Thursday, December 3, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

ضلع وسطی کے مزید علاقوں میں اسمارٹ لاک ڈاؤن

کورونا وائرس کے بڑھتے کیسز کے پیش نظر کراچی ضلع وسطی کے مزید علاقوں میں اسمارٹ لاک ڈاؤن نافذ، لاک ڈاؤن والے علاقوں میں...

اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کا مثبت آغاز

 پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کا مثبت آغاز، اسٹاک ایکسچینج میں 377 پوائنٹس کا اضافہ، 100 انڈیکس کی 337 پوائنٹس کے اضافے سے 42...

النور سوسائٹی میں صحافی کو لوٹ لیا گیا

تھانہ سمن آباد کی حدود النور سوسائٹی بلاک 19 میں ڈکیتی کی واردات، صبح سویرے نیوز ون ٹی وی کے نیوز پروڈیوسر اور پی...

شہر قائد میں پولٹری کی قیمتیں بے قابو

شہر قائد میں پولٹری کی قیمتیں بےقابو، مرغی کا گوشت 380 سے 400 روپے فی کلو اور زندہ مرغی 250 روپے میں فروخت ہورہی...

وزیراعلیٰ،محکمہ صحت وپی پی ایچ آئی کامشترکہ اجلاس

cm in healthکراچی وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ پی پی ایچ آئی کو پورا بجٹ سندھ حکومت دیتی ہے ، سندھ میں صحت کے شعبے کی بہتری کے لئے طبی سہولیات کے حوالے سے پی پی ایچ آئی احسن طریقے سے خدمات انجام دے رہی ہے۔ یہ بات انہوں نے آج وزیراعلیٰ ہاؤس میں محکمہ صحت و پی پی ایچ آئی کا مشترکہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کی۔ اجلاس میں وزیر صحت ڈاکٹر سکندر میندھرو، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری سہیل راجپوت، شہناز وزیر علی، سیکریٹری صحت ڈاکٹر فضل اللہ پیچوہو، سیکریٹری پاپولیشن لئیق احمد و دیگر حکام نے شرکت کی۔ اس موقع پر وزیراعلیٰ سندھ کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ اس وقت پی پی ایچ آئی صوبے کے مختلف اضلاع میں 150 بی ایچ یوز کو پلس کا درجہ دے کر 24 گھنٹہ چلانے کی خدمات انجام دے رہی ہے جس میں بنیادی صحت کے علاوہ ٹیکہ جاتی، نیوٹریشن پروگرام ودیگر میں بھی پیشہ ورانہ ذمہ داریاں ادا کررہی ہے جبکہ اس کی رسائی سندھ کے دور دراز علاقوں تک ہے اور 383 صحت کی بنیادی سہولیات سولرائزکی گئی ہیں۔ پی پی ایچ آئی سندھ حکومت کی شراکتداری سے 170 ایمبولینس دے رہی ہے۔

Open chat