Saturday, July 31, 2021
- Advertisment -

مقبول ترین

کراچی میں لاک ڈاؤن کا نفاذ، شہر کے مختلف مقامات پر پولیس کی ناکہ بندی

کراچی میں لاک ڈاؤن کے نفاذ کے بعد پولیس نے مختلف سڑکوں پر ناکے لگادیے اور غیر ضروری طور پر گھروں سے نکلنے والوں...

سول اسپتال میں کتوں نے ڈاکٹر سمیت 3 افراد کو کاٹ لیا

سول اسپتال کراچی میں آوارہ کتوں نے لیڈی ڈاکٹر سمیت 3 افراد کو کاٹ لیا، اسپتال انتظامیہ کے مطابق واقعہ اسپتال کے اندر سرجیکل...

صوبے میں لاک ڈاؤن پر تاجروں کے تحفظات جائز ہیں، ناصر شاہ

وزیر اطلاعات سندھ سید ناصر حسین شاہ نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ صوبے میں لاک ڈاؤن پر...

کراچی میں آج سے غیر ضروری گھر سے نکلنے اور ڈبل سواری پر پابندی عائد

محکمہ داخلہ سندھ نے کراچی میں لاک ڈاؤن کی نئی پابندیوں کا نوٹیفکیشن جاری کردیا، نوٹیفکیشن کے مطابق کراچی میں آج سے جزوی لاک...

دہشت گردوں کی تعداد 8 تھی، اردوبول رہے تھے، بس کلینر کا بیان

Safora-incident320x180کراچی،سانحہ صفورا گوٹھ کی تحقیقاتی ٹیم نے واقعے میں زخمی ہونے والے بس کلینر کا تفصیلی بیان ریکارڈ کرلیا جس کے  زخمی بس کلینر کو سخت سکیورٹی میں جائے وقوعہ کی نشاندہی کے لیے لایا گیا جس کے بعد اس کا بیان ریکارڈ کیا گیا جس میں زخمی کلینر کا کہنا تھا کہ سانحہ صفورہ گوٹھ میں ملوث دہشت گردوں کی تعداد 8 تھی جو ون ٹو فائیو موٹرسائیکلوں پر سوار تھے،ایک موٹر سائیکل سوارنے بس کو آگے آکر روکا جب کہ دیگر دہشت گرد بس کے پچھلے حصے سے اس میں داخل ہوئے۔
بس کلینر نے اپنے بیان میں مزید بتایا کہ 2 حملہ آور پینٹ اور ٹی شرٹ میں ملبوس تھے اور انہوں نے چہروں کو ہیلمٹ سے ڈھانپ رکھا تھا جب کہ تمام حملہ آور اردو میں بات چیت کررہے تھے۔ کلینر کے مطابق سڑک کے ٹوٹ پھوٹ کاشکار ہونے کی وجہ سے بس کی رفتارآہستہ تھی جس کے باعث دہشت گردباآسانی بس میں سوار ہوگئے۔