Sunday, October 25, 2020
Home خصوصی رپورٹس موبائل کمپنیوں کی صارفین سے لوٹ مار(شجیع کامل)

موبائل کمپنیوں کی صارفین سے لوٹ مار(شجیع کامل)

 news-1420567052-3976_largeپی ٹی اے قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے موبائل کمپنیاں کال سیٹ اپ چارجزکے نام پر13کروڑ صارفین سے یومیہ اربوں روپے وصول کر رہی ہیں ،مختلف پیکجز کے نام پرفی کال12 پیسے کی وصولی کی جاتی ہے ،پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی کی جانب سے پابندی کے باوجود پانچوں موبائل کمپنیوں نے گزشتہ 3ماہ سے چارجز لاگو کررکھے ہیں، کسی بھی کمپنی کا پیکج کرکے نئی کال کرنے سے پہلے اکاو¿نٹ میں 12 پیسے موجود نہ ہونے کی وجہ سے پیکج کے باوجود کال کی سہولت میسر نہیں ہوتی۔کروڑوں صارفین کو کمپنیوں کے ہیڈن (خفیہ) چارجز سے پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے،جبکہ کمپنی ہیلپ لائن آفیسرز ہیڈن(خفیہ) چارجزکی وصول سے لاعلم ہیں ۔ذرائع کے مطابق پاکستان میں موبائل فون کمپنیوں کے لیے قوانین اور ضابطہ اخلاق جاری کرنے والے ادارے پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی کی جانب سے پابندی کے باوجود ملک بھر میں پانچوں بڑی موبائل فون کمپنیاں کھلے عام خلاف ورزی کر رہی ہیں ،

Taxپی ٹی اے کی ویب سائیٹ پر موجود ٹیرف اور دیگر قواعد و ضوابط کے مطابق تمام سیلولر موبائل کمپنیاںاپنے اپنے ٹیرف کو واضع رکھیں گی تاکہ عوام اور صارفین کو کسی قسم کو کوئی نقصان نہ ہوجب کہ اس کے برعکس پاکستان میں موجود سیلولرموبائل فون کمپنیاں اپنے صارفین کو یومیہ ،،ہفت وار اور ماہانہ بنیادوں پر فراہم کئے جانے والے فون کال اور ٹیکسٹ میسجز کے پیکجزکی آڑ یومیہ اربوں روپے عوام سے غیر قانونی طور پرہتھیا رہی ہیں۔ پی ٹی اے کے مطابق پاکستان میں موجود 13 کروڑ 20لاکھ صارفین سے صرف کال سیٹ اپ چارجزکے نام پر یومیہ اربوں روپے کی وصولی کی جارہی ہے، کال سیٹ اپ چارجزسب سے پہلے ایک کمپنی نے 25 دسمبر 2013 کو اپنے صارفین پر لاگو کیا تھا اس کے بعد دیگر چاروں کمپنیوں نے بھی 31 دسمبر2013 تک اپنے چارجز لاگوکردیئے ہیں، مذکورہ چارجز میں کسی بھی کمپنی کے صارف کی طرف سے کئے جانے والے فون پیکج میں کال کی سہولت فراہم نہیں کی جاتی جب تک اس کے اکاو¿نٹ میں 12 پیسے موجود نہیں ہوتے۔ مذکورہ 12پیسے کی کٹوتی کے بعد ہی پیکج سے کال کی سہولت دی جاتی ہے۔ جبکہ 25 دسمبر 2013 سے پہلے صارف کسی بھی کمپنی کا فون کال پیکج کرنے کے بعد پیکج کی مدت تک بغیر کسی کٹوتی کے اس سہولت سے فائدہ اٹھا سکتا تھا۔ جب کہ اب گزشتہ چار ماہ سے کمپنیوں نے نئے طریقہ کار سے 13 کروڑصارفین سے زائد چارجزوصول کرنا شروع کردیئے ہیں۔ جب کمپنیوںکے مذکورہ غیر قانونی طریقہ کار کے بارے میں 99 فیصد صارفین اب تک بے خبر ہیں جس کی وجہ سے انہیں یومیہ کمپنیوں کی جانب سے اربوں روپے کا چونا لگایا جارہا ہے ،

شہریوں کا کہنا ہے کہ وقتا فوقتا ان کے موبائل اکاو27291420-1A9E-4A6F-8381-CC3F3964A481_w640_r1_sنٹ سے موجود پیسے غائب ہوجاتے ہیں جن کے بارے میں انہیں نہ ہی کمپنی کی جانب سے بتایا جاتا ہے اور نہ ہی انہیں خبر ہوتی ہے کہ یہ کس مد میں کٹوتی کی گئی ۔ ملک کی سب سے بڑی موبائل فون کمپنی کے افسر نے نام شائع نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ جس کمپنی کی جتنی زیادہ ”ویلیو ایڈڈ سروسز“ ہوتی ہیں وہ نیٹ ورک اتنا ہی زیادہ چارج کررہا ہوتا ہے جس سے شہریوں کی اکثریت بے خبر ہوتی ہے ۔ اور جب کمپنیوں کی ہیلپ لائن پر شکایت یا معلومات کے لیے فون کیا جاتا ہے تو اس پر بھی صارف سے ہرکمپنی کم سے کم 2 روپے چارج کرتی ہے۔اس حوالے سے رابطہ کرنے پر پاکستان ٹیلی کمیونی کیشن اتھارٹی کے ترجمان خرم مہران نے  بتایا کہ انہوں نے عوامی شکایات کے موصول ہونے کے بعد مذکورہ تمام کمپنیوں کو خطوط بھی ارسال کئے تھے جس کے جواب میں کمپنیوں نے کہا ہے کہ ان کے پیکجز پہلے بھی کم ہیں جس کی وجہ سے ان کے کئے مالی مشکلات زیادہ ہیں ،لہٰذا اگر ہم 2004 کے رولز کے مطابق کال چارجز کم بھی کرتے ہیں تو پی ٹی اے سے بغیر پوچھے کرتے ہیں اسی طرح مذکورہ چارجز بھی اپنی مرضی سے ہی کرنے دئیے جائیں۔ کمپنیوں کا اس حوالے سے یہ بھی موقف ہے کہ پی ٹی اے ان کے ٹیرف ریگولیٹ نہیں کررہا اس لیے وہ کال سیٹ اپ چارجز کو ختم کرنے پر انہیں پابند بھی نہیں کرسکتا۔

2 COMMENTS

  1. Baat to sahi he Shajee bhai ki lekin is me inho ne intehaaeee mubalgha aaaraaeee se kaaam lia and aik din me arboooon rupey lootna mumkin nahi or woh bhi sirf call setup charges ki mad me

  2. اگر ٹیلی کام کمپنیاں صرف ایک ارب روپے کال سیٹ اپ چارجز کے نام پر بٹوریں تو بھی اس کے لئے 10ارب کالز کی ضرورت ہے کیونکہ کمپنی ایک کال کے صرف10پیسے وصول کرتی ہے باقی 2پیسے ٹیکس کی مد میں حکومت کے پاس جاتے ہیں ۔ اگر 10ارب فون کالز کو 13کروڑ 20لاکھ صارفین پر تقسیم کیا جائے تو اوسطاً ایک صارف 75فون کالز کرے تو کمپنیاں ایک دن میں ایک ارب روپے کال سیٹ اپ کی مد میں حاصل کر سکیں گی ، اور آپ نے تو بات کر دی ہے اربوں روپے کی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

علی عمران کی گمشدگی، وزیراعظم کی ہدایت پر کمیٹی قائم

کراچی، وزیراعظم عمران خان نے جیو نیوز کے رپورٹر علی عمران سید کے لاپتہ ہونے کا نوٹس لیتے ہوئے جوائنٹ فیکٹ...

قائد اعظم ٹرافی ، 24 اکتوبر سے شروع ہوگی

کراچی، 24 اکتوبر سے قائد اعظم ٹرافی کا میلہ سجے گا۔ پی سی بی ذرائع کے مطابق قائد اعظم ٹرافی کی...

سندھ حکومت علی عمران کے لاپتہ ہونے کی تحقیقات کرے، فواد چوہدری

کراچی، وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے جیو نیوز کے رپورٹر علی عمران کے لاپتہ ہونے کی تحقیقات کےلئے سندھ...

جلد آٹا کی قیمت نیچے آجائیگی، کمشنر کراچی

کراچی، شہر کے انفرااسٹرکچر کی بہتری کے لئے بہت کام شروع ہوجائے گا، ان خیالات اظہار کمشنر کراچی سہیل راجپوت نے میڈیا...