Wednesday, May 12, 2021
"]
- Advertisment -

مقبول ترین

چاندرات کاروبار،تاجروں کی چیف جسٹس اور آرمی چیف سے اپیل

آل سٹی تاجراتحاد ایسوسی ایشن نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد اور چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ سے اپیل...

لیاری بہار کالونی میں دکانداروں کا رینجرز اہلکاروں پر تشدد

لیاری کے بہار کالونی کے دکاندار آپے سے باہر، کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد کرانے کےلئے آنے والے رینجرز اہلکاروں پر تشدد، پولیس...

 معمولی سی خواہش (سیدہ ہاشمی)

اس کی خواہش تھی بڑی کوچ (بس) میں سفر کرنا اور جب سے اسے دین محمد عرف دینو نے بڑی کوچ میں نظر آنے...

لاکھوں روپے مالیت کے سامان کی اسمگلنگ کی کوشش ناکام

کراچی ائیرپورٹ پر لاکھوں روپے مالیت کے الیکٹرونکس سامان کی اسمگلنگ کی کوشش ناکام، ذرائع کے مطابق کسٹم حکام نے کراچی سے بیرون ملک...

کراچی میں ایشیاءکی سب سے بڑی گائے منڈی کا افتتاح آج ہو گا

رپورٹ: امجد قائم خانی، محمد نعیم

  • گائے کی فیس ایک ہزار روپے جبکہ بکرئے کی فیس 6سو روپے ہوگی
  •  گذشتہ سالوں کی نسبت تقریباً 25فیصد زیادہ جانوروں کی آمد متوقع ہے
  • شہریوں کے لیے اس سال مفت پارکنگ ہو گی
  • خانہ بدوشوں کا پارکنگ ایریا میں قبضے سے چوری کا خطرہ

8097379227_179f8b97e8_nکراچی سپرہائی وے پرایشیاءکی سب سے بڑی مویشی منڈی کے انتظامات مکمل کرلئے گئے ہیں ۔کنٹونمٹ بورڈ ملیر کے زیر اہتمام اور فوج کی نگرانی میں سپر ہائے وے پر قائم ہونے والی مویشی منڈی کا افتتاح آج 5ستمبر کو ہوگا ، عام شہریوں کے لئے خوشخبری ہے کہ منڈی میں خریداری کے لئے آنے والے شہریوں کو مفت پارکنگ کی سہولت حاصل ہوگی ، کرنل آفتاب کو منڈی کا انچارج بنایا گیا ہے، اس وقت منڈی میں ملک بھر سے تقریباً 5ہزار گائے آچکی ہیں، رواں برس ملک کی سب سے بڑی مویشی منڈی کا انتظام سنبھالنے والے ایڈمنسٹریٹر رانا عمران نے منڈی کے حوالے سے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ مویشی منڈی میں جانوروں کو رکھنے کے لئے ساڑھے سات سو ایکڑ رقبے پر محیط ملک کی سب سے بڑی منڈی میں وی آئی پی بلاک 36X120 اسکوائر میٹر پر محیط ہوگا جب کہ عام بلاک میں رقبے کی کوئی قید نہیں رکھی گئی ، گائے سیکشن میں 21بلاک بنائے گئے ہیں جس میں 4 بلاک وی آئی پی ہیں جو نیلامی کے ذریعے دئیے جائیں گے جبکہ 17 بلاک میں پہلے آئیے اور پہلے پائیے کی بنیاد پر جگہ فراہم کی جائے گی جیسے جیسے بیوپاری جانورمنڈی میں لائیں گے انہیں پہلے آئیے پہلے پائیے کی بنیاد پر جانوروں کی تعداد کے حساب سے جگہ فراہم کردی جائے گی۔ منڈی میں داخلے کے لئے گائے کی فیس ایک ہزار روپے جبکہ بکرئے کی فیس 6سو روپے ہوگی،مویشی منڈی کے ایڈمنسٹریٹر نے مزید بتایا کہ رواں برس گذشتہ سالوں کی نسبت تقریباً 25فیصد زیادہ جانوروں کی آمد متوقع ہے جس کو مدنظر رکھتے ہوئے بجلی ، پانی ، اور جگہ کا بندوبست کیا جارہا ہے ، تمام بیوپاریوں کو منڈی انتظامیہ کی جانب سے روزانہ 10لیٹر پانی فی جانور دن میں دو مرتبہ مفت فراہم کیا جائے گا، جب کہ اس سے زائد پانی نوے پیسے فی لیٹر کے حساب سے خریداجاسکتا ہے ، ایڈمنسٹریٹر کا کہنا تھا کہ اسی طرح بیوپاریوں کو بجلی اورروشنی کی سہولت پہنچانے کے لئے نجی فرم کو ٹھیکہ الاٹ کردیاگیا ہے جو فی بلب اور پنکھے کے حساب سے بجلی فراہم کرے گا، انہوں نے کہا کہ بجلی کی قیمت اس لئے وصول کی جارہی ہے کہ پوری منڈی میں بجلی جنریٹرز کے ذریعے پیدا کی جائے گی اور اس کے لئے ہزاروں لیٹر ڈیزل درکار ہوتا ہے ، ایڈمنسٹریٹر مویشی منڈی رانا عمران کا کہنا تھا کہ خریداروں اور کاروبار کے لئے منڈی میں آنے والوں کی سہولت کی خاطر منڈی میں مساجد ، ہوٹل ، کھانے پینے کے اسٹالز، واش رومز ، بیت الخلاء تعمیر کئے گئے ہیں۔ جب کہ منڈی میں جانوروں کے میڈیکل کیمپ بلدیہ عظمیٰ کراچی اور حکومت سندھ کے تعاون سے قائم کئے جائیں گے۔

مویشی منڈی کی انتظامیہ کی جانب سے مفت پارکنگ کے اعلان کو شہریوں نے احسن اقدام قرار دیا 4122007878_88d5aa84cc
گزشتہ برسوں میں مویشی منڈی میں آنے والے خریداروں کے لئے گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں کی پارکنگ ایک اہم مسئلہ رہی ہے ، ہر سال مویشی منڈی انتظامیہ پارکنگ کے حوالے سے خصوصی اقدامات کرتی ہے لیکن اس کے باوجود پارکنگ ایریا سے موٹرسائیکلوں میں سے پیڑول چوری ہونے اورگاڑیوں کے سائیڈ گلاس چوری ہونے کی شکایات عام ہوتی ہیں ، اس کے علاوہ پارکنگ فیس کے کے حوالے سے شہریوں اور انتظامیہ کے درمیان تلخ کلامی اور ہاتھا پائی کے واقعات بھی رونما ہوتے رہے ہیں۔ ان تمام مسائل سے نمٹنے کے لئے مویشی منڈی کی انتظامیہ کی جانب سے طے کیا گیا ہے کہ رواں برس مویشی منڈی میں آنے والے شہریوں سے پارکنگ فیس وصول نہیں کرے گی۔ مویشی منڈی کی انتظامیہ کی جانب سے کئے گئے اس فیصلے کو شہریوں نے احسن اقدام قرار دیا ہے۔

خانہ بدوشوں کا پارکنگ ایریا میں قبضے سے چوری کا خطرہ 4122741906_fd279004da_z
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سپرہائی وے پر لگائی جانے والی مویشی منڈی میں خریداری کے لئے ا?نے والے شہریوں کی گاڑیاں پارک کرنے کے لئے پارکنگ کی جگہ پر تاحال خانہ بدوش قابض ہیں ، ہرسال سپرہائی وے اور مویشی منڈی کے درمیان خالی اراضی پر منڈی میں آنے والے شہریوں کے لئے پارکنگ کا انتظام کیا جاتا ہے ، لیکن رواں برس مذکورہ مقام پر خانہ بدوشوں نے ڈیرے ڈال رکھے ہیں جس کے باعث مذکورہ خالی اراضی کو تاحال ہموار نہیں کیا جاسکا اور پارکنگ ایریا قائم نہیں ہوسکا ہے ، اس حوالے سے مویشی منڈی کے ایڈمنسٹریٹر اورکنٹونمنٹ بورڈ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ پارکنگ کے لئے مخصوص اراضی خالی کرانے کے لئے بات چیت جاری ہے اور ا±مید ہے کہ ایک دوروز میں اراضی خالی کرالی جائے گی۔ ادھر سپرہائی وے کے دوسری جانب مویشی منڈی کا چھوٹے جانوروں والا حصہ بھی ابھی تک تیارنہیں ہوسکاہے اوروہاں بھی زمین ہموار کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