Wednesday, October 21, 2020
Home کالم /فیچر اہل غزہ کیلئے آواز مزید بلند کی جائے (سجاد خان جدون)

اہل غزہ کیلئے آواز مزید بلند کی جائے (سجاد خان جدون)

CIMG0107برصغیر کے مسلمانوں کی حالت زار دیکھ کر علامہ اقبالؒنے فرماےا تھا”نہ سمجھو گے تو مٹ جاﺅ گے اے ہندوستاںوالو، تمہاری داستاں تک بھی نہ ہوگی داستانوں میں“ انہوں نے اپنے جذبات کا اظہار غلامی کی زنجیروں میں جکڑ ے ہوئے اپنے ہم وطنوں کی بے کسی پر کیا تھا آج وہ زندہ ہوتے تو مسلم قوم کی مظلومیت پر تڑپ کر یوں گویا ہوتے ”نہ سمجھو گے تو مٹ جاﺅ گے اے مسلمانوں ،تمہاری داستاں تک بھی نہ ہوگی داستانوں میں“ مسلمان اس دورمیں جس قدرانتشار کا شکار ہیںشاید ہی کوئی اور قوم ایسی حالت سے گذری ہو۔ مسلم ممالک کے بزدل، اقتدارکے لالچی اور غلامانہ ذہنیت کے حامل حکمرانوں کے مغرب پرست اقدامات کی وجہ سے وہاں کے عوام دکھ جھیلنے پر مجبو رہیں شاذونادرہی اسلامی ممالک کے حکمران عوامی امنگوں پر پورا اترتے ہوں گے۔ اس کے برعکس دنیا بھر کے مسلمان، مغرب کی اسلام دشمن پالیسیوں سے سخت نالاں ہیں۔

معدنی اور افرادی قوت سے مالا مال اسلامی ممالک کے سربراہوںکی نا عاقبت اندیشی کی و جہ سے امریکہ اور اس کے حواری مسلمانوں کی دولت پر قابض ہیں کیا عجب تماشہ ہے معدنی تیل کے مالک مسلمان لیکن اس پر اختیار اغیار کا ،سرزمین ہماری ، عملی طور پر اقتدار غیروں کا کیا مسلمان اتنے بے بس اور لاچار ہوگئے ہیں کہ جب مغربی اقوام کا دل چاہے وہ کسی اسلامی ملک پر چڑھائی کرلیں، کیامسلمانوں کا خون اتنا سستا ہوگیا ہے کہ جب اور جتنا جی چاہے بہادیا جائے ایسے واقعات پر نام نہاد عالمی این جی اوز اور سیکو لرذہنیت رکھنے والے کہاں غائب ہو جاتے ہیں جومسلمانوں کو دہشت گرد کہنے اور اسلامی شعار کا تمسخر اڑانے سے نہیں تھکتے کیا ان میں جرا¿ت ہے کہ وہ فلسطین اور دنیا بھر میں بسنے والے مظلوم اور نہتے مسلمانوں کا خون بہانے والے ےہودےوں ،ہندوﺅںاور دیگر اقوام کو ان ظالمانہ کاروائیوں پر دہشت گرد کہہ سکیں۔

imagesمسلمان اپنے جان ومال اور عزت و آبرو کے لٹ جانے پرآہ و زاری کریں تو دہشت گرد کہلائیںاور ان پردن رات بمباری کرنے والوںکو امن پسند ہونے کی سند عطا ہو ےہ ہے عالمی انصاف کے تقاضے، خود کو مسلمانوں کا خیرخواہ ظاہر کرنے والے امریکہ کا ضمیر اس موقع پر کیوں نہیں جاگتا، اقوام کے درمیان ثالثی کا اختیار رکھنے والی عالمی تنظیم جسے اقوام متحدہ کے نام سے ےاد کیا جاتا ہے اسے اسرائیل کی مسلم دشمنی نظر کیوں نہیں آتی امریکہ کے اشاروں پر چلنے والی اس تنظیم کو اپنے اختیارات استعمال میں نہ لانے اوردنیابھر میں مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم پر چشم پوشی کرنے کی مجرمانہ غفلت پر ا ز خود تحلیل ہوجانا چاہیے اور جس کا وجود صرف مسلم دشمنوں کو تحفظ فراہم کرنا رہ جائے اسے اپنا نام تبدیل کرکے ”مغرب پرست اقوام متحدہ “ رکھ لینا چاہیے جب بھی مسلمانوں پر برا وقت آےا اس مغرب پرست اقوم متحدہ نے اپنے کان اور آنکھیں بند کرلیں جس کی چند مثالیں ےہ ہیں۔

