Saturday, October 31, 2020
Home Trending حالیہ سیلاب مصنوعی ہے، بھارت متنازع ڈیموں کو جنگی ہتھیار کے طور...

حالیہ سیلاب مصنوعی ہے، بھارت متنازع ڈیموں کو جنگی ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہا ہے، حافظ محمد سعید

hafiz-saeed_کراچی،  جماعة الد عوة پاکستان کے امیر پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ پاکستان میں آنے والا حالیہ سیلاب مصنوعی ہے۔ بھارت متنازع ڈیموں کو جنگی ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہا ہے۔ باقاعدہ منصوبہ بندی کے تحت دریاﺅں میں پانی چھوڑ کر پاکستان کی فصلوں اور آبادیوں کو ڈبویا گیا۔ سندھ طاس معاہدے کی دھجیاں بکھیری جا رہی ہے۔نواز شریف کے آموں کے بدلے نریندرمودی نے سیلاب کا تحفہ بھیجا۔ پاکستان، بھارت کی آبی جارحیت پر خاموشی اختیار کرنے کی بجائے اس معاملے کو اقوام متحدہ اور عالمی فورم پر اٹھائے۔ اگر بھارت مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی مدد نہیں کرسکتا تو پاکستان آگے بڑھ کر کردار ادا کر ے۔ جماعة الدعوة سیلاب متاثرین کی مدد کر رہی ہے، لیکن وقتی ریلیف دینے سے معاملہ حل نہیں ہوگا۔ مستقل حل کے لیے پاکستان میں نئے ڈیموں کی تعمیر اور بھارت کی آبی جارحیت کو روکنا ہوگا۔ سیلاب متاثرین کی مدد اور بھارتی آبی جارحیت کے خلاف قوم کو اکھٹا کرنا میری اولین ترجیح ہے۔ قوم سے اپیل کرتاہوں کہ دل کھول کر متاثرین سیلاب کی امداد کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ جماعة الدعوة جماعة الدعوة کراچی کے امیر ڈاکٹر مزمل اقبال ہاشمی اور فلاح انسانیت فاﺅنڈیشن کراچی کے انچارج شاہد محمود بھی موجود تھے۔ پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر حافظ محمد سعید کا کہنا تھا کہ اس وقت پاکستان کا سب سے بڑا مسئلہ سیلاب ہے۔ یہ پہلا سال نہیں گزشتہ پانچ برسوں سے پاکستان مسلسل تباہ کن سیلابوں کی زد میں ہے۔ بھارت باقاعدہ منصوبے کے تحت مقبوضہ کشمیر میں متنازع ڈیم تعمیر کر رہا ہے۔ چناب پر بگلیہار اور جہلم پر کشن گنگا جیسے بڑے پراجیکٹ کے علاوہ لداخ میں دریائے سندھ پر دنیا کا تیسرا بڑا ڈیم تعمیر کیا جارہا ہے۔ اگر بھارت نے لداخ ڈیم کی تعمیر مکمل کرلی تو پاکستان کی فصلیں اور آبادیوں محفوظ نہیں رہیں گی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک زرعی ملک ہے۔ ہماری برآمداد کا زیادہ تر انحصار زراعت پر ہے۔ اگر زرعی زمینیں سیلاب کی زد میں رہیں گی تو پاکستان کی معیشت غیر مستحکم رہے گی۔ چاول، کپاس اور کماد کی فصل پر پاکستان کی برآمداد کا بڑا انحصار ہے، لیکن وسطی پنجاب میں چاول کی فصل تباہ ہونے کے بعد جنوبی پنجاب میں کپاس کی فصل بھی تباہی سے دوچار ہے۔ حافظ محمد سعید نے کہا کہ پاکستان میں سیلابی تباہ کاریوں کے علاوہ مقبوضہ کشمیر بھی تباہ کن سیلاب کی زد میں ہے۔ لیکن بھارت صرف اپنی فوجوں اور سیاحوں کو ریسکیو کرنے میں مصروف ہے۔ انہوں نے کہا کہ حریت رہنما سید علی گیلانی اور شبیر شاہ سے گزشتہ روز ٹیلی فونک رابطہ ہوا۔ حریت رہنماﺅں کا کہنا تھاکہ بھارت کشمیریوں سے انتقام لینا چاہتا ہے۔ بھارتی فوجیں کشمیریوں سے طنزیہ کہہ رہی ہیں کہ پاکستان کو مدد کے لیے بلواﺅ۔ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے، پاکستانیوں کے دل کشمیریوں کے ساتھ دھڑکتے ہیں۔ اگر بھارت کشمیریوں کی مدد کے لیے تیار نہیں تو پاکستانی حکومت آگے بڑھ کر کردار ادا کرے۔ ان کا کہنا تھا کہ سیلاب متاثرہ علاقوں میں جماعة الدعوة کی تاریخ کا بڑا ریلیف آپریشن جاری ہے۔ ہزاروں کارکنان موٹر بوٹس، ٹریکٹر ٹرالیوں اور دیگر ذائع سے سیلاب میں پھنسے افراد کو نکال رہے ہیں۔ روزانہ سینکڑوں مریضوں کا علاج اور ہزاروں متاثرین کو تیار کھانا، خشک راشن ، خیمے اور دیگر ضروری سامان فراہم کررہے ہیں۔ حافظ محمد سعید نے کہا کہ پاکستان ایک ایٹمی قوت ہے، بھارت اب 1971ءوالا کردار ادا نہیں کرسکتا۔ لیکن وہ سازشوں سے اب بھی باز نہیں آیا اور پاکستان کے خلاف مسلسل سازشوں میں مصروف ہے۔ نائن الیون کے بعد بھارت نے اس خطے کی گھمبیر صورت حال سے سب سے زیادہ فائدہ اٹھایا اور پاکستان کے خلاف مغربی بارڈر کو تخریبی کاری کے لیے استعمال کیا۔ ایک سوال کے جواب میں حافظ محمد سعید کا کہنا تھا کہ اس وقت سب سے بڑا مسئلہ سیلاب ہے ۔ اسلام آباد میں دھرنا دینے والے قوم پر رحم کھائیں اور اصل مسئلہ کے حل کی طرف لوٹ آئیں۔ سیاسی رسہ کشی پہلے بھی ہوتی رہی ہیں، یہ کام بعد میں بھی ہوسکتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ میں جذباتی نہیں بلکہ میں کئی روز سے سیلاب متاثرہ علاقوں میں ہوں۔ سیلاب سے ہونے والے نقصان کو دیکھا ہے۔ سیلاب متاثرین کی مدد اور بھارتی آبی جارحیت کے خلاف قوم کو اکھٹا کرنا میری اولین ترجیح ہے۔ ایک اور سوال کے جواب میں حافظ محمد سعید کا کہنا تھا کہ بھارت نے 1980ءسے اب تک 4 ہزار ڈیم تعمیر کیے ہیں، جن میں سے62 صرف مقبوضہ کشمیر میں تعمیر کیے گئے ہیں۔ جبکہ پاکستان میں اب تک 2 ڈیم تعمیر کیے جاچکے ہیں۔ نئے ڈیموں کی تعمیر پر سیاست کی بجائے ملکی ضروریات کو مدنظر جائے ۔ پاکستان کو مستقبل کے مسائل دیکھتے ہوئے ایک نہیں متعدد ڈیم بنانے ہوں گے ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

ہم سب کو تھوڑی سی شرم ہونی چاہے,وسیم اکرم کراچی والوں سے سخت ناراض

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان وسیم اکرم ساحل کی گندگی دیکھنے کے بعد ایک بار پھر عوام سے ناراض ہو گئے۔وسیم...

سندھ میں اربوں روپے کی کرپشن پر نیب کا بڑا اقدام

صوبہ سندھ میں اربوں روپے کی کرپشن پر قومی احتساب بیورو (نیب) نے بڑا ایکشن لے لیا۔نیب حکام کا کہنا ہے کہ...

مزار قائدکی بے حرمتی کا کیس کیپٹن (ر) صفدر کو عدالت میں پیش ہونے کا حکم

کراچی: عدالت نے مزار قائد پر نعرے بازی کے کیس میں کیپٹن (ر) صفدر کو آئندہ سماعت پر پیش ہونے کا حکم...

سول ایوی ایشن نے نارتھ سیکٹر لاہور ریجن میں ضم کردیا

کراچی :سول ایوی ایشن نے کراچی کے نارتھ سیکٹر فلائٹ انفارمیشن ریجن کو لاہور ریجن میں ضم کر دیا جو آج سے...