Saturday, November 28, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

خاقان مرتضیٰ ڈی جی سول ایوی ایشن تعینات

سول ایوی ایشن کا ڈی جی تعینات، ذرائع سی اے اے کے مطابق فلائٹ لیفٹیننٹ ریٹائرڈ خاقان...

ملازمت سے برطرفی، اسٹیل مل کے ملازم کو دل کا دورہ

ملازمت سے برطرفی کا سن کر اسٹیل مل کے ملازم کو دل کا دورپڑگیا، حبیب الرحمن کو اس...

سندھ بار کونسل انتخابات، وکلا کا احتجاج رنگ لے آیا

وکلا کا احتجاج رنگ لے آیا، سندھ بارکونسل کےانتخابات ملتوی کرنے کا نوٹی فکیشن واپس. ایڈووکیٹ جنرل...

لاک ڈاؤن ، سندھ حکومت کا نیا نوٹیفکیشن جاری

کورونا لاک ڈاؤن کے حوالے سے سندھ حکومت نے نیا نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے. نوٹیفکیشن میں کاروباری...

مواچھ گوٹھ ، سرکاری اسپتال بند، میٹرنٹی ہوم نے کھنڈر کی شکل اختیار کرلی

maternity home1کراچی: مواچھ گوٹھ میں کروڑوں روپے کی لاگت سے بننے والا شہید محترمہ بے نظیر بھٹو میٹرینٹی ہو م اور اسپتال کھنڈر میں تبدیل ہوگیا ہے علاقہ مکین سرکار کی نظر کرم کے باوجود سہولیات سے محروم ہیں ۔مواچھ گوٹھ کی ڈیڑھ لاکھ کی آبادی اور ایک سرکاری اسپتا ل صرف ایک اور وہ بھی بند۔8 کڑور روپے کی لاگت کا یہ ہے بے نظیر شہید میٹرینٹی ہوم جسے پیپلز پارٹی کی رہنما شیری رحمان نے 2009 میں تعمیر کروایا تھا ۔50 بستروں پر مشتمل اس اسپتال کو بنانے کے بعد عوام کو امیدیں دلائی گئیں مگر حاصل کچھ نہیں ،مریض اب بھی لمبا سفر طے کر کے دیگر سرکاری اسپتالوں کا رخ کرتے ہیں ۔بڑے رقبے پر قائم اس اسپتال کے دروازے اور کھڑکیاں غائب ہیں اور ہیرونچیوں نے اسے اپنا مسکن بنالیا ہے۔ اسپتال میں عملہ ہے اور نہ ہی کوئی نگرانی کرنے والا جو مشینری اور الیکڑک کا سامان موجود تھا وہ بھی کب کا غائب ہوچکا ۔محکمہ صحت اور حکومت سندھ بھی اس تمام معاملے سے بے خبر ہیں۔ انتہا یہ ہے کہ 2009 کے بعد سے کسی متعلقہ حکام نے یہاں کا دورہ بھی نہیں کیا۔

Open chat