معروف اداکار اور پی پی پی امیدوار ایوب کھوسو کا خصوصی انٹرویو

ayob khoso interview 06 for webضبط قلم: عارف رمضان جتوئی
ایوب کھوسو نے پی ٹی وی سے اپنی ادکاری سے کا آغاز کی اور 3دہائیوں سے پاکستانی ٹی وی ڈراموں میں کام کر رہے ہیں۔ ایوب کھوسو فلموں میں بھی کام کا اچھا تجربہ رکھتے ہیں۔ ایوب کھوسو نے بی اے جامعہ بلوچستان سے کیا۔ اسکول سے اداکاری کا آغاز کیا۔ پی ٹی وی کوئٹہ سینٹرزسے ”چھاوں“ ان کا پہلا ڈراما تھا۔ کھوسو بلوچی، پشتو، بیروہی، سندھی، اردو اور انگریزی زبانوں پر عبور رکھتے ہیں۔

اداکاری میں اپنا نام بنانے والے ایوب کھوسو نے الیکشن 2018ءمیں پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پر باقاعدہ سیاست میں آنے کا اعلان کیا اور کراچی کے حلقہ پی ایس 101پر امیدوار نامزد ہوئے۔ این اے 243سے پیپلز پارٹی مرکزی رہنما اور سابق ڈپٹی اسپیکر صوبائی اسمبلی سیدہ شہلا رضا بھی الیکشن لڑ رہی ہیں۔ ایوب کھوسو اور شہلا رضا نے اپنے حلقوں میں مل کر انتخابی مہم چلائی۔ ایوب کھوسو نے شوبز کی دنیا کو خیر باد کہنے کا ارادہ کرلیا یا پھر وہ سیاست میں رہ کر دونوں کام کریں گے؟ حال ہی میں ان کی ڈرامہ سیریل ”روبرو عشق تھا“ تین ہی اقساط پر کام کرنے کے بعد مرنے کی اداکاری کیوں کی گئی۔۔۔ یہ سب جاننے کے لیے کراچی اپ ڈیٹس کی ٹیم نے ایوب کھوسو سے کیا خصوصی انٹرویو۔۔ انٹرویو قارئین کے لیے پیش کیا جارہا ہے، پڑھ کر اپنی رائے کا اظہار ضرور کیجیے۔

ayob khoso interview 03 for webسوال: آپ نے شوبز سے سیاست میں آنے کا فیصلہ کیا ، کیا شوبز چھوڑنے کا ارادہ ہے؟
ایوب کھوسو: جی فیصلہ تو کیا ہے اور میں چاہتا ہوں کہ ملکی سیاست میں تبدیلی آنی چاہیے۔ پیپلز پارٹی نے ہمیشہ ملک کے لیے کام کیا۔ ملک کی بہتری اور ترقی ہی پیپلز پارٹی کا مقصد اور منشور رہا ہے۔ اس لیے میں نے یہیں سے ملک کی خدمت کے لیے خود کو پیش کیا اور اس امید پر کہ کچھ کروں گا۔ جہاں تک شوبز چھوڑنے کی بات ہے تو ایسا نہیں ہے، شوبز میں رہوں گا اور وہاں بھی جو ممکن ہوگا کام کروںگا۔ البتہ یہ ہوسکتا ہے کہ میں شوبز کو اب مکمل وقت نہ دے پاﺅں۔

سوال: آپ کی مہم کیسی رہی، کیا کمی رہی ، عوامی رد عمل کیسا پایا؟
ایوب کھوسو: مہم اچھی رہی ، ہم نے ڈور ٹو ڈور کمپئن چلائی اور بہت اچھا ریسپونس بھی آیا۔ ہاں وقت بہت کم ملا جس کی وجہ سے ویسی مہم نہیں چلا پائے جیسی چلانی چاہیے تھی۔ امید تو اچھی ہے ، باقی ووٹنگ پر پتا چلے گا۔ ہم نے اپنے حلقے کے عوام تک اپنا پیغام پہنچا دیا ہے۔ باقی ایک بات کہوں گا عوام کو ضرور با ضرور نکلنا چاہیے۔ جس کو بھی ووٹ دیں ان کی مرضی ہے مگر ضرور نکلیں۔

سوال: ڈرامہ ”روبرو عشق تھا“ کی چوتھی قسط میں آپ کے مرنے کی اداری اسکرپٹ کا حصہ یا یا وقت کی کمی؟
ایوب کھوسو: کسی حدتک اس میںالیکشن میں مہم تھی۔ کیوں کہ وقت کی کمی کی وجہ سے وہاں ٹائم دینا مشکل تھا۔ الیکشن میں مہم پر بہت وقت دینا پڑتا ہے۔ تو اس لیے وہاں سے خود کو نکال لیا۔

سوال: کسی پارٹی یا آزاد امیدوار نے آپ کی حمایت کی، یا آپ نے کسی سے حمایت مانگی؟
ایوب کھوسو: میں نے کسی سے کوئی حمایت نہیں مانگی اور نہ کسی سے کوئی ملاقات ہوئی۔ نہ کسی نے امیدوار مجھ سے امیدوار حمایت کی ہے۔

سوال: سیاست کیسی ہونی چاہیے، کیا پیغام ہے آپ کا؟
ایوب کھوسو: سیاست کا مقصد عوام کی خدمت ہونی چاہیے۔ لوگوں سے محبت کریں۔ ان کے مسائل کو حل کریں، کوئی بھی سیاست دان ہے اور وہ کہیں بھی ہے اس کے سیاسی ایجنڈے میں عوام کو ترجیح دینی چاہیے۔ عوام کے لیے قانون سازی کریں۔ ان کے فلاح و بہبود کے لیے کام کریں۔ ہم تو شروع دن سے یہیں کہتے آئے ہیں کہ عوام کی فلاح ہی ہمارا مقصد ہے اور ہم نے اپنی مہم میں اور پارٹی منشور میں عوام کے فلاحی پرگرامات رکھے ہیں، جن میں تعلیم و صحت سمیت بنیادی سہولیات شامل ہیں۔

سوال: کراچی اپ ڈیٹس کے توسط سے آپ کا قارئین کے لیے پیغام؟
ایوب کھوسو: میں کراچی اپ ڈیٹس کے توسط سے قارئین کو یہیں کہوں گا کہ 25جولائی کو آپ ضرور با ضرور نکلیں۔ اپنے لیے نکلیں، اس ملک کی ترقی کے لیے نکلیں۔ اس کے ساتھ ساتھ پر امن الیکشن کا انعقاد کرانے میں عوام کا بہت بڑا کردار ہے، الیکشن والے دن امن و امان کا خیال رکھیں۔ کسی سے الجھیں نہیں، لڑیں نہیں بلکہ ایک دوسرے کا خیال رکھیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top