Tuesday, October 20, 2020
Home کالم /فیچر فنکار (عتیق احمد صدیقی)

فنکار (عتیق احمد صدیقی)

poorrبھائی جانو!۔۔۔ میں کوئی بھکاری نہیں۔۔۔۔ مزدور آدمی ہوں۔ محنت کر کے اپنے بال بچوں کا پیٹ پالتا ہوں مگر۔۔ ۔ آج تین دن ہو گئے ہیں کوئی مزدوری نہیں ملی،  گھر میں کھانے کو کچھ نہیں۔  بچے صبح سے بھوکے  ہیں۔  ان کی تکلیف نہیں دیکھی جاتی ، کوئی عزیز رشتہ دار بھی نہیں۔ مجبوری کے عالم میں آپ کے سامنے ہاتھ پھیلا رہا ہوں، تھوڑی مدد کریں۔۔۔۔“

وہ بس میں خواتین کے حصے میں جنگلے کے ساتھ ٹیک لگائے ۔۔۔۔۔ ایک ہاتھ سے بیلچہ اور دوسرے سے چھت میں لگا ڈنڈا تھامے دھیمے شرمندہ شرمندہ لہجے میں مسافروں سے مخاطب تھاچھ فٹ سے نکلتا قد۔۔۔۔ مضبوط پاوں ، عمر اٹھائیس تیس برس سے زیادہ نہ رہی ہوگی۔
مجھے جیسے خود سے شرم آئی۔۔۔ یہ ہمارے عزیز وطن ۔۔.اسلامی جمہوریہ پاکستان کا ایک محنت کش جوان تھاجو اپنی جواں عمری، مضبوط و توانا قد کاٹھ اور محنت و مشقت سے اکل حلال کما کراپنے اور اپنے بال بچوں کا پیٹ پالنے کی خواہش اور کوشش کے باوجود اپنے ہی جیسے انسانوں کے آگے دست سوال دراز کرنے پر مجبور تھا۔ بلکہ یہ کہنا مناسب ہوگا کہ کر دیا گیا تھا ۔۔۔ اس کے ذمہ دار وہ اہل سیاست تھے جن کے شب و روز عوام کی حالت زار پر ٹسوئے بہا تے گزرتے ہیں یا وہ اہل حکومت جو کہ سرکاری خزانوں کے گلے تک بھر جانے۔۔۔ معیشیت و اقتصادیات کے آسمان ترقی کو چھو لینے کا ڈھنڈورا پیٹتے نہیں تھکتے ۔۔۔! یا پھر دونوں؟؟

میرا خود سے عہد ہے کہہ کبھی پیشہ ور بھکاریوں کو بھیک نہیں دوں گا، اور نہ صرف یہ کہ خود کام نہیں کرتا بلکہ دوسروں کو بھی اس بے کار خیر سے روکنے کی کوشش کرتا ہوں۔۔۔ پیشہ ور بھکاری چھپتے نہیں پہچانے جاتے ہیں مگر یہ شخص۔۔۔! میں نے بھرپور نگاہ اس بیلچہ بردار کڑیل جوان پر ڈالی جو نظریں جھکائے، حسرت و یاس کی تصویر بنا۔۔۔ ہاتھ پھلائے اب میری نشست کے قریب تھا ۔۔۔ نہیں یہ پیشہ ور بھکاری نہیں ہو سکتا۔حالا ت کا مارا ایک پریشان اور مجبور انسان ہے، میں نے سوچا۔۔ جن پیشہ ور بھکاریوں سے دوران سفر کئی کئی با رواسطہ پڑتا ہے، ان کے تو رنگ ڈھنگ ہی اور ہوتے ہیں۔ وہ توآنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بھیک کو بھتے کی طرح وصول کرتے ہیں۔ اور نہ دینے والے کو اس طرح قہر بھری نگاہوں سے گھورتے ہیں گویا س اس نے طویل عرصے سے دبایا ہوا ان کا قرضہ ایک بار پھر واپس کرنے سے انکار کر دیا ہو۔اب وہ میرے عین سامنے تھا۔ بے اختیار میرا ہاتھ اٹھا اور جیب سے ایک نوٹ نکل کر اس کی ہتھیلی پر منتقل ہو گیا۔

اگلے تین چار اسٹاپوں کے بعد میری منزل آگئی۔ یہاں مجھے کچھ کام تھا۔ ڈھائی گھنٹے بعد کام سے فارغ ہو کر اسٹاپ کی طرف جا رہا تھا کہ نگاہ نظر اسی بیلچہ بردار پر پڑی ۔ ٹھٹک کر رک گیا ۔ وہ پان کی ایک دکان کے قریب کھڑا تھا۔ بیلچہ ٹانگوں میں ٹکائے، ایک ہاتھ قمیض کے دامن کے اندر ڈالے غالبا وہ اند رونی جیب سے وہ کچھ نکالنے کی کوشش کر رہا تھا ۔ تجسس نے قدم ا س کی جانب اٹھوا دیے ، میں اس کے قریب پہنچ گیا ۔ اس دوران اس کا ہاتھ قمیض کے دامن سے باہر آچکا تھا جس میں چھوٹے نوٹوں کی ایک خاصی موٹی گڈی دبی ہوئی تھی۔۔ پانچ سو اور ایک سو کا نوٹ صاف نظر آرہے تھے۔ اس دوران دکاندار پہلے سے موجود گاہکوں کو نمٹا چکاتھااور اب بیلچہ بردار اس کے سامنے کھڑا تھا ۔ میں بھی اس کے قریب ہی جا کھڑا ہوا ۔ اس نے ہاتھ  میں تھامی نوٹوں کی گڈی میں سے نکالا پچاس کا نوٹ بڑھاتے ہوئے دکاندار سے مخاطب ہوا:
”او یار!۔۔۔ اک چھوٹا گولڈلیف دا پاکیٹ دے۔۔۔ تے اک سونف خوشبو پان۔۔“ اس نے ایک اچٹیی سی نظر مجھ پر ڈالی ۔۔۔ پھر دکاندار سے ڈانٹنے کے انداز میں بولا
Begging-Professionاو یار! ۔۔۔ جلدی کر تیرے ہاتھوں میں دم ہی نہیں۔۔ ۔ میرے پاس فالتو ٹیم نئیں اے۔۔۔“ دکاندار” چھوٹا گولڈلیف“پہلے ہی اس کے سامنے دھر چکا تھا۔ سونف خوشبو پان بھی پڑیا میں باندھ کر اس کے حوالے کیا۔ اس دوران بیلچے بردار نے ایک سگریٹ پیکٹ سے نکال کر بجلی کے کھمبے سے جھولتی سلگتی ہوئی رسی سے سلگائی اور ایک لمبا کش کھینچ کر آسودہ انداز میں دھوئیں کے مرغولے فضا میں بکھیر دیے۔۔۔ دکاندار کی جانب سے واپس کیےپیسے  سمیٹ کر جیب میں ڈالے۔اور سگریٹ کے کش لگاتا ہوا سڑک کی جانب بڑھ گیا، جس کے دوسری جانب واقع ایک معروف نہاری ہاوس غالبا اس کی اگلی منزل تھی ۔
میں نے پان والے کو اس کی حقیقت سے آگاہ کیا تو وہ زیر لب مسکرایااور بولا:
”بھائی صاحب! یہ بڑا فنکار آدمی ہے۔اور اکیلا نہیں کئی ساتھی بھی ہیں اس کے۔  سب کا یہی دھندا ہے۔ اور بڑا مال کمارہے ہیں۔۔۔ ہم اور آپ ان کی کمائی کے بارے میں سوچ بھی نہیں سکتے۔۔۔۔!“
”واقعی یہ شخص فنکار ہے۔۔۔ بہت بڑا فنکار“۔۔۔ میں نے دل میں اقرار کیا اور سر جھکائے بس اسٹاپ کی طرف چل دیا۔

atiquesid2@gmail.com

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

وزیر اعلیٰ نے زبردست قسم کی بیان بازی کی کی ہے، حلیم عادل شیخ

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما حلیم عادل شیخ نے کہا کہ وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ نے زبردست قسم کی بیان بازی...

پاکستان تحریک انصاف کے وکلا کا کیپٹن صفدر کی ضمانت کا عدالتی حکم چیلنج کرنے کا اعلان

پاکستان تحریک انصاف کے وکلا نے اعلان کرتے ہوئے کہا کیپٹین صفدر کی ضمانت کا عدالتی حکم چیلنج کریں گے ، ڈپٹی...

شیریں جناح کالونی مسافر بس میں دھماکہ، سیکورٹی اداروں نےعلاقے کو گھیر لیا

کراچی: شیریں جناح کالونی مسافر بس میں دھماکہ متعدد افراد زخمی، سیکورٹی اداروں نےعلاقے کو گھیر لیا، پولیس کے مطابق شیریں جناح...

شیریں جناح کالونی کےقریب مسافربس میں دھماکا، متعدد افراد زخمی

کراچی: شیریں جناح کالونی کےقریب مسافربس میں دھماکا، متعدد افراد زخمی پولیس کے مطابق بم ڈسپوزل اسکواڈ کو فوری طور پر طلب...