Thursday, December 3, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

اسٹیل مل کی نجکاری سب سے بڑی ڈکیتی ہے، سعید غنی

وزیر تعلیم و محنت سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ ہم کسی کو اسٹیل ملز کی زمین اور اس کے اثاثے ہتھیانے نہیں...

کھانوں پر پابندی، شادی ہالز ایسوسی ایشن کا مظاہرہ

شادی ہالز میں کھانوں پر پابندی کےخلاف آل پاکستان شادی ہالز ایسوسی ایشن کا پریس کلب کے باہر مظاہرہ، اس موقع پر رہنمائوں کا...

ضلع وسطی کے مزید علاقوں میں اسمارٹ لاک ڈاؤن

کورونا وائرس کے بڑھتے کیسز کے پیش نظر کراچی ضلع وسطی کے مزید علاقوں میں اسمارٹ لاک ڈاؤن نافذ، لاک ڈاؤن والے علاقوں میں...

اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کا مثبت آغاز

 پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کا مثبت آغاز، اسٹاک ایکسچینج میں 377 پوائنٹس کا اضافہ، 100 انڈیکس کی 337 پوائنٹس کے اضافے سے 42...

اسمارٹ فلیش نے ٹیکنالوجی چوری پر ایپل کو 533 ملین امریکی ڈالر کا جرمانہ کروا دیا

apple1نیویارک: امریکی کمپنی ایپل کا شمار دنیا کی امیر ترین اور طاقتور ترین کمپنیوں میں ہوتا ہے مگر ایک آٹھویں فیل شخص نے اسے ایک تاریخی مقدمے میں شکست دے کر 532.9 ملین ڈالر کا بھاری جرمانہ کروا دیا ہے۔ پیٹر ریکز نامی شخص کی کمپنی ایل ایل سی اسمارٹ فلیش نے ایپل کے خلاف کاپی رائٹس کی خلاف ورزی کے الزامات لگائے تھے۔ ٹیکنالوجی تجزیہ کاروں کی طرف سے ایپل کو 532 ملین ڈالر سے زائد کا جرمانہ کیسے کروانے کے سوال پر پیٹر نے کہا کہ ایپل ایک مغرور کمپنی ہے اور اس کا زور اسی بات پر رہا کہ پیٹر ایک آٹھویں فیل شخص ہے اور وہ جدید ٹیکنالوجی کیسے ایجاد کر سکتا ہے جب کہ اس کا موقف تھا کہ ایپل نے تقریباً چار ٹیکنالوجی ایجادات کا آئیڈیا اس سے چوری کیا ہے۔ واضح رہے کہ پیٹر اس سے پہلے سام سنگ، گوگل اور امیزون کے خلاف بھی ٹیکنالوجی چوری کے الزامات لگا چکے ہیں۔

Open chat