Wednesday, June 23, 2021
- Advertisment -

مقبول ترین

دنیا کے سب سے بڑے کارگو جہاز کی کراچی ائیر پورٹ پر لینڈنگ

دنیا کے سب سے بڑے کارگو ہوائی جہاز انتونوو این 225 ماریہ نے ایک بار پھر کراچی ائیرپورٹ پر لینڈنگ کی ہے، فلائٹ اے...

مصطفیٰ کمال سندھ حکومت پر برس پڑے

پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ سید مصطفیٰ کمال سندھ حکومت پر برس پڑے، مصطفیٰ کمال نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ سندھ کے...

نیشنل ہائی وے کے قریب سے ڈرگ ڈیلر ساتھی سمیت گرفتار

پولیس نے خفیہ اطلاع پر نیشنل ہائی وے کے قریب کارروائی کرتے ہوئے ڈرگ ڈیلر کو ساتھی سمیت گرفتار کرلیا، پولیس کے مطابق ملزمان...

شہر قائد میں آج رات بوندا باندی کا امکان ہے، محکمہ موسمیات

محکمہ موسمیات نے شہرقائد میں آج رات بوندا باندی کی پیش گوئی کردی ہے، محکمہ موسمیات کے مطابق کراچی اور اس کے مضافات میں...

مواچھ گوٹھ ، سرکاری اسپتال بند، میٹرنٹی ہوم نے کھنڈر کی شکل اختیار کرلی

maternity home1کراچی: مواچھ گوٹھ میں کروڑوں روپے کی لاگت سے بننے والا شہید محترمہ بے نظیر بھٹو میٹرینٹی ہو م اور اسپتال کھنڈر میں تبدیل ہوگیا ہے علاقہ مکین سرکار کی نظر کرم کے باوجود سہولیات سے محروم ہیں ۔مواچھ گوٹھ کی ڈیڑھ لاکھ کی آبادی اور ایک سرکاری اسپتا ل صرف ایک اور وہ بھی بند۔8 کڑور روپے کی لاگت کا یہ ہے بے نظیر شہید میٹرینٹی ہوم جسے پیپلز پارٹی کی رہنما شیری رحمان نے 2009 میں تعمیر کروایا تھا ۔50 بستروں پر مشتمل اس اسپتال کو بنانے کے بعد عوام کو امیدیں دلائی گئیں مگر حاصل کچھ نہیں ،مریض اب بھی لمبا سفر طے کر کے دیگر سرکاری اسپتالوں کا رخ کرتے ہیں ۔بڑے رقبے پر قائم اس اسپتال کے دروازے اور کھڑکیاں غائب ہیں اور ہیرونچیوں نے اسے اپنا مسکن بنالیا ہے۔ اسپتال میں عملہ ہے اور نہ ہی کوئی نگرانی کرنے والا جو مشینری اور الیکڑک کا سامان موجود تھا وہ بھی کب کا غائب ہوچکا ۔محکمہ صحت اور حکومت سندھ بھی اس تمام معاملے سے بے خبر ہیں۔ انتہا یہ ہے کہ 2009 کے بعد سے کسی متعلقہ حکام نے یہاں کا دورہ بھی نہیں کیا۔