Tuesday, November 24, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

خداداد کالونی ،گودام کی بالائی منزل پر آتشزدگی

خداداد کالونی میں گودام کی بالائی منزل میں آگ لگ گئی، فائربریگیڈ کی گاڑیاں روانہ، ریسکیو ذرائع...

نکاسی کی 936 میں سے781شکایات کا ازالہ کردیا،واٹربورڈ

واٹربورڈ نے شہر کے مختلف علاقوں سے موصولہ فراہمی ونکاسی آب کی 700سے زائد شکایات کا ازالہ...

ریسٹورنٹس میں ان ڈورڈائننگ پر پابندی عائد

ریسٹورنٹس میں ان ڈور ڈائننگ پر پابندی عائد، کمشنر کراچی نے ریسٹورنٹس کے حوالے سے تمام ڈپٹی...

سی ویو پر سائیکلنگ کرنے والوں کے خوش خبری

سی ویو پر سائیکلنگ کرنے والوں کے خوش خبری، کنٹونمنٹ بورڈ نے سی ویو پر تین کلو میٹر...

مقامی حکومت کے بغیر جمہوریت آمریت سے بدترہے، الطاف حسین

AltafHussainمتحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ کوئی بھی جمہوری حکومت مقامی حکومتوں کے بغیر قائم آمریت سے بدتر ہے۔ ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیرو پر اپنی 61ویں سالگرہ تقریب سے لندن سے ویڈیو لنک کے ذریعے سے خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ سڑکوں اور پلوں کی تعمیر لوکل باڈیز کے کام ہوتے ہیں، دنیا میں کوئی پارلیمنٹ سڑکوں اور پلوں کی تعمیر نہیں کرتی، جمہوریت اسمبلی سے شروع ہوئی اور وہیں ختم ہوگئی۔ انہوں نے خطاب میں کہا کہ نام نہاد جمہوریت والوں کا نام لوں تو فوج کا ایجنٹ کہا جاتا ہے مگر اس کی پرواہ نہیں ہے، جمہوریت کا مطلب خاندانی سیاست نہیں ہوتا۔
الطاف حسین نے کہا کہ اسٹبلشمنٹ مدد کرے تو ایم کیو ایم حکومت میں آسکتی ہے مگر معلوم نہیں وہ مدد کیوں نہیں کرتے، اگر ہماری حکومت آجائے تو تمام قرضے معاف کرنے والوں سے واپس لے لیں گے، مجھے خوشحال پاکستان چاہیے، اسٹیبلشمنٹ پتہ نہیں کیوں ایم کیو ایم سے ناراض ہے۔
ایم کیو ایم کے سربراہ کا کہنا تھا کہ جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کو رہا کیا جائے یا پھر ان کی مدد کرنے والوں کو بھی بند کیا جائے، عدلیہ کے پاس 2 آپشنز ہیں، ایک آپشن یہ ہے کہ پرویز مشرف کو فوری طور پر غیر مشروط رہا کیا جائے یا پھر دوسرا آپشن یہ ہے کہ ایمرجنسی لگانے والے تمام افراد کو بند کر دیا جائے، 12 اکتوبر کو مارشل لا لگا نےوالوں کو بھی گرفتار کیا جائے اور جنرل کیانی سمیت ایمرجنسی میں شامل فوجی جرنیلوں پر آرٹیکل 6 لگایا جائے۔
بلاول بھٹو کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ابھی وہ چھوٹے ہیں بڑی بڑی باتیں نہ کریں، وہ تو لندن میں پڑھے ہیں ان کو نہیں معلوم کہ انتظامی یونٹس اور مقامی حکومتیں کیا ہوتی ہیں جبکہ پیپلز پارٹی نے اسمبلی میں ہزارہ اور جنوبی پنجاب صوبے بنانے کی قرارداد پیش کی تھی۔
پیپلز پارٹی کے کو چیئرمین آصف علی زرداری کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ جو بات خود کہنے کی ہمت نہیں ہوتی وہ بات اپنے صاحبزادے سے کہلوا دیتے ہیں۔
بلاول بھٹو زرداری کی جانب سے مرسوں مرسوں سندھ نہ ڈیسوں کے ٹویٹ پر متحدہ قومی موومنٹ کے قائد نے کہا کہ بلاول ابھی چھوٹے ہیں بڑی بڑی باتیں مت کرو اپنے ابو کو بلاو۔ متحدہ کے قائد نے مزید کہا کہ اگر ملک کی سالمیت برقرار رکھنی ہے تو نئے ایڈمنسٹریٹر یونٹس بنانے ہوں گے۔پاکستان تحریک انصاف اور پاکستان عوامی تحریک کے بیشتر مطالبات جائز ہیں ان کو تسلیم کیا جائے تا کہ ملک کی معیشت کا پہیا چل سکے۔

Open chat