Wednesday, October 28, 2020
Home کالم /فیچر آہ میرے ملک کا تعلیمی نظام (محمدہارون راجپوت)

آہ میرے ملک کا تعلیمی نظام (محمدہارون راجپوت)

eduآہ میرے ملک کا تعلیمی نظام نا جانے کس کی نظر لگ گئی ہے اس ملک خداد پاکستان کو یا پھر اللہ تعالی اہل پاکستان کی کس غلطی کی وجہ سے ناراض ہو گئے ہیں ۔ ہر طرف اسلام کو دبانے کی سازشیں سر گرم عمل ہیں ۔مدارس کو عوام کے لیے خوف کی علامت بنا دیا گیا ہے علماءکرام کو تنقید کا نشانہ بنانا اہل پاکستان کا شیوہ بنتا جا رہا ہے کیا اسی لیے حاصل کیا تھا اسلام کے نام پر الگ وطن کے جہاں ہم اپنی مذہبی عبادات بلا کسی روک ٹوک اور آزادی سے ادا کر سکیں ۔لیکن یہ کیا ہم تو یہ بول ہی گئے کے ہم نے ملک خداد پاکستان کو دو قومی نظریہ کی بنیاد پر حاصل کیا تھا ہمارے آباو اجداد نے پاکستان کا مطلب کیا ؟ لاالہ الا اللہ کا نعرہ لگایا اور لاکھوں کی تعداد میں قربانیاں دیں ۔ لیکن ہم بول بیٹھے ہیں پیسے اور ہوس کی لالچ میں کے اللہ کی پکڑ بہت مضبوط ہے ۔ اس کا عملی مظاہرہ سندھ کے پرائمری تعلیمی نصاب کی تبدیلی کی صورت سامنے آیا ہے۔تیسری کلاس کی کتاب میں ہندوں ،عیسائیوں اور یہودیوں کی کے مذہبی تہوار کو شامل کر دیا گیا ہے ۔اور چوتھی جماعت کی معاشرتی علوم کی کتاب میں سے سرکار دو جہاں حضرت محمد مصطفی ﷺ اور خلفائے راشدین کی تعلیمات و زندگی پر مشتمل باب کو ختم کر دیا گیاہے۔ ستم ظریفی یہ ہے کہ دنیا کی ان عظیم ہستیوں کی کے اسباق ہماری تعلیمی ونصابی کمیٹی کے کیے اتنے غیر اہم تھے (نعوذ بااللہ ) کہ ان کو مکمل طور پر نصاب میں سے حذف کر دیا گیا۔

نہ جانے اسلامی جمہوریہ پاکستان کے آئین پر حلف لینے والے ارباب اختیار اور حکومتی ادارے کہاں سوئے پڑے ہیں ۔کے کوئی کچھ بھی کرتا رہے ان کے کان پر جوں بھی نہیں رینگتی اور ان کا احتساب کرنے والا کوئی میدان میں نہیں آتا۔ یہ عمل نہ صرف سنگین کو تاہی ہے بلکہ مجرمانہ غفلت ہے کہ اسلام کے نام پر بنائے ہوئے ملک میں اسلام کی تعلیمات کو حذف کیا جائے۔حضرت محمد مصطفی ﷺ کہ جس کی حرمت پر ہمارے ماں باپ بہن بھائی اولاد اور دنیا کی ہر محبوب چیز قربان خلفائے راشدین کے جن کے بنا ہم اپنے ایمان کو ہی ثابت نہ کر پائیں ان کے بارے نا میں یا پڑھایا جائے بلکہ بے نظیر بھٹو، ملالہ یوسف زئی جیسے لوگوں کی قربانیاں اور زندگی کے حوالے سے نصاب میں باب ڈال کر پڑھایا جائے تو پاکستان ! اسلامی جمہوریہ پاکستان وہی اسلامی جمہوریہ پاکستان کے جسے بھٹو نے اسلامی آئین دیا کے جس کے مطابق اس کے تمام معاملات اسلام کے عین مطابق چلائے جائیں گے ۔کہاں ہیں وہ بھٹو کے جیالے کے جو ہر جگہ یہ راگ الاپتے پھرتے ہیں کے پاکستان کو شناخت ہم دی آئین ہم نے دیا تو آج پھر سندھ کے اندر کیوں خود ہی اس آئین سے بغاوت کی جا رہی ہے کیوں اس کے تقدس کا خیال نہیں رکھا جا رہا کیوں اس کے خلاف جا کے نصاب تعلیم میں تبدیلیاں کی جا رہی ہیں۔ خدارا ترقی کے نام پر ہماری جڑوں کو کھوکلی کرنے والی NGO’Sسے بچیں یہ ترقی کے نام پر ہماری آئندہ نسلوں کی رگوں میں زہر ڈالنے میں مصروف ہے اور ہماری آنکھوں پر چمک دھمک کی پٹیاں لگا کر ہماری نئی نسل کے معصوم ذہنوں کو غلط راہ پر لگانا ہے اور ان کی برین واشنگ جاری ہے خدارا ارباب اختیار حکومت کی چھینا چھپٹی سے نکل کر ان نازک معاملات پر توجہ دیں ۔

