Friday, November 27, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

آرزو فاطمہ کے اغوا اور کم عمری کی شادی کے کیس کی سماعت

سٹی کورٹ میں آرزو فاطمہ کے اغوا اور کم عمری میں شادی کے کیس کی سماعت،  پولیس چالان...

پاکستان میری ٹائم سیکیورٹی ایجنسی کی بھارتی فشنگ لانچ کے خلاف کاروائی

پاکستان میری ٹائم سیکیورٹی ایجنسی کی بھارتی فشنگ لانچ کے خلاف کاروائی، میری ٹائم سیکیورٹی ایجنسی نے بھارتی...

سر سبز شاداب کراچی مختصرڈاکومینٹری

سر سبز شاداب کراچی مختصرڈاکومینٹری

بھٹو خاندان کے لئے خوشی کا دن

بھٹو خاندان کے لئے خوشی کا دن، بختاور بھٹو کی منگنی آج، بلاول ہاؤس کراچی میں منگنی کی...

اشتعال انگیزتقاریرکیس ، DIG کوتوہین عدالت کانوٹس

atcکراچی ایم کیو ایم کے بانی کی جانب سے 22 اگست 2016 کو کی جانے والی پاکستان مخالف اشتعال انگیز تقریر اور میڈیا کے دفاتر پر ہونے والے حملوں سے متعلق انسداد دہشت گردی کی عدالت میں زیر سماعت کیس میں ڈپٹی انسپکٹر جنرل (ڈی آئی جی) ایسٹ سلطان علی خواجہ کو چالان پیش نہ کرنے پر توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا گیا۔نجی چینل کے مطابق بانی ایم کیو ایم کی تقریر سے متعلق 24 کیسز کی سماعت میں ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار، رہنما خواجہ اظہار الحسن، عامر خان، رؤف صدیقی، محفوظ یار، قمر منصور اور دیگر عدالت میں پیش ہوئے جبکہ ایم کیو ایم رہنما ریحان ہاشمی عدالت میں پیش نہیں ہوئے۔عدالت نے پولیس کی جانب سے چالان اور ایف آئی آر پیش نہ کرنے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے سپریٹنڈنٹ آف پولیس (ایس پی) انویسٹی گیشن الطاف سرور ملک سمیت تمام تفتیشی افسران کے خلاف ناقابلِ ضمانت وارنٹ گرفتار ی جاری کردیئے۔خیال رہے کہ آج (20 جنوری) کو آئی جی سندھ پولیس کے دفتر سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق ان کے عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔بعد ازاں انسداد دہشت گردی کی عدالت نے تمام تفیشی افسران کی تنخواہ بند کرنے کا حکم جاری کرتے ہوئے ڈی آئی جی ایسٹ، ایس پی اور دیگر کو 10 فروری تک ذاتی طور پر پیش ہو نے کا حکم دیا۔

Open chat