مبینہ پولیس مقابلہ ایک ڈاکوزخمی، مقابلے کی زد میں میڈیکل کی طالبہ ہلاک

23-2-2018کراچی ، نارتھ کراچی کے علاقے انڈہ موڑ کے قریب پولیس مقابلے کے دوران ایک ڈاکو ہلاک جب کہ فائرنگ کے تبادلے میں میڈیکل کی طالبہ جاں بحق ہوگئی۔ایس ایچ او سرسید ٹاؤن الیاس شاہ نے بتایا کہ جس مقام پر پولیس مقابلہ ہوا ہے وہ ان کے علاقے میں آتا ہے جب کہ مقابلہ شارع نور جہاں پولیس اور ڈاکوؤں کے درمیان ہوا تھا جس میں ایک ڈاکو 25 سالہ ریاض ولد عبدالمالک ہلاک ہوگیا جبکہ زخمی ہونے والے ڈاکو کو طبی امداد فراہم کی جا رہی ہے مقابلے کے دوران راہگیر لڑکی 20 سالہ نمرا بیگ سر پر گولی لگنے سے شدید زخمی ہوگئی جسے انتہائی تشویشناک حالت میں عباسی شہید اسپتال لے جایا گیا بعدازاں اسے جناح اسپتال منتقل کر دیا جہاں وہ دوران علاج زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے زندگی کی بازی ہار گئی۔ مقتولہ نمرا نارتھ کراچی سیکٹر سیون ڈی ٹو کی رہائشی اور ڈاؤ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کی طالبہ تھی۔جناح اسپتال میں لیڈی ایم ایل او کی عدم موجودگی اوراسپتال آنے سے انکارپر مقتولہ کی لاش 4 گھنٹے تک مردہ خانے میں پڑی رہی جس کے باعث مقتولہ کے اہلخانہ کوشدید ازیت کا سامنا کرنا پڑا۔اہل خانہ نے کہا کہ ہم صرف یہ جاننا چاہتے ہیں کہ گولی پولیس کی لگی یا ڈاکوؤں کی، موبائل میں پولیس والوں کوکہتے سنا کہ غلطی ہوگئی، عباسی میں ہمیں بتایا گیا کہ گولی کا انٹری اورایگزٹ دونوں ہے۔ مقتولہ دو بہن بھائیوں میں سب سے بڑی تھی۔ نمرہ کے والد بھی محکمہ پولیس میں تھے جن کا 2010 میں انتقال ہوگیا تھا۔ واقعے کے وقت مقتولہ یونیورسٹی سے رکشہ میں سوار ہوکر گھرنارتھ کراچی جا رہی تھی۔مقتولہ نمرہ کے ماموں ذکی احمد نے جناح اسپتال میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جو صورتحال لگ رہی ہے اس سے یہی معلوم ہوتا ہے کہ نمرہ پولیس کی گولی کا نشانہ بنی ہے۔ اس واقعے کی غیرجانبدارانہ تحقیقات چاہتے ہیں۔ کئی گھنٹے سے یہاں رل رہے ہیں پوسٹ مارٹم نہیں کیا جارہاہے۔ انڈا موڑ پرفائرنگ کی اطلاع ٹی وی کے ذریعے ملی جونہی نمرہ نام معلوم ہوا ہم نے فوری رابطہ کیا، کئی گھنٹے سے قانونی کارروائی کے لئے انتظار کی سولی پر لٹکے ہیں جب کہ تمام ارباب اقتدار اس بے حسی کا نوٹس لیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top