو اسی صورت میں سراہ سکتے ہیں جب نوجوان خود ملک کی خدمت پر معمور ہوں،قائد کا پیغام ،ہم سب کے لیے فرمان۔

Top