Thursday, October 22, 2020
Home کالم /فیچر بچوں کو عملی تحریکMotivation) کیسے دی جائے؟ (زاہد عمران)

بچوں کو عملی تحریکMotivation) کیسے دی جائے؟ (زاہد عمران)

1بچوں کو مستقل عمل کی تحریک دینے کے لیے درج ذیل اُمور کا سمجھنا اور عمل کرنا انتہائی نا گزیر ہے۔
٭بچوں کو یقین کی قوت دینا کہ وہ رب العزت کی عظیم مخلوق ہیں، اللہ تعالیٰ نے انہیں بے شمار نعمتیں اور صلاحیتیں دی ہیں، وہ ہر کام کر سکتے ہیں جو ماضی میں کسی نے کیا ہو یا نہ کیا ہو۔ اللہ تعالیٰ نے جو توانائیاں ان کے اندر و دیعت کر دی ہیں، یقین کی قوت کے بغیر اُن توانائیوں کو عمل میں ہر گز نہیں لایا جا سکتا۔ یقین ایسا ہتھیار ہے جو ناممکن کو ممکن اور مشکل کو آسان بناتا ہے، یقین اور تحریک میں براہِ راست تعلق ہے، بچوں میں یقین کی قوت جتنی زیادہ ہو گی وہ اتنے ہی زیادہ متحرک ہوں گے۔
٭جن بچوں کو مقاصد کا علم ہوتا ہے کہ وہ تعلیم کیوں حاصل کر رہے ہیں، وہ داخلی طور پر زیادہ متحرک رہتے ہیں۔ والدین اور اساتذہ مسلسل مقاصد پر بات کر کے بچوں سے اہداف کا تعین کروا کر اُن کو مستقل طور پر متحرک کر سکتے ہیں۔ بچوں کو یہ سمجھانا بھی انتہائی ضروری ہے کہ خواہش اور اہداف میں بہت فاصلہ ہوتا ہے، لہٰذا اہداف حاصل کرنے کے لیے محنت، نظم و ضبط اور وقت کا بہتر استعمال انتہائی ضروری عوامل ہیں۔ بچوں کی اس بات پر ذہن سازی کی جائے کہ محنت کا کوئی متبادل نہیں۔ کچھ حاصل کرنے کے لیے کچھ کھونا پڑتا ہے مگر جب محنت کا خوشگوار نتیجہ سامنے آتا ہے تو کسی بھی چیز کے کھونے کا احساس باقی نہیں رہتا۔ ایتھلٹکس 15 سیکنڈز کی دوڑ کے لیے 15 سال محنت کرتے ہیں۔
٭مقاصد کے حصول کی جدو جہد میں مسلسل متحرک رکھنے کے لیے بچوں کو کوئی بہت بڑی وجہ دی جانی چاہیے اس ضمن میں درج ذیل
2
وجوہات قابل قدر ہو سکتی ہیں:
•اللہ تعالیٰ کو راضی کرنا۔
•اُمت مسلمہ کا عظیم اور کار آمد فرد بننا۔
•والدین کے لیے سرمایہ افتخار بننا۔
•کوئی ایسا کام کرنا جو کبھی کسی نے نہ کیا ہو۔
•دشمنوں کے مقابلے اور سازشوں کے توڑ کے لیے اپنے آپ کو تیار کرنا۔
•اسلام کے نام پر لیے گئے ملک کے کسی اہم شعبہ میں اہم خدمات سر انجام دینے کے لیے خود کو قابل بنانا۔
•ایسا کردار ادا کرنا کہ لوگوں کا مدتوں فیض حاصل کرتے رہنا۔ جس کے ثمر سے لوگ مدتوں فیض حاصل کرتے رہیں۔
•کسی ایسے ادارے کی داغ بیل ڈالنے کے لیے خود کو قابل بنانا جس کا پھل ہمیشہ کے لیے صدقہ جاریہ بنتا رہے۔
•عام لوگوں سے خاص لوگوں میں شمار ہونا وغیرہ۔
٭بچوں کو کامیابی سے روشناس کروائیں تاکہ درج ذیل “تعلم کے انجن” کے مطابق بچے متحرک ہو کر کامیابیوں پر کامیابیاں حاصل کر سکیں۔
تعلم کا انجن:عمل، کامیابی، حوصلہ افزائی، خود پر یقین میں اضافہ، عمل کی تحریک میں اضافہ، کامیابی سے روشناس کروانے کے لیے بچوں سے نسبتاً کم وقت میں مکمل ہونے والے آسان کام کروائے جا سکتے ہیں، بچوں کی ناکامی پر بھی حوصلہ افزائی والا رویہ اختیار کیا جا سکتا ہے، بچوں کی ناکامی کی وجوہات پر گہری نظر رکھ کر اُن کے تدارک کے لیے حکمتِ عملی وضع کی جا سکتی ہے۔ اگر بچوں کو کامیابی کا احساس نہیں دلایا جاتا تو تعلم کا انجن منزل کی طرف نہیں بلکہ اُلٹا سفر کرتا ہے جیسے:
تعلم کا انجن:عمل، ناکامی، تنقید، خود پر یقین ختم، عمل کی تحریک ختم، ناکامی۔
٭بچوں میں اعلیٰ عزت نفس کو پروان چڑھانے سے اُن میں عمل کی تحریک میں اضافہ ہوتا ہے۔ عزت نفس کا مطلب ہے کہ آپ اپنے آپ کی کتنی حقیقی عزت کرتے ہیں، آپ تبھی اپنے آپ کی حقیقی عزت کریں گے جب آپ اپنے آپ کو لائق، دیانتدار اور عظیم خالق کا بندہ سمجھیں گے۔ ہمارے بارے میں ہماری اپنی سوچ، ہمارے عزم، یقین، احساس، عمل اور کارکردگی وغیرہ کو متاثر کرتی ہے۔ اعلیٰ عزتِ نفس عظیم کام کرواتی ہے اور عظیم کام عزتِ نفس کو اعلیٰ کرتے ہیں۔ اسی طرح بے عزت کرنا، ناکامی میں مبتلا کرنے والے الفاظ کہنا، شکست کا احساس دلانا اور سزا دینا وغیرہ بچوں کی عزتِ نفس کو پست کر دیتے ہیں، بچوں کی تعلیم میں سب سے بڑی رکاوٹ بچوں کی کند ذہنی یا سستی نہیں بلکہ پست عزت نفس ہے۔ اس تناظر میں والدین اور اساتذہ کرام کی بہت بھاری ذمہ داری بنتی ہے کہ اُن تمام باتوں پر عمل کریں جس سے بچوں کی عزت نفس، اعلیٰ عزت نفس بنتی ہو۔
3
٭ماسلو کی ضروریات کی ترتیب کے مطابق کسی بھی شخص کی درج ذیل ضروریات ہوتی ہیں: جسمانی ضروریات، تحفظ کی ضروریات، محبت اور تعلق کی ضروریات، عزت نفس کی ضروریات اور تسلیم ذات کی ضروریات۔ ان ضروریات کی تکمیل سے بچوں کو عمل کے لیے متحرک کیا جا سکتا ہے۔ ضروریات کی تکمیل شخصیت سازی کے لیے بنیادی حیثیت رکھتی ہے ۔بچوں کو حرکت کرنے، کھیلنے، بولنے، صلاحیتوں کا اظہار کرنے، دوست بنانے اور عزت و احترام پر مبنی فضا قائم کرنے کے مواقع دینے سے ضروریات کی تکمیل ممکن بنائی جا سکتی ہے۔ بچوں کی ضروریات کی تکمیل کیے بغیر اُن کو متحرک کرنا خام خیالی تو ہو سکتی ہے مگر حقیقت نہیں۔
٭بچوں کو اُن کامیاب لوگوں کی کہانیاں اور واقعات سُنا کر بھی متحرک کیا جا سکتا ہے جن کے مسائل اُن کے وسائل سے بہت زیادہ تھے، اس سلسلہ میں سرِ فہرست قرآن مجید میں مذکور واقعات اور سب سے اعلیٰ انسان نبی کریمﷺ کی سیرت ہے، اُس کے بعد صحابہ کرام اور سلف صالحین کی سیرت سے آمادہ کرنے والی کہانیاں سنائی جا سکتی ہیں۔ آخر میں ماضی یا حال میں جن بھی افراد نے پریشانیوں اور ناکامیوں کے باوجود کامیابیاں حاصل کی ہیں اُن کا ذکر کیا جا سکتا ہے۔ بچے کہانیوں کو بہت پسند کرتے ہیں اور غیر شعوری طور پر کہانیوں کا اثر قبول کرتے ہیں۔
4
٭بچوں کو تحریک دینے کے لیے سب سے اہم بات والدین اور اساتذہ کرام کا مخلص ہو کر بھر پور جذبہ کے ساتھ بچوں کو وقت دینا ہے۔ “معلم انسانیت” محمد کریمﷺ نے جب اپنے صحابہ سے پوچھا کہ کیا میں نے خیر اور شر کے تمام اُمور آپ تک پہنچا دیے ہیں تو تمام صحابہ نے یک زبان ہو کر تائید کی کہ آپ نے حق ادا کر دیا ہے، یہ سب کیوں کر ممکن ہوا؟ اس لیے کہ محمد کریمﷺ اپنی ذمہ داری کے لیے بہت زیادہ مخلص اور متحرک تھے، اللہ تعالیٰ نے محمد کریمﷺ کو فرمایا کہ کیا جو راہِ راست پر نہیں آتے اُن کے لیے فکر اور پریشانی میں مبتلا ہو کر اپنے آپ کو ہلاک کر لیں گے؟ ایسی تڑپ، ایسا جذبہ؟ ہم قطعاً اپنے پیارے نبیﷺ سے جذبہ اور ایثار میں مقابلہ نہیں کر سکتے مگر اُن کی سیرت پر عمل کرنے کی مکمل کوشش کرتے ہوئے مخلص ہو کر اور اپنے آپ کو متحرک کر کے، بچوں کی زندگیوں میں اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے تحرک، جذبوں، اور علم کا نور پھیلا سکتے ہیں۔
٭بہت قومی اُمید کی جاتی ہے کہ مذکورہ طریقوں پر عمل کر کے والدین اور اساتذہ کرام اپنے بچوں میں عمل کرنے کا شعلہ بھڑکا کر ان کو دیرپا تحریک دینے کی کوشش کریں گے۔
a.zahid25@yahoo.com

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

کیپٹن صفدر کا معاملہ، وزیراعظم کو بریف کرنے گورنر سندھ اسلام آباد پہنچ گئے

گورنر سندھ عمران اسماعیل بڑے مشن پر اسلام آباد پہنچ گئے،گورنر سندھ وزیراعظم عمران خان سے اسلام آباد میں ون آن ون...

کیپٹن صفدرکی گرفتاری تحقیقات کیلئے کمیٹی قائم

سندھ حکومت نے کیپٹن صفدرکی گرفتاری اور پولیس افسران کی چھٹیوں کی درخواست پرتحقیقاتی کمیٹی قائم کردی ، کمیٹی تحقیقات مکمل کرکے...

مسکن چورنگی ھماکہ،مقدمہ گلشن اقبال تھانے میں درج

مسکن چورنگی کے قریب دھماکے سے عمارت کے تباہ ہونے کی ایف آئی آرگلشن اقبال تھانے میں درج کرلی گئی ہے، پولیس...

سندھ حکومت اور پولیس ڈرامہ کررہی ہے، شبلی فراز

کراچی، وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات شبلی فراز نے ایک بار پھر سندھ پولیس کی چھٹیوں کی درخواست کو ڈارمہ قرار دے...