پہلی اسلامی ایٹمی طاقت (سید عمبر فاطمہ)

youm e takberہر قوم کی زندگی میں بعض ایسے اہم واقعات اور لمحات آتے ہیں جن کی اہمیت اورحیثیت کئی سال گزارجانے کے بعد بھی کم نہیں ہوتی کچھ واقعات قوموں کے لیے عزت ووقار کا بعض بنتے ہے اور کچھ واقعات ذلت ورسوائی کابعض بن جاتے ہے۔ آج سے 20 سال پہلے 28 مئی 1998ءکو سہ پہر 3:20 کا وقت پاکستان کی تاریخ کا ایک ایسا لمحہ ہیں جس کے احساس نے پوری قوم اورعالم اسلام کے مسلمانوں کا سر فخرسے بلند ہوگیا۔
28مئی ”یومِ تکبیر “اور”یومِ تشکر“پاکستان کی تاریخ کا اہم دن جس دن پاکستان نے بلوچستان کے ضلع” چاغی“ کے پہاڑی سلسلے” را س کو ہ“ کے دامن میں 5ایٹمی دھماکے کر کے دنیاکی ساتواں ایٹمی طاقت بن گیا اور اسلامی دنیا کی پہلی ایٹمی قوت بننے کا بھی اعزاز حاصل کیا۔ ایٹمی قوت بننے کے ساتھ ہی پاکستان کادفاع ناقابل تسخیراور بھارتی حکمرانوں کا اکھنڈ بھارت کا خواب ہمیشہ کے لیے چکنا چور ہوگیا۔

1947ءمیں بھارت نے ایٹمی دھماکا کر کے پاکستان کو دبانے کی کوشش شروع کی تو پاکستان کے اس وقت کے وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو نے ملکی دفاع کو مضبوط کرنے کے لیے ایٹمی قوت بنانے کا فیصلہ کیا۔ بھارت نے مئی1994 میں ایک بار پھر ایٹمی دھماکے کیے اور اس کے بعد تو جیسے وہ خطے کا سپرپاور بن گیا اور اس نے ہر جگہ پاکستان کے لیے دھمکی آمیز لہجے کا استعمال شروع کردیا۔ جس کے جواب میں 28مئی 1998ءکو اس وقت کے وزیراعظم میاں محمد نوازشریف کی حکومت میں ڈاکٹرعبدالقدیرخان نے چاغی میں 5 دھماکے کرکے بھارتی برتری کا خاتمہ کردیا اور پاکستان کے دفاع کو ناقابل تسخیر بنادیا اور بھارت کو منہ توڑ جواب دیا۔

آج ہم شایدیہ بھول گئے ہے کہ ہم ایٹمی طاقت رکھنے والی قوم ہے اسی لیے ہم اپنے مسلمان بہن بھائی پر ہونے والے ظلم پر ایک خاموش تماشائی بنا ہوئے ہیں ۔ آج تک کشمیر کا مسئلہ حل نہ ہوسکا۔  کشمیر میں روز ہزاروں مسلمانوں کا خون بہایا جاتا ہے لیکن  ہم اندھے بنے ہوئے ہیں۔ فلسطین، غزہ، شام اور بہت سارے مسلمان ممالک جو یہود و نصاریٰ کے مظالم کا شکار ہیں لیکن ایٹمی طاقت ہونے کے باوجود ہم اندھے ، گونگے اور بہرے بنے ہوئے ہیں۔

ہمارے دشمن یہ بھول گیا  کہ اگر ہماری سوئی ہوئی قوم جاگ اٹھی اور متحد ہوگی تو ابھی بھی ڈاکٹر عبدالقدیر خان جیسے بہت سے لوگ موجود ہیں۔ اگر ہم آج بھی کرسی کی سیا ست چھوڑ کر اور متحد ہوجائیں اور صرف ایک قوم ہو کر سوچے تو ہم آج بھی اپنے دشمنوں کا مقابلہ ڈٹ کر سکتے ہیں۔ پوری دنیا کو یہ یاد دلاسکتے ہیں کہ ہم ایٹمی قوت رکھنے والی ایک مضبو ط قوم ہیں جس کا مقابلہ کرنا ناممکن ہے۔

Top