سندھ لوکل گورنمنٹ میں کرپشن اور جعلی بھرتیوں کا بازار گرم

sindh govtکراچی، گزشتہ کی سالوں سے لوکل گورنمنٹ میں کرپشن بہت زور و شور سے جاری ہے اسی کی آڑ میں جعلی بھرتیاں پیسے وصول کر کے لی گئی جس میں یوسی 36 ایف بی ایریا، لیاقت آباد میں رحیم نامی شخص جو کہ جعلی بھرتی ہوا ہے اور 2012ئ سے جھوٹی سرکاری تنخوائیں وصول کر رہا ہے جس کا کسی بھی قسم کا کوئی واضح سرکاری ریکارڈ موجود نہیں ہے اور اس کی سرپرستی یوسی سیکرٹری عاصم امام اور ڈپٹی ڈائریکٹر ڈسٹرکٹ سینٹرل خالد ریاض کا پی اے منظور اجُن کر رہے ہیں اور انھوں نے تمام یوسیز میں کرپشن کا بازار گرم کیا ہوا ہے۔ متعدد مرتبہ انِ کی جعلی بھرتیوں کی درخواست اعلیٰ حکام تک پہنچانے کی کوشش کی گئی لیکن ڈپٹی ڈائریکٹر اور ان کا پی اے منظور اجُن اس کو جعلی اور جھوٹی رپورٹ بنوا کے ختم کروادیتے ہیں۔ مزید انکشاف یہ بھی ہوا ہے کہ یوسی 36 میں کےایم سی کا ملازم وسیم شہزاد نامی شخص جعلی سیکرٹری بن کے جھوٹے بلِ اور جعلی کوٹیشنز بنا کر یوسی فنڈز میں ہیر پھیر کر کے بلدیاتی خزانے کی کمر میں چھرُا گونپ رہے ہیں اور ان کو یوسی سیکرٹری عاصم امام نے فری ہینڈ دیا ہوا ہے جو کہ قانون اور سپریم کورٹ کی کھلے عام دھجیاں بکھیررہے ہیں لہٰذا میئر کراچی وسیم اختر، گورنر سندھ، وزیر اعلیٰ سندھ اور چیف جسٹس سے پرُ زور انداز سے اپیل کرتے ہیں کہ ان عناصر کے خلاف فی الفور سخت سے سخت ایکشن لیا جائے اور ان کو جلد کیفرے کردار تک پہنچایا جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top