Saturday, January 23, 2021
"]
- Advertisment -

مقبول ترین

گمنام شہری (حفیظ خٹک)

پاکستان کو قیام سے اب تلک ختم کرنے کی پے درپے کاوشیں کی گئیں اور یہ کاوشیں تاحال بھی جاری ہیں ۔ ایک ملک...

سیوریج لائنوں میں بوریاں پھنسانے والی مافیا پھر سرگرم

سرجانی ٹائون میں سیوریج لائنوں میں بوریاں پھنسانے والی مافیا ایک بار پھر سرگرم، واٹر بورڈ کے ترجمان کے مطابق سرجانی ٹائون میں سیوریج...

پہلا ٹیسٹ میچ، شہریوں کےلئے ٹریفک پلان مرتب

ٹریفک پولیس نے پاکستان اور جنوبی افریقہ کے مابین 26  جنوری سے شروع ہونے والے پہلے کرکٹ ٹیسٹ میچ کے دوران سڑکوں کی بندش...

سوئی سدرن گیس کمپنی نے بھی یوٹرن لے لیا

یوٹرن حکومت میں ادارے بھی یوٹرن لینے گے، جمعہ کی رات ساڑھے سات بجے سوئی سدرن گیس کمپنی نے ہفتے کی صبح 8 بجے...

وزیر اعظم اور کے الیکٹرک (محمد سمیع)

k electricسب سے پہلے تو عزت مآب وزیر اعظم محترم خاقان عباسی صاحب کو مبارک ہو کہ ان کے اعلان کے مطابق ملک بھر میں لوڈ شیڈنگ ختم کردی گئی ہے۔ البتہ انہوں نے جو یہ فرمایا ہے کہ جن علاقوں میں بجلی چوری ہوتی ہے وہاں دن میں چار گھنٹے لوڈشیڈنگ ہوگی، اس حوالے سے چند گزارشات پیش خدمت ہیں ۔ گر قبول افتد زہے عز و شرف
پاکستان ایک اسلامی جمہوری ریاست ہے جہاں قرارداد مقاصد کے مطابق حاکم اعلی اللہ تعالیٰ جل شانہ¾ ہیں اور ارکان اسمبلی اللہ کے نائب کی حیثیت سے اس کے احکامات کے جاری کرنے کے پابندہیں۔ اللہ تعالیٰ نے قرآن پاک کی سورہ ق میں یہ فرمایا ہے کہ میں اپنے بندوں کے حق میں ظالم نہیں ہوں۔ لیکن انتہائی افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ بحیثیت وزیر اعظم پاکستان جو کہ ملک کے چیف ایگزیکیوٹیو ہیں اللہ کی غلط نمائندگی کے مرتکب ہورہے ہیں۔بجلی کی چوری پکڑ نا اور چوروں کو قانون کی گرفت میں لانا حکومت کی ذمہ داری ہے ۔حیرت ہے کہ اس ذمہ داری کی ادائیگی کی بجائے حکومت چند افراد کے جرم کے نتیجے میں علاقے کے صارفین پر ان کے علاقے میں لوڈ شیڈنگ کرکے ظلم کی مرتکب ہورہی ہے۔ وزیر اعظم کو غور کرنا چاہئے کہ بحیثیت چیف ایگزیکیوٹیو اللہ کی غلط نمائندگی کے بارے میںآخرت میں اللہ تعالیٰ کوکیا جواب دیں گے۔ راقم اس حدیث کی طرف وزیر اعظم کی توجہ دلانا چاہتا ہے جس میں قیامت کے دن اللہ تعالیٰ ظالم کے ظلم کے بارے میںان کی فریاد پر مظلوم کے کھاتے میں ظالموں کی نیکیاںڈال دے گا اور اگرپھر بھی مظلوم کی مکمل داد رسی نہ ہوسکے گی تو ان کے گناہوں کو ظالم کے کھاتے میں ڈال دیا جائے گا۔(مفہوم حدیث) ۔ الحمد للہ ہمارے وزیر اعظم کے چہرے پر سنت کی بہار ہے اور توقع ہے کہ وہ اس حدیث سے اچھی طرح واقف ہوں گے۔ خدانخواستہ یہ معاملہ قیامت کے دن صرف وزیر اعظم کے ساتھ پیش نہیںآئے گا بلکہ وزیر پانی وبجلی سمیت ان کے محکمے کا سارا اسٹاف بھی اللہ تعالیٰ کی گرفت میں آئے گا۔ لہٰذا وزیر اعظم سے التماس ہے آخرت میں جواب دہی سے بچنے کے لئے اس ظالمانہ قانون کو ختم فرمائیں۔
دوسری بات یہ ہے کہ دنیا اخبار کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے اس اعلان کے بعد کہ ملک بھر میں لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ کردیا گیا ہے اور جن علاقوں میں بجلی چوری ہورہی ہے وہاں بھی دورانیے میں کمی کرکے زیادہ سے زیادہ چار گھنٹے لوڈ شیڈ نگ کا اطلاق ہوگا، کے الیکٹرک کے ترجمان کا کہنا ہے کہ کراچی میں پہلے ہی صد فیصد صنعتی ایریا اور 61فیصد رہائشی علاقے لوڈ شیڈنگ سے مستثنیٰ ہوچکے ہیں ،اس لئے کسی نئی پالیسی کا کے الیکٹرک کا اطلاق نہیں ہوسکتا۔کے الیکٹرک پر کچھ حلقوں کا یہ الزام ہے کہ یہ ریاست کے اندر ریاست کا کردار ادا کررہی ہے ، اب تو وفاقی حکومت کے حکم کی صریح خلاف ورزی کرکے اپنے اوپر کے الیکٹرک اس الزام کو درست ثابت کررہی ہے۔ پاکستان میں اس وقت کراچی جو ملک کا سب سے بڑا شہر ہے، مظلوم ترین شہر بناہوا ہے ۔کیا اس کے شہریوں پر مزید ظلم کا بار ڈالا جائے گا؟چونکہ یہ محکمہ براہ راست وفاقی حکومت کے تحت آتا ہے لہٰذا وزیر اعظم کا یہ فرض ہے کہ وہ حکومتی فیصلے کو بالفعل کے الیکٹرک پر نافذکرنے کا حکم فرمائیں۔
اللہ تعالیٰ ہم سب کے دلوں میں اپنے حضور جواب دہی کا خوف پیدا فرمائے تاکہ ہم اس کے عذاب کی گرفت میں آنے سے بچ سکیں۔آمین یا رب العالمین

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Open chat