قربانی ہرصاحب نصاب مسلمان پرواجب ہے،مفتی نعیم

mufti naeemکراچی جامعہ بنوریہ عالمیہ کے مہتمم وشیخ الحدیث مفتی محمد نعیم نے کہاکہ قربانی ہر صاحب نصاب مسلمان پر واجب ہے، جانور کی قربانی کے بجائے رفائی کام یا غریب کو رقم دینے سے واجب ادا نہیں ہوگا، عید الاضحی کے دن اللہ تعالی کی بارگاہ میں جانور کا خون ہی بہایا جانا ہی محبوب ترین عمل ہے،دینی اداروں میں اجتماعی قربانی کا اہتمام شرعی تقاضوں کے مطابق قربانی کا بہترین ذریعہ ہے۔جمعہ کو جامعہ بنوریہ عالمیہ میں میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے رئیس وشیخ الحدیث مفتی محمدنعیم نے کہاکہ قربانی کی تاریخ قدیم ہے ، عیدالاضحی میں جو قربانی کی جاتی ہے وہ حضرت ابراھیم و حضرت اسماعیل علیہما السلام کی قربانی کی یادگارہے،عیدالاضحیٰ کے ایام میں اللہ تعالی کی بارگاہ میں جانور کا خون ہی بہایا جانامحبوب ترین عمل ہے،واجب قربانی کے بدلے سونا چاندی خرچ کرے یارقم سے کوئی خیراتی یا رفاہی کام کرے تواس سے واجب ادا نہیں ہوگاجانور کے گلے پر چھری پھیرنا ضروری ہے ،انہوں نے کہاکہ لاکھوں مسلمان حج کے موقع پر قربانی کرتے ہیں بلکہ ہر سال ڈیڑھ ارب سے زائد مسلمان سنت ابراھیمی پر عمل کرتے ہیں اور رہتی دنیاتک اس سنت پر عمل ہوتا رہے گا۔انہوں نے کہاکہ قربانی ہر مسلمان صاحب نصاب عاقل بالغ مقیم مرد عورت پر واجب ہے ، جس کے پاس ساڑھے سات تولہ سونا یا ساڑھے باون تولہ چاندی یا اُس کے برابر ضرورت سے زاید رقم و تجارتی جائیداد ہو تو اس پرقربانی واجب ہے ،زکوۃ کی طرح اس میں سال گزرنے کی شرط نہیں ہے

Top