طویل ترین چاند گرہن ختم،کراچی میں دیکھا نہ جاسکا

Blood-Moon
کراچی رواں صدی کا طویل ترین چاند گرہن ‘بلڈ مون’ پاکستان میں سوا چھ گھنٹے نظر آنے کے بعد ختم ہوگیا ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق بلڈ مون پاکستان میں جمعے کی رات 10 بج کر 15منٹ پر شروع ہوا، جو رات ساڑھے 12 بجے سے سوا 2 بجے تک اپنے عروج پر رہا۔ پاکستان میں صبح ساڑھے چار بجے تک بلڈ مون کا نظارہ کیا گیا۔یہ اس صدی کا طویل ترین چاند گرہن تھا، جس کا دورانیہ ایک گھنٹہ بیالیس منٹ اورستاون سیکنڈ تھا، بلڈ مون ایشیاء، افریقہ اور یورپ میں دیکھا گیا۔
دوسری جانب سائنسدانوں نے جامعہ کراچی میں چاند گرہن دیکھنے کا انتظام کیا اور ہائیڈرواینالائسز پروسس کے ذریعے چاند گرہن کے دوران سمندر میں ہونے والی تبدیلی کا جائزہ لیا۔
کراچی میں مکمل چاند گرہن دیکھنے کے لیے جامعہ کراچی کے شعبے انسٹی ٹیوٹ آف اسپیس سائنس اینڈ پلینیٹری آسٹروفزکس (اسپا) میں انتظامات کیے گئے تھے۔پاکستانی سائنسدانوں ڈاکٹر اورنگزیب الہافی، ڈاکٹر ظفر سیفی، ڈاکٹر عمر فاروق اور دیگر نے دوربین سے چاند گرہن کا مشاہدہ کرنے کی کوشش کی لیکن کراچی میں بادلوں کے باعث بلڈ مون کا نظارہ نہیں کیا جاسکا۔اس دوران سمندر میں مدوجزر کا مشاہدہ کرنے کے لیے سمندر سے لائے گئے پانی کا مشاہدہ ہائیڈرواینالائسز کے ذریعے کیا گیا۔

Top