سربوں نے بوسنیائی مسلمانوں کو چن چن کر قتل کیاجس پر انسانیت بلبلا اٹھی لیکن اقوام متحدہ بالکل خاموش رہی ، گوتم بدھ کے پیروکار وں برما میں اراکانی مسلمانوں کا خون ناحق بہاتے رہے مگر اقوام متحدہ ٹس سے مس نہ ہوئی ،امریکہ نے عراق،افغانستان ، مصر،اور لبیا کو اپنی مکاری سے تہہ وبالا کردیا، اقوام متحدہ کے سر پر جوں تک نہ رینگی، کشمیر پر انڈیا کے غاصبانہ قبضے کی تقریباً سات دہائیاں گزر چکی ہیں، انڈین غاصب فوج ہر روز کشمیریوں کے خون سے ہولی کھیلتی ہے لیکن اقوم متحدہ اب تک بھارت سے اپنی قرارداد پر عمل نہیں کرا سکی ہاں البتہ انڈونیشیاکے علاقے مشرقی تیمور میں جہاں عیسائیوں کے مفادات کے تحفظ کا معاملہ آےا تو اسے فوراً آز اد ریاست کا درجہ دے دیا گیا۔ ان مظالم پر آسمان گرا نہ ہی زمین پھٹی ۔

images3اسرائیل جسے ہر دور میں امریکہ کی سرپرستی حاصل رہی ہے اس کا مقصدصرف اور صرف خلیجی ممالک میں انتشارو خوف کی فضاپھیلانا، اپنے مذموم سیاسی ایجنڈہ کی تکمیل اوران ممالک کے معدنی وسائل پر ڈاکہ ڈالنا رہا ہے اور تعجب کی بات ےہ ہے کے امریکہ اور اسرائیل کے گٹھ جوڑ اور سازشوں کو سمجھتے ہوئے بھی خطے کے مسلمان ممالک دانستہ ونادانستہ اپنی زباں بندی پر قائم رہے ہیں اوریہ سلسلہ ہنوز برقرار ہے۔ اسرائیل فلسطین کے اندر ےہودیوں کی ایک ناجائز ریاست ہے جس کا رقبہ زبرستی ہتھیائے گئے علاقوں پر مشتمل ہے۔ اس کے ناپاک وجود کو کئی اسلامی ممالک بھی ا علانیہ ےا غیراعلانیہ طور پر تسلیم کرچکے ہیں۔ اسرائیل گاہے بگاہے پڑوسی ممالک اور موجودہ فلسطینی ریاست کے معاملات میں دخل اندازی کرتا رہتا ہے جس کے نتیجے میںاب تک ہزاروں جانیں ضائع ہوچکی ہیں ۔ایک بار پھر اسرائیلی ٹینکوں اور میزائلوں نے غزہ پر آگ اگلنا شروع کردی ہے 8 جولائی سے لے کر اب تک 2200سے زائد فلسطینی شہیداور8 ہزار کے قریب زخمی یا معذور ہوچکے ہیں جب کہ پناہ گزینوں کے کیمپ، اسکولز، ہسپتال اور مساجد بھی ےہودی بمباری سے محفوظ نہیں رہے۔شہید اور زخمیوں کی زےادہ تر تعداد بچوںاور عورتوں پر مشتمل ہے اور خاص بات ےہ کہ تمام افرادعام شہری ہیں، اسی دوران حماس کے ہاتھو ں 67 اسرائیلی فوجی بھی ہلاک ہوئے ہیں لیکن کوئی عام اسرائیلی ہلاک یا زخمی نہیں ہوا۔

فائر بندی کا اعلان کرنے کے باوجود اسرائیل کی درندگی کم نہیں ہوئی،صیہونی افواج نے رفحہ اور خان ےونس کے اسپتالوں، 3 مساجد اور ایک یونی ورسٹی پر فائرنگ کرکے مزید 270 فلسطینی شہریوں کو شہید350 کو زخمی کردیا ہے اور اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن ےاہونے فائر بندی کی خلاف ورزی کا الزام غزہ کے جنگجوﺅں پر عا ئد کیا۔ صورت حال کوئی بھی ہو42روز سے جاری موت کے اس رقص میںجانی ومالی نقصان عام مسلمان شہریوں کا ہوا ہے اگر ےہی معاملات ےہودےوں ےا عیسائیوں کے ساتھ پیش آتے تو اب تک دنیا کی سیاسی ،معاشی اور جغرافیائی صورت حال میں ڈرامائی تبدیلی رونما ہوچکی ہوتی ۔ عا لمی ضمیرکی بے حسی اپنی جگہ لیکن اسے کیا کہیے کہ پورا عالم اسلام خصوصاًعرب لیگ اور او آئی سی اب تک خوب غفلت میںہیں۔اس سلسلے میں پاکستان کی عوام کا جذبہ قاہل ستائش ہے جس طرح پاکستانی عوام نے اپنے فلسطینی بھائیوں کا درد اپنے سینوں میں محسوس کیا ہے اس کی مثال ملنی مشکل ہے ۔شہر کراچی میں جماعت اسلامی کی دعوت پر 17 اگست کو ”غزہ ملین مارچ“کا انعقاد کیا گیا جس میں ملک کی چیدہ چیدہ دینی اور سیاسی جماعتوں کے قائدین اور لاکھوں کارکنان نے دینی جوش و جذبے کے ساتھ شرکت کی اور فلسطین کے نہتے مسلمانوں سے یکجہتی کا اظہار کیااس ریلی کی خاص بات ےہ تھی کہ اس میں ہر عمر کے کمسن ، جوان ،بوڑھے مرد اور خواتین نے شرکت کی اس موقع پر ان کا ولولہ دیکھنے سے تعلق رکھتا تھا۔

5d554_120916032653-mid-east-protests-2-horizontal-galleryاسی طرح جماعة الدعوة نے بھی کراچی کے غزہ ملین مارچ میں شرکت کے علاوہ ملک کے دیگر شہروں میں 17اگست” یوم یکجہتی فلسطین “ کے طور پر مناتے ہوئے ، مختلف پروگرامات، جلسے اور ریلیاں نکالیں۔
غزہ سے اظہار یکجہتی کے لیے منقعد کیے گئے پروگرام میںعالم اسلام کا درد رکھنے والی جماعتوںکے قائدین نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم ہر نظریے سے بالاتر ہوکرغزہ کے مظلوم عوام کے ساتھ ہیںاور اسرائیل کو تنبیہ کرتے ہیں کہ وہ ظلم سے باز آجائے اس کے علاوہ مقررین نے مغرب کی بے حسی اور اقوام متحدہ کی مجرمانہ خاموشی پر بھی سخت تشویش ظاہر کی ۔ شرکاءسے حماس کے رہنماخالد مشعل نے بھی ٹیلیفونک خطاب کیا۔ اتوار کو دینی جماعتوں کی جانب سے اہل غزہ کے ساتھ اظہار یکجہتی کا شاندار اظہار دیکھنے کو ملا۔

جس طرح ”غزہ ملین مارچ“ میں مظلوم فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی کیا گیا اگر اسی طرح تمام اسلامی ممالک کے عوام احتجاج ریکارڈ کروائیں اور اپنی آواز عالمی برادری تک پہنچائیں تو ممکن ہے کہ اہل مغرب مسلمانوں کے اس اتحاد سے خائف ہوکر اپنی سازشوں سے باز آجائیں،لیکن ےہ سب اسی صورت میں ممکن ہے جب دنیا بھر میں بسنے والے مسلمان اپنی صفوں میں دائمی بھائی چارہ پیدہ کریں اور اپنے درمیاں پائی جانے والی لسانیت اور تعصب کا خاتمہ کریں۔اسلام مسلمانوں کے درمیان عالمگیر رشتے کو استوار کرتا ہے مگر اتفاق اور انصاف کی کمی کی وجہ سے ہم پر اغیار مسلط ہوگئے ہیں۔ اسلام دشمن عالمی سامراج نے ہماری قوت کو پارہ پارہ کرنے کے لیے ہمیں آپس میں ہی دست و گریباں کر دیا ہے ،عظیم تر اسرائیل کے منصوبہ میں دیگر اسلامی ممالک کے علاوہ مدینہ منورہ بھی شامل ہے ۔ ےہ سب کچھ دیکھنے اور محسوس کرنے کے باوجود نہ جانے ہم کن خیالات میں مگن ہیں ۔کیا ےہ سب کچھ ہماری آنکھیں کھولنے کے لیے کافی نہیںےا ہم مزید تباہی کے منتظرہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

مسکن چورنگی دھماکے سے متاثرہ عمارت کو گرانے کا فیصلہ

کراچی، سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے مسکن چورنگی پر دھماکے سے متاثرہ عمارت کو مخدوش قرار دے دیا، ایس بی سی اے...

کراچی، گورنر سندھ عمران اسماعیل پی آئی اے کی پرواز308 کے ذریعے اسلام آباد پہنچ گئے، ان کے ہمراہ رکن قومی اسمبلی...

کراچی کے علاقے گلشن اقبال میں دھماکے سے 5 افراد جاں بحق

گلشن اقبال میں واقع ایک رہائشی عمارت میں دھماکے کے نتیجے میں 5 افراد جاں بحق جب کہ 27 زخمی ہوگئے۔

اے این ایف کا چھاپہ، میوہ شاہ قبرستان سے 17 کلو چرس برآمد

کراچی، اینٹی نارکوٹکس فورس کی شیرشاہ کے علاقے میوہ شاہ قبرستان میں کارروائی، 17 کلو چرس برآمد، ایک ملزم گرفتار، اے این...