صوبائی حکومت کرپشن کاخاتمہ کرے گی،وزیراعلیٰ سندھ

murad-ali-shah-aکراچی وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ نیب کے قانون (سندھ سیکشن)کی منسوخی کے بعد نیب سندھ میں کوئی کارروائی نہیں کرسکتی ہے ۔ ہم نے اپنا اینٹی کرپشن کا قانون نافذکیا ہے اور اب صوبائی حکومت اپنے طورپر صوبے سے کرپشن کا خاتمہ کرے گی۔انہوں نے یہ بات آج سینٹ پیٹرکس کیتھڈرال چرچ صدر کے دورے کے بعد میڈیا سے باتیں کرتے ہوئے کہی۔جہاں پر انہوں نے آج اقلیتوں کے بین الاقوامی دن کے موقع پر کرسچن کمیونٹی کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا۔ اس موقع پر صوبائی وزرا ڈاکٹر مکیش کمار چاولہ ، کٹھو مل جیون، پی پی کے رہنما نوید اینتھونی ،ایم پی اے سعید غنی و دیگر اُن کے ہمراہ تھے ۔انہوں نے کہا کہ اب صوبائی کیسزنیب کے دائرہ اختیار میں نہیں آتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہماراموقف بہت واضح رہے کہ اینٹی کرپشن صوبائی سبجیکٹ ہے ۔انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کرپشن کے خلاف جنگ کے لیے صوبائی قانون کو مزید مستحکم بنائے گی۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ گورنر سندھ ایپکس کمیٹی کے رکن نہیں ہیں، قبل ازیں گورنر کو اجلاس میں خصوصی شرکت کے لیے دعوت دی جاتی تھی۔پولیس اہلکاروں کے حالیہ قتل کے حوالے سے بات کرتےہوئے انہوں نے کہا کہ انہوں نے ان ٹارگٹ کلنگ کو روکنے کے لیے سخت اقدامات اٹھائے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس پر کام کررہے ہیں کہ کونسا گروپ پولیس فورس کی ٹارگٹ کلنگ میں ملوث ہے اور انہوں نے کہا کہ وہ ان مذموم عناصر کا جلد قلع قمع کردیا جائیگا۔آئی جی سندھ کے متعلق وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ ان کا معاملہ عدالت میں ہے لہٰذا وہ اس پر بات نہیں کریں گے۔ قبل ازیں جب وزیر اعلیٰ سندھ سینٹ پیٹرکس کیتھڈرال چرچ پہنچے تو عیسائی برادری کے بشپ جوزف کٹس، فادر، صالح ڈیگو اور فادرماریو روڈِک ان کا خیر مقدم کیا اور اُن پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں اور انہیں پھولوں کے گلدستے پیش کیے۔

Top