Tuesday, October 27, 2020
Home خاص خبریں صحت، تعلیم، فلاحی ادارے تعلیم و تحقیق پر توجہ دینا وقت کی ضرورت ہے،ماہرین تعلیم

تعلیم و تحقیق پر توجہ دینا وقت کی ضرورت ہے،ماہرین تعلیم

20-10-2016-aکراچی، ماہرین تعلیم، سینئر اساتذہ اور دانشور حضرات نے کہا ہے کہ ترقی کے لیے تعلیم و تحقیق کے شعبہ پر توجہ دینا وقت کی ضرورت ہے۔ انقلاب تعلیم ہی کے ذریعے آسکتا ہے۔ کامیابی کے لیے قائد اعظم اور علامہ اقبال کے وژن کو اپنانا ہوگا۔ تحقیقی طباعت میں پاکستان‘ بھارت کو پیچھے چھوڑ چکا ہے۔ ٹیکنالوجی معاشرے کی بہتری کے لیے استعمال کی جائے۔ اہل علم اور جہلاءکی برابری سے معاشرتی بگاڑ پیدا ہوا ہے۔ تعلیم کا مقصد پیسہ کمانا نہیں، نوجوانوں کا مائند سیٹ بدلنے کی ضرورت ہے۔ ان خیالات کا اظہار سابق وفاقی زیر اور ایچ ای سی کے سابق چیئرمین ڈاکٹر عطاءالرحمن، بزرگ رہنما آزاد بن حیدر ایڈووکیٹ، جماعۃ الدعوۃ کراچی کے مسؤل ڈاکٹر مزمل اقبال ہاشمی، جناح یونی ورسٹی برائے خواتین کے چانسلر وجیہ الدین، اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ کراچی کے چیئرمین پروفیسر انعام احمد، ناظم امتحانات عمران چشتی، اینکر پرسن عمر خان، المحمدیہ اسٹوڈنٹس پاکستان کے مسؤل محمد راشد علی، عثمان افتخار و دیگر نے مقامی ہوٹل میں المحمدیہ اسٹوڈنٹس اور کراچی یوتھ فیڈریشن کے اشتراک سے منعقدہ ”کراچی ایجوکیشنل کانفرنس“ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ کراچی میں اول، دوم، سوم پوزیشن حاصل کرنے والی طالبات آسیہ خالد، مروہ تنویر، رمشاءکو شیلڈز دیے گئے اور ان کے لیے جامعات کی طرف سے اسکالر شپ کا اعلان بھی کیا گیا۔ کانفرنس سے ڈاکٹر عطاءالرحمن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج کی دنیا علم کی دنیا ہے۔ آگے بڑھنے کے لیے تعلیم پر انحصار کرنا ہوگا۔ یونی ورسٹی خوبصورت عمارتوں کا نہیں، خوبصورت دماغوںکا نام ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو علم و تحقیق کے میدان میں مزید ترقی کرنا ہوگی۔ مشرف دور میں 200 اراکین پارلیمنٹ جعلی ڈگریوں کے حامل تھے۔ اکثریت کے پیچھے چلنے کی بجائے اہل علم کو اپنا رہبر تسلیم کرنے کی ضرورت ہے۔ ڈاکٹر عطاءالرحمن نے کہا کہ تحقیقی طباعت میں پاکستان‘ انڈیا کو پیچھے چھوڑ چکا ہے۔ آج دنیا بھر میں ہر شعبے میں تحقیق ہو رہی ہے۔ پیسہ کمانا تعلیم کا مقصد نہیں ہونا چاہیے۔ ٹیکنالوجی کو انسان کی بہتری کے لیے استعمال میں لایا جائے۔ بزرگ رہنما آزاد بن حیدر ایڈووکیٹ نے کہا کہ ترقی کے لیے قائد اعظم اور علامہ اقبال کے وژن کو اپنانا ضروری ہوچکا ہے۔ قائد اعظم تعلیمی اداروں کی بہتری کے لیے اپنا ذاتی سرمایہ خرچ کرتے تھے۔ وہ تعلیم ہی کو ترقی کا سب سے بڑا ہتھیار سمجھتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوری نظام خرابیوں کی جڑ بن چکی ہے۔ اہل علم اور جہلاءکو ایک صف میں کھڑا کردیا گیا ہے۔ 98 فیصد جہلاءکے ووٹ سے ملک ترقی نہیں کرسکتا۔ جماعۃ الدعوۃ کراچی کے مسؤل ڈاکٹر مزمل اقبال ہاشمی نے کہا کہ تعلیم کا مقصد تہذیب و ثقافت کو ترک کرنا سمجھ لیا گیا ہے۔ نوجوانوں کے مائنڈ سیٹ کو بدلنا ہوگا کہ تعلیم نوکری کے لیے نہیں بلکہ اپنی روایات کو جاننے کے لیے ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام دنیا میں تبدیلی کے لیے آیا ہے، یہ ترقی کی راہ میں رکاوٹ نہیں ہے۔ تعلیم کے ذریعے انقلاب کے لیے کردار ادا کیا جائے۔ المحمدیہ اسٹوڈنٹس پاکستان کے مسؤل محمد راشد علی نے کہا کہ قوم کی تعمیر و ترقی میں نوجوان ہی اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ تعلیم کے فروغ کے لیے تعلیمی اداروں میں بہتری کی ضرورت ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

گلشن اقبال ، خطرناک ڈکیت پولیس کے ہتھے چڑھ گیا

کراچی، گلشن اقبال پولیس کی بڑی کارروائی، درجنوں وارداتوں میں مطلوب ملزم گرفتار۔ پولیس کے مطابق ملزک صدیق پولیس کو اسٹریٹ، قتل...

ملازمت پیشہ خواتین کے مسائل، اور ان کا حل

تحریر: مریم صدیقی وہ تھکی ہاری شام کے 4 بجے آفس سے نکلی، 4:30 بجے گھر میں...

ولیکا آتشزدگی، واٹر بورڈ نے ایمرجنسی نافذ کردی

کراچی ،واٹر اینڈ سیوریج بورڈ نے سائٹ ٹاؤن ولیکا اسپتال کے قریب فیکٹری میں آتشزدگی کے بعد سخی ھسن ہائیڈرنٹس پر...

کراچی سمیت سندھ میں ٹڈی دل کے حملوں کا خطرہ

کراچی ،سندھ میں پھرفصلوں پرٹڈی دل کےحملےکاخدشہ محمکہ زراعت سندھ نےٹڈی دل کےحملےکانیاالرٹ جاری کردیا ۔ محکمہ زراعت کے حکام کا...