Monday, October 26, 2020
Home خاص خبریں شہری حکومت ڈی ایم سی ملیر افسران کی میمن گوٹھ میں عوام کے مسائل...

ڈی ایم سی ملیر افسران کی میمن گوٹھ میں عوام کے مسائل پر کھلی کچھری

Malir Townڈی ایم سی ملیر افسران کی میمن گوٹھ میں عوام کے مسائل پر کھلی کچھری ،علاقہ مکینوں نے مسائل کے انبار لگا دےے،درسنہ چھنہ کے 21گوٹھوں میں 20 روز سے پانی کی قلت پر سینکڑوں مکینوں کا عوامی کچھری میں احتجاجی مظاہرہ ، اسٹیج کے قریب دہرنا ،شدید نعرے بازی ،کچھری میں کمشنر کراچی نہ پہنچ سکے ، کئی ذمہ دار افسران بھی غیر حاضر۔تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیر بلدیات شرجیل میمن کی ہدایت پر ڈسٹرکٹ میونسپل کارپوریشن ملیر کے افسران کی جانب سے گڈاپ زون کے مرکزی علاقہ میمن گوٹھ میں مسائل پر کھلی کچھری منعقد کی گئی جس میں کمشنر کراچی ضروری کام کے باعث شرکت نہ کرسکے جس کا بہانہ بنا کر دیگر محکمات کے اعلی افسران نے بھی شرکت میں حاضری کو ضروری نہ سمجھا جس کے باعث کچھری میں موجود عوام میں مایوسی اور شدید برہمی پھیل گئی جب کہ کھلی کچھری میں ڈی ایم سی کے ایڈمنسٹریٹر ظہیر عابد میمن ،رحمت اللہ شیخ اور ڈی ایم سی کے دیگر محکمات کے افسران کے علاوہ کے الیکٹرک کے افسر وقار مہر، اسسٹنٹ کمشنر اقبال میرانی اور پیپلز پارٹی کے صدر راجا رزاق ،پی ایس 127کے صدر نعمان عبداللہ ،نائب صدر مرتضی بلوچ و دیگر نے شرکت کی ۔کھلی کچھری میں اس وقت شدید بد نظمی پھیل گئی جب درسنہ چھنہ کے گوٹھوں رضا محمد گوٹھ ،خمیسو گوٹھ، علی نواز گوٹھ، جام مہر علی سمیت 20سے زائد گوٹھوں کے مکین بڑی تعداد میں 20روز سے پانی کی قلت کے خلاف ہاتھوں میں بینر اور سروں پر خالی مٹکے لےے احتجاجی نعرے بلند کرتے ہوئے کچھری میں پہنچے ،اس موقع پر پیپلز پارٹی کے نعمان عبداللہ ،ایڈمنسٹریٹر ظہیر عابد اور کے الیکٹرک کے وقار مہر نے مظاہرین سے مذاکرات کےے ،ظہیر عابد میمن نے چھ ماہ سے رکے ہوئے پانی کی موٹروں کے 25لاکھ سے زائد کے بل کے الیکٹرک کو ادا کرکے فوری طور پر پانی بحال کرنے کی یقین دہانی کرائی جس کے بعد مظاہرین کچھری کے اسٹیج کے سامنے خاموش دہرنا دیکر بیٹھ گئے جس کے بعد میونسپل کمشنر رحمت اللہ شیخ کی برترفی کے لےے نعرے بلند ہوئے جس پر تحقیقات کی یقین دہانی پیپلز پارٹی کے راجا رضاق نے کرائی ،علاقہ کے سماجی کارکنان ابوبکر میمن ،عبدالحمید میمن ، سکندر خاصخیلی ،محمد عالم چھٹو ،الطاف جوکھیو ،عبدالرو¿ف بلوچ، جاوید جوکھیو،اقبال ملیری ، صالح محمد خاصخیلی ،سرور بلوچ ،منظور خاصخیلی ، اختر سموں سمیت کئی لوگوں نے علاقوں میں پانی کی قلت ،سیوریج سسٹم کی خرابی ،گندگی کے ڈھیر، ٹوٹے ہوئے راستے ،اسکولوں اور اسپتالوں کی بندش ،قبرستانوں پر قبضے ،کھیل کے میدانوں کی خراب صورتحال اور ڈی ایم سی کی جانب سے سات ارب روپے بجٹ ہونے کے باوجود ترقیاتی ٹینڈر نہ کرانے کی شکایات کے انبار لگادےے۔کچھری کے آخر میں ڈی ایم سی کے ایڈمنسٹریٹر ظہیر عابد نے کہا کہ ہم ملیر کے علاقوں میں صفائی ستھرائی اور ترقیاتی کاموں کے سلسلے میں ذمی داری سے کام کررہے ہیں ۔پیپلز پارٹی ملیر کے صد ر راجا رزاق اور نعمان عبداللہ نے کہا کہ ڈی ایم سی کا دفتر نیشنل اسٹیڈیم سے ختم کرکے ضلع ملیر کے رزاق آباد منتقل کیا جائے اگر افسران نے عوا م کے مسائل حل کرنے میں دلچسپی نہیں لی تو ایسے افسران کا گھیراو¿ کرینگے ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

گلشن اقبال ، خطرناک ڈکیت پولیس کے ہتھے چڑھ گیا

کراچی، گلشن اقبال پولیس کی بڑی کارروائی، درجنوں وارداتوں میں مطلوب ملزم گرفتار۔ پولیس کے مطابق ملزک صدیق پولیس کو اسٹریٹ، قتل...

ملازمت پیشہ خواتین کے مسائل، اور ان کا حل

تحریر: مریم صدیقی وہ تھکی ہاری شام کے 4 بجے آفس سے نکلی، 4:30 بجے گھر میں...

ولیکا آتشزدگی، واٹر بورڈ نے ایمرجنسی نافذ کردی

کراچی ،واٹر اینڈ سیوریج بورڈ نے سائٹ ٹاؤن ولیکا اسپتال کے قریب فیکٹری میں آتشزدگی کے بعد سخی ھسن ہائیڈرنٹس پر...

کراچی سمیت سندھ میں ٹڈی دل کے حملوں کا خطرہ

کراچی ،سندھ میں پھرفصلوں پرٹڈی دل کےحملےکاخدشہ محمکہ زراعت سندھ نےٹڈی دل کےحملےکانیاالرٹ جاری کردیا ۔ محکمہ زراعت کے حکام کا...