Friday, June 18, 2021
- Advertisment -

مقبول ترین

ڈپٹی کمشنر ملیر کی ہدایت پر اتائی ڈاکٹروں کےخلاف آپریشن

ڈپٹی کمشنر ملیر کی ہدایت پر پپری ٹائون میں اتائی ڈاکٹروں کے خلاف آپریشن، متعدد کلینکس اور میڈیکل اسٹورز سیل کردیئے گئے، ذرائع کے...

سپریم کورٹ، اسٹیل ملز ملازمین کی ترقی کی درخواست مسترد

سپریم کورٹ نے اسٹیل مل ملازمین کی ترقی سےمتعلق درخواست  مسترد کردی، سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں کیس کی سماعت  کے دوران چیف جسٹس...

مون سون بارشیں،نکاسی کے انتظامات مکمل ہیں، ایڈمنسٹریٹر کراچی کا دعویٰ

مون سون بارشوں سے نمٹنے کےلئے انتظامات مکمل کرلئے ہیں، ایڈمنسٹریٹر کراچی کا بڑا دعویٰ سامنے آگیا، ذرائع کے مطابق ایڈمنسٹریٹر کراچی لیئق احمد...

فیس بک کا نیا فیچر،ایڈمن کو پوسٹ میں تبدیلی کا اختیار مل گیا

 فیس بک نے نیا شاندار فیچرمتعارف کرادیا، میڈیا رپورٹ کے مطابق ایڈمن اب آن لائن کمیونیٹیز کے کسی بھی ایسے ممبر پر پابندی لگاسکتے...

کراچی کا پیپلز اسکوائر نیبر ہڈ پراجیکٹ

کراچی کا پیپلز اسکوائر….

کراچی کا مصروف ترین کاروباری علاقہ، صدر اور اس کے اطراف میں پھیلا ہوا ہے۔
یہاں کی قدیم عمارتیں، چھوٹی دکانیں اور تنگ سڑکیں گزرے وقت کی داستان بیان کرتے ہیں۔
 کراچی کے اس ڈاﺅن ٹاﺅن میں پارکنگ اورسستانے کے لیے پرسکون جگہ کی تلاش خاصا مشکل کام ہے۔
یہاں ٹریفک کے اژدہام کی حالت یہ ہے کہ گاڑیاں بھی انسانوں کی طرح کندھے سے کندھا ملاکر چلتی ہیں۔
اس مقام پر سندھ حکومت نے ورلڈ بینک کے تعاون ایک خوب صورت پراجیکٹ تعمیر کیا ہے۔
جسے ”پیپلز اسکوائر“ کا نام دیا گیا۔
کراچی کی قدیم فوڈ اسٹریٹ برنس روڈ سے متصل پیپلز اسکوائر اہمیت کے حامل مقام پر تعمیر کیا گیا ہے۔
جس کے طراف میں کراچی کے قدیم اور معروف تعلیمی ادارے ایس ایم لا کالج، اس ایم کامرس کالج، ڈی جے سائنس کالج، این ای ڈی یونیورسٹی کیمپس کے علاوہ نیشنل میوزیم، سندھ سیکرٹریٹ اور آرٹس کونسل واقع ہیں۔
یہاں پارکنگ ہمیشہ سے ایک اہم مسئلہ رہا ہے۔
جس کے حل کے لیے پیپلز اسکوائر میں دو سطحی انڈر گراﺅنڈ پارکنگ کی جگہ بنائی گئی ہے۔
جس میں 350 سے زیادہ گاڑیوں اور 250 موٹر سائیکل پارک کرنے کی سہولت دستیاب ہوگی۔
پیپلز اسکوائر کے تعمیری نقشے کو دیکھتے ہوئے اسے ایک فوڈ اسٹریٹ بھی کہا جاسکتا ہے۔
یہاں کھانے پینے کے اسٹال، اسٹریٹ لائٹنگ اور بیٹھنے کے لیے فرنیچر کا انتظام کیا گیا ہے۔
جہاں آپ کھلی فضا اور صاف ستھرے ماحول سے لطف اندوز ہوسکتے ہیں۔
پیپلز اسکوئر میں پچاس فیصد دکانیں خواتین کے لیے مخصوص کی گئی ہیں۔
وزیر اعلیٰ سندھ کا کہنا ہے پیپلز اسکوائر پراجیکٹ کراچی کے شہریوں کے لیے بہتر ثابت ہوگا۔
ہم اس پراجیکٹ سے کراچی کے پرانے ماحول کو بہتر کر رہے ہیں۔
واضح رہے یہ منصوبہ عالمی بینک کے تعاون سے کراچی نیبرہوڈ امپروومنٹ پراجیکٹ کے تحت چارسال قبل شروع کیا گیا تھا۔
6 Attachments