educاللہ تعالی قرآن پاک میں فرماتا ہے کہ خوب جان لو کہ! یہ دنیا اس کے سوا کچھ نہیں کہ ایک کھیل اور دل لگی اور ظاہری ٹپ ٹاپ اور تمہارا آپس میں ایک دوسرے سے فخر جتانا اور مال و اولاد میںایک دوسرے سے بڑھ جانے کی کوشش کرنا ہے اس کی مثال ایسی ہے جیسے ایک بارش ہوگئی تو اس سے پیدا ہونے والی نباتات کو دیکھ کر کاشت کار خوش ہوگئے پھر وہی کھیتی پک جاتی ہے اور تم دیکھتے ہو کہ وہ ذرد ہوگئی اور پھر وہ بھوسا بن کر رہ جاتی ہے اوراس کے برعکس آخرت وہ جگہ ہے جہاں سخت عذاب ہے اور اللہ کی مغفرت اور اس کی خوشنودی ہے ۔دنیا کہ زندگی ایک دھوکے کے سوا کچھ بھی نہیں ۔دوڑو اور اور ایک دوسرے سے آگے بڑھنے کی کوشش کرو اپنے رب کی مغفرت اور اس کی جنت کی طرف جس کی وسعت آسمان و زمین جیسی ہے ،جو مہیا کی گئی ہے ان لوگوں کے لیے جو اللہ اور اس کے رسولوں پر ایمان لائے ہوں یہ اللہ کا فضل ہے، جسے چاہتا ہے عطاءفرماتا ہے ،اور اللہ بڑے فضل والا ہے (سورة الحدید 21,20)۔ ذرا سوچیے کے دشمن کس طرح ہمارے ایمان کو ہم سے چھین رہا ہے اور کس طرح ہماری نئی نسل کو بربادی کی جانب لے کے جایا جا رہا ہے ۔تعلیمی سرگرمیں کو کم سے کم اور میوزیکل ،شو فیشن شو،سیر تفریح کے مخلوط دورے ،سنگنگ اور ڈانسنگ کمپٹیشن ،کا تعلیمی اداروں میں انعقاد ہمارے کلچر کا حصہ نہیں اس کے باوجود ان کا ہمارے تعلیمی اداروں میں انعقاد اور ان میں ہمارے حکومتی اداروں کااورNGO’Sکا تعان توجا طلب اور افسوس ناک ہے ۔
m.haroonrajput@gmail.com

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

سرجانی ٹائون سے لاپتہ 8 سالہ عروہ بازیاب

کراچی، پیر کے روز سرجانی ٹائون سیکٹر ڈی فور میں گھر کے باہر سے لاپتہ ہونےوالی 8 سالہ عروہ فہیم بازیاب، پولیس...

بدھ اور جمعہ کو سی این جی اسٹیشنز بند رہیں گے

کراچی، سندھ بھر کے سی این جی اسٹیشنز بدھ اور جمعہ کو بند رہیں گے، ذرائع کے مطابق بدھ اور جمعہ کو...

لیاقت آباد، سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی ٹیم پر حملہ

کراچی، سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی ٹیم پر لیاقت آباد میں حملہ، ذرائع ایس بی سی اے کے مطابق لیاقت آباد...

گزری، نجی بینک میں آتشزدگی،فائر بریگیڈ کی گاڑیاں روانہ

کراچی، گذری میں نجی بینک میں آتشزدگی، کنٹونمنٹ بورڈ کی گاڑیاں آگ پر قابو پانے کےلئے روانہ، ذرائع کے مطابق بینک میں...