سوشل میڈیا انسانیت سوز مظالم میں شریک (خصوصی رپورٹ)

twitter facebook1فیس بک انتظامیہ سمیت سوشل میڈیا کے تمام ذرائع بھی انسانیت سوز مظالم میں بھارتی لابی کو خوش کرنے کیلئے ان کی صفوں میں شامل ہوگئے۔ کشمیری عوام کے ہاتھوں بھارت ، اسرائیل اور امریکہ سمیت مغرب کے مظالم کا مشترکہ جنازہ نکل کر رہے گا۔ سات لاکھ سے زائد بھارتی فوجیوں کی موجودگی بھی حق صداقت و خودارادیت کو دبا نہیںسکے گی۔ واٹس اپ ، ٹوئٹر اور فیس بک سمیت دیگر تما م ذرائع ابلاغ کو یوم شہادت برہان وانی کے موقع پر اور تاحال بند کر دیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق فیس بک کی ریجنل انتظامیہ کا دفتر بھارت میں واقع ہے ، انہوں نے بھارتی سرکار کی ایما پر بھارتی مظالم کے خلاف اٹھنے والی مدتوں سے جاری جدوجہد کو دبانے کیلئے فیس بک، ٹوئٹر سمیت دیگر تمام ذرائع کو بند کردیا ہے۔ ظلم کی انتہا تو اس حد تک ہوچکی ہے مقبوضہ کشمیر میں انٹر نیٹ کی سروس تک کو منقطع کیا گیا ہے۔ فیس بک انتظامیہ نے شہر قائد ، لاہور سمیت ملک کے دیگر متعدد شہروں میں برہان وانی کے یوم شہادت کے دن ان تمام آئی ڈیز کو بلا ک کر دیا جو کہ تا حال بلاک ہیں۔ ان تمام آئی ڈیز پر برہان وانی شہید کی تصاویر آویزاں کی گئیں اور ہزاروں آئی ڈیز نے اپنا سابقہ پہچان تک کو کشمیر یوں کے حق میں اس دن کو منانے کی غرض سے تبدیل کیا تاہم بھارت میں ریجنل آفس کے کاروائی کے تخت انہیںبند کر دیا گیا ہے۔
بھارتی افواج کے ہاتھوں کشمیری عوام پر ڈھائے جانے والے مظالم کی داستانوں کو چھپانے کیلئے امریکہ اور اسرائیل کی مشترکہ گھناﺅنی سازشوں کے تخت کشمیری اخبارات و دیگر ذرائع کو بند کرنے کے ساتھ وطن عزیز میں بھی ان ذرائع نے اپنا کام کیا ہے۔ انہی سازشوں کے تخت فیس بک آئی ڈیز کو بند کیا گیا ، یہاں یہ بھی واضح رہے کہ بند ہونے والے اکاﺅنٹس میں کثرت تعداد ان لوگوں کی ہے جن کا کسی بھی جماعت سے کوئی سیاسی تعلق نہیں ہے ، کشمیر سے اک محبت اور انسانیت کے رشتے کے ناطے انہوںنے برہان وانی شہید سمیت دیگر شہداءکی تصاویر کو اپنی فیس بک پر لگایا اور اس کے ساتھ ہی آزادی کی تحریک کی ہر طرح سے حمایت کی ۔ ان کی آواز کو آگے بڑھایا ۔
22بھارتی سرکار کی ایما پر امریکی حکومت نے جماعتہ الدواءکے ہزاروں سوشل میڈیا اکاﺅنٹس کو بلاک کردیا ہے ۔ نہتے اور معصوم کشمیریوں کی آواز اور انکے موقف کی بھرپور پذیرائی کرنے والی جماعتہ الدواءکے قائد پر حکومت پاکستان نے نظر بندی عائد کر دی ، اور گذشتہ پانچ سے زائد ماہ سے انہیں نظر بند ہی رکھا گیا ہے۔ بھارت اپنے مذموم مقاصد کے حصول کیلئے امریکہ اور اسرائیل کے مدد کے تخت پاکستان پر دباﺅ کو بڑھانا چاہتا ہے ۔ اسی مقصد کیلئے اس کی تمام تر کاوشیں جاری ہیں ۔ لیکن اس کے ساتھ انہیں اس بات کا بھی علم ہوچکا ہے کشمیر ی عوام اب تلک جس جذبے کے تخت سرگرم عمل ہے اب اس میں بتدریج اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ ان کی تمام تر کاوشوں کے بجائے کشمیری عوام کا جذبہ جہاد بڑھ رہا ہے اور وہ وقت دور نہیں کہ جب انہیں مقاصد میں کامیابی حاصل ہوگی ۔
فیس بک انتظامیہ اکثر ایسا عمل بھی دیکھاتی ہے کہ جس میں کسی بھی جانور کے ساتھ ہونے والا ظلم نمایاں انداز میں دیکھا کر اس کیلئے ہمدردی حاصل کر لی جاتی ہیں لیکن مسلمانوں کے ساتھ ہونے والے عالمی سطح پر مظالم کے حوالے سے اس کی خاموشی اور منافقانہ کردار وقت گذرنے کے ساتھ سب کے سامنے عیاں ہوتا جارہا ہے ۔ برہان وانی کی شہادت کے ایک برس کشمیری عوام کے جذبات کو دوام پہنچانے کے بجائے انہیں عالمی سطح پر نظر اندازکیا جارہا ہے ۔ جبکہ یہ حقیقت اب بھارتی عوام پر واضح ہوچکی ہے کہ کشمیر میں بھارتی فوج مظالم کے نت نئے باب رقم کر رہی ہے اور آئے روز ان میں اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ لہذا اب ضرورت ہے کہ کشمیر ی عوام کی آواز کو مزید نہ روکا اور دبایا جائے بلکہ اپنے عالمی جمہوریت کے دعوے کو سچا ثابت کرتے ہوئے احسن اقدامات کئے جائیں ۔

About حفیظ خٹک

Biographical Info

Top