Monday, November 30, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

نعمت رندھاوا قتل کیس، ملزمان کو عمر قید کی سزا

نعمت علی رندھاوا قتل کیس کا فیصلہ سنادیا گیا، ملزمان کاظم عباس اور نعمان کو عمر قید کی سزا،2،2 لاکھ کا جرمانہ اور جائیداد...

گلشن اقبال، عزیز بھٹی پارک کے قریب جھگیوں میں آتشزدگی

گلشن اقبال عزیز بھٹی پارک کے قریب جھگیوں میں آتشزدگی، ریسکیو ذرائع کے مطابق آگ لگنے کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی تاہم فائر بریگیڈ...

سردی کا 10 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا

کراچی میں نومبرکے دوران سردی کا 10 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا ہے اور کم سےکم درجہ حرارت 10.5 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔...

ڈاؤ یونیورسٹی کا کورونا ہسپتال اب تک فعال نہ ہوسکا

یونیورسٹی روڈ پر قائم ڈاؤ یونیورسٹی ڈینٹل کالج ہسپتال کا کورونا کا ہسپتال اب تک فعال نہ ہوسکا جس کے لیے ڈاؤ یونیورسٹی کی...

تھرسمیت شہرقائدمیں ڈینگی کٹس فراہم کی جائیں،وزیراعلیٰ

cm-polioکراچی وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نےآج سارا دن صوبے میں صحت کی خدمات کو بہتر بنانے پر صرف کیا۔انہوں نے تھرپارکر اور کراچی کو ڈینگی کٹس کی فراہمی کیلئے تمام تر ضروری اقدامات کرنے کی ہدایت کی،تاکہ اس مرض پر بروقت قابو پایا جا سکے۔انہوں نے یہ بات آج وزیراعلیٰ ہاؤس میں صحت کی خدمات سے متعلق ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔اجلاس میں صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر سکندر میندھرو، سیکریٹری صحت عثمان چاچڑ اور محکمہ صحت کے دیگر سینئر افسران نے شرکت کی۔وزیراعلیٰ سندھ کو بریفنگ دیتے ہوئے سیکریٹری صحت عثمان چاچڑ نے کہا کہ صوبے میں 1713ڈینگی کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔جس میں سے 1510کیسز کراچی میں جن میں تین کی موت ہوئی،68حیدرآباد اور 84تھرپارکر میں ڈینگی کیسز رپورٹ ہوئے۔صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر سکندر میندھرو نے کہا کہ تھر میں اس وقت 88کیسز رپورٹ ہوئے ہیں،جن میں سے 84کا حیدرآباد میں علاج کرکے انہیں واپس گھر بھیج دیا گیا،صرف چار مریضوں جوکہ ایل ایم سی حیدرآباد میں داخل ہیں انکی حالت بھی بہتر ہے۔تھرپارکر میں ڈینگی کے اسباب بتائے ہوئے ڈاکٹر سکندر میندھرو نے بتایا کہ تھرمیں لوگ ٹینکوں میں اور تالابوں میں پانی جمع کرتے ہیں، ڈینگی مچھرصاف اور جمع شدہ پانی میں انڈے دیتا ہے اور یہی پانی دیہاتی پینے اور دیگر مقاصد کیلئے استعمال کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ڈینگی کراچی میں بھی پایا گیا ہے اور اس کی وجوہات میں سے ایک یہ بھی ہے کہ زیادہ تر تھر کے لوگ جو کہ کراچی میں کام کرتے ہیں وہ اپنے گاؤں جن کا زیادہ آنا جانا ہے اور یہ لوگ اپنے دیہاتوں سے ڈینگی انفیکشن اپنے ساتھ لے آتے ہیں۔صوبائی وزیر نے کہا کہ ڈینگی کنٹرول پروگرام منیجر ڈاکٹر مسعود سولنگی نے کراچی کے مختلف علاقوں بشمول چڑیا گھر میں جمع شدہ پانی کے نمونے لئے اور اس میں لاکھوں کی تعداد میں لورویا(ڈینگی کے بیج) پائے گئے۔ سیکریٹری صحت نے وزیراعلیٰ سندھ کو بتایا کہ ڈینگی کنٹرول پروگرام کی انتظامیہ نے 17ہزار کٹس خریدی ہیں اورانکی متاثرہ علاقوں میں تقسیم شروع کردی ہے

Open chat