ہیٹ اسٹروک سے متعلق ڈاکٹر اعجاز بلوچ کا حصوصی انٹرویو

dr aijaz
کراچی اپ ڈیٹس: ڈاکٹر اعجاز آپ اک سرکاری ہسپتال میں ذمہ داریاں نبھا رہے ہیں ۔ ہیٹ اسٹروک کے متعلق بتائیں؟
ڈاکٹر اعجازبلوچ : ہیٹ اسٹروک اک ایسی بیماری ہے کہ جو شدید گرمی میں زیادہ دیر تک رہنے کے باعث واقع ہوتی ہے اورحبس کے ماحول میں بھی زیادہ دیر تک رہنے کے باعث بھی یہ بیماری لاحق ہوجاتی ہے۔ ہیٹ اسٹروک سر سے پاؤں تلک جسم کے مختلف حصوں کو نقصان پہنچانے کا باعث بنتی ہے۔
کراچی اپ ڈیٹس: مریض کو کیسے معلوم ہوتا ہے کہ اسے ہیٹ اسٹروک ہوگیا ہے یا دوسرے لفظوں اس کی علامات کیا ہوتی ہیں ؟
ڈاکٹر اعجازبلوچ : ہیٹ اسٹروک کی علامات کچھ اس ہیں کہ مریض کے سر میں درد ہوتا ہے جس کی شدت بڑھتی ہے۔اسے چکر آتے ہیں ۔جلد خشک ہونے کے ساتھ سرخ ہوجاتی ہے۔ دل تیز دھڑکتا ہے اور اس کے ساتھ سانسیں بھی پھولتی ہیں ۔مریض کے اوپر بے ہوشی کی کیفیت طاری ہوتی ہے ۔سخت گرمی کے باوجود اسے پسینہ نہیں آتا ہے۔ مریض کے پیٹ میں متلی سی بھی واقع ہوتی ہے اور بسا اوقات اسے قے بھی آجاتی ہے۔ متعدد بیماریوں کی علامات کسی حد تک ایک ہی طرح کی ہوتی ہیں جس کے باعث کسی بھی طبیب کو مرض کی تشخیص میںکچھ وقت لگ جاتا ہے تاہم اس بیماری میں ان علامات کے سامنے آجانے کے بعد فوری طور پر کسی ڈاکٹر سے رجوع کر لینا چاہئے ۔
heat
کراچی اپ ڈیٹس : کسی بھی مریض کو ہیٹ اسٹروک ہوجانے کے بعد فوری طور پر کیا طبی امداد دی جانی چاہئے؟
ڈاکٹر اعجازبلوچ : مریض کو فوری طور پر کسی بھی پرسکون ٹھنڈی جگہ پر منتقل کریں ۔ اس کے جسم سے غیر ضروری کپڑے اتاریں اور جسم پر ٹھنڈا پانی ڈالیں ۔ اس عمل کو ایک تولیے کے ذریعے بھی کیا جاسکتا ہے۔ تولیے کو پانی میں بھگوئیں اور مریض کے جسم پر ڈالیں ۔ مریض کی گردن ، بغل اور کمر کو برف سے ٹکور دیں ۔ یہ ابتدائی طبی کام ہیں کہ جو اس مریض کے تکلیف کو دور کرنے کیلئے اختیار کئے جانے چاہئیں ، اس کے بعد فوری طور پر کسی ہسپتال میں منتقل کر کے اس کا علاج کرا جانا چاہئے ۔
کراچی اپ ڈیٹس: ہیٹ اسٹروک سے بچنے کیلئے کیا احتیاط کرنی چاہئے؟
ڈاکٹر اعجاز : ہیٹ اسٹروک سمیت گرمی سے بچنے کیلئے ہلکے رنگوں کے پتلے اور ڈھیلے ڈھالے کپڑے استعمال کرنے چاہئے ۔سر کو سورج کی شعاعیں سے محفوظ رکھنے کیلئے سر کو ڈھانپ کر رکھنا چاہئے اور اس کے ساتھ ہی زیادہ مقدار میںپانی پینا چاہئے۔ اس کے علاوہ مختلف پھلوں کے جوس پینے چاہئے ۔ بسا اوقات جسم میں نمکیات کی کمی بھی اس موسم میں واقع ہوجاتی ہے ایسے صورتحال میں او آر ایس اور لیموں پانی کو بھی زیادہ مقدار مین پینا چاہئے ۔
gana
کراچی اپ ڈیٹس : حکومت نے اس بیماری سے بچاؤ اور علاج کیلئے ہسپتالوں میں کوئی خصوصی انتظامات کئے ہیں ؟
ڈاکٹر اعجاز بلوچ : محکمہ صحت سرکاری ہسپتالوں میں اس بیماری سمیت دیگر بیماریوں کے پھیلاؤ سے روکنے اور ان کے علاج کیلئے اقدامات کرتی ہیں ، ہیٹ اسٹروک کے حوالے سے بھی ذرائع ابلاغ کے ساتھ بینرز اور نوٹس لگاکر عوام کو احیتاطی تدابیر اختیار کرنے اور بچاؤ کے احکامات دیتی ہیں تاہم یہ اب عوام کی ذمہ داری ہے کہ وہ ان احکامات پر عمدرآمد کرے اور اپنے آپ سمیت دیگر لوگوں کو بھی ہیٹ اسٹروک سے محفوظ رکھنے کی کوششیں کریں۔ یہاں یہ وضاحت ضروری سمجھتا ہوں کہ ہیٹ اسٹروک اک قابل علاج مرض ہے اور کسی بھی فرد کو اگر یہ ہوتا ہے تو اسے فوری طور پر طبی امداد دینے کے ساتھ اسے کسی بھی قریبی ہسپتال میں لے جانا چاہئے ۔ حکومتی اقدامات پر عملدرآمد کے ساتھ ازخود احتیاط کے ذریعے ہی عوام ہیٹ اسٹروک سے بچ سکتے ہیں ۔
hafikht@gmail.com


About abdur rahman

Biographical Info

Top