Wednesday, November 25, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

عذرا پیچوہونے مساجد بند کرنے کی تجویز دیدی

وزیر صحت سندھ عذرا پیچوہو نے مساجد بند کرنے کی تجویز دے دی،سندھ بھر میں کورونا کے بڑھتے...

طارق روڈپر شاپنگ مال،لیاقت آباد انڈرگرائونڈ مارکیٹ سیل

6 بجے کاروبار بند نہ کرنے پر انتظامیہ حرکت میں آگئی، طارق روڈ پر واقع شاپنگ مال اور...

ناردرن بائی پاس کے اطراف باڑ لگانے کی تجویز

اینٹی وہیکل لفٹنگ سیل نے ناردرن بائی پاس کے دونوں اطراف باڑ لگانے کےلئے نیشنل ہائی وے اتھارٹی...

راﺅانوار کی پریس کانفرنس، متحدہ کا قانونی کارروائی کا اعلان

Haiderabbaspressexpress-1411140570-318-640x480کراچی، متحدہ قومی موومنٹ نے ایس ایس پی راﺅ انوار کی پریس کانفرنس کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا اعلان کرتے ہوئے کہاہے کہ ہر بار تردید کافی نہیں، اب سوچنے کا وقت آ گیا ہے۔ آج پھر نوے کی دہائی یاد آگئی، پرانے الزامات گھما پھرا کر لگائے جارہے ہیں،پولیس افسر کی پریس کانفرنس سیاسی ڈرامہ ہے،یہ پرانے الزامات ہیں،ہم سمجھ رہے تھے کہ نیا ڈرامہ آئے گا۔ ایم کیوایم کے مرکز90پر ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب میں ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی ممبرحیدر عباس رضوی نے کہا کہ ایم کیو ایم کے خلاف کب تک تہلکہ خیز الزامات کا سلسلہ جاری رہے گا؟۔ ملک کی تیسری بڑی سیاسی جماعت پر کب تک الزامات کی بوچھاڑ ہوتی رہے گی؟۔ انہوں نے کہاکہ ایم کیو ایم پر بار بار ملک دشمنی کا الزام لگایا گیا جو انتہائی گھناﺅنا اور تکلیف دہ ہے۔ ہر بار تردید کافی نہیں، اب سوچنے کا وقت آ گیا ہے کیونکہ ایک مرتبہ پھر ہمارے زخموں کو کریدا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایم کیوایم کا بدترین میڈیا ٹرائل کیا گیا، این اے 246کے عوام نے ایم کیوایم کو بھاری مینڈیٹ دیا، اب ایک کرپٹ افسر متحدہ کو پاکستان سے وفاداری کا سرٹیفیکٹ جاری کرے گا؟۔ حیدر عباس رضوی نے کہا کہ ”ایس ایس پی ملیر راﺅ انوار کی پریس کانفرنس کسی سیاسی شکاری کے ترکش کا تیر اور ڈرامہ دکھائی دیتی ہے”۔ یہ سب کچھ خواجہ اظہار الحسن کے سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف بننے اور پانی کا مسئلہ اجاگر کرنے کے بعد سے شروع ہوا۔ انہوں نے کہا کہ یہ پریس کانفرنس کیسے ہوئی، آئین کی دھجیاں کیسے اڑائی گئیں؟۔ وضاحت ضروری ہے کہ کس کے کہنے پر پریس کانفرنس کی گئی کیونکہ ایسی پریس کانفرنس کی پولیس رولز میں اجازت نہیں ہے۔ سوچنا ہوگا کہ پریس کانفرنس کے پیچھے کیا مقاصد ہیں۔ ایسے شخص کے ذریعے الزام لگایا گیا جس کا ماضی سب جانتے ہیں۔ ایم کیو ایم کے کارکنوں کے ماورائے عدالت قتل کا ذمہ دار یہی ایس ایس پی راﺅ انوار ہے۔ آج ہم پرملک دشمنی کا الزام عائد کیا گیا، حکیم سعید کیس کے حوالے سے ہمارے کئی کارکن ماورائے عدالت مارے گئے،ایس پی نے ایم کیوایم پرمن گھڑے الزامات عائد کیے،ایس ایس پی نے ایم کیو ایم کے کارکنوں کا ماورائے عدالت قتل کیا،ہمارے کارکنوں کو سرکاری عقوبت خانوں میں قتل کیا گیا۔حیدر عباس رضوی نے کہا کہ ایم کیوایم رابطہ کمیٹی نے ایس ایس پی ملیرکے الزامات کو مسترد کردیا،یہ تہلکہ خیزانکشافات کا کھیل کب تک چلتا رہے گا؟کس کی ایما پریہ جھوٹی پریس کانفرنس کی گئی؟پرانی کہانی اورپرانا کردار ہے،پولیس افسرکی پریس کانفرنس سیاسی ڈراما لگ رہا ہے،ایک ایس پی نے قانون کو بالائے طاق رکھتے ہوئے پریس کانفرنس کی،پولیس افسرکے جھوٹے الزامات پر اس کے خلاف قانونی چارہ جوئی ضرور کریں گے،سب کچھ سیاسی ڈرامے کا سین لگ رہا ہے، کس کی ایما پر یہ گھناونی پریس کانفرنس کی گئی؟ انہوں نے کہا کہ طاہرریحان کو 26 فروری 2015 کو گرفتار کیا گیا، جنید کو 24 مارچ 2015 کو گرفتار کیا گیا، جنید کے اہل خانہ نے 28مارچ کو ہائیکورٹ میں پٹیشن داخل کی، ایس پی راو انوار نے دعوی کیا کہ طاہر ریحان کو کل رات گرفتار کیا گیا، راو انوار کے مطابق جنید کو گزشتہ رات گرفتار کیا گیا، ملک کی تیسری بڑی جماعت پر الزامات لگائے جا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہمارا اپوزیشن بنچوں پربیٹھنا کس کو برا لگ رہا ہے؟ اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے ایم کیو ایم رہنما ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ گزشتہ روز سابق صدر آصف علی زرداری اور وزیراعلی سندھ سید قائم علی شاہ کے درمیان ایک اہم ملاقات ہوئی جس میں ایک تیسری شخصیت بھی موجود تھی۔ اگر صحافی حضرات انوسٹی گیشن کریں تو اس شخصیت کا نام سامنے آ جائے گا اور ان الزامات کی حقیقت بھی سامنے آ جائے گی۔انہوں نے کہاکہ ایم کیو ایم پر پہلے بھی الزامات لگتے رہے ہیں،جناح پور بنانے کا الزام کسی طاہر لمبا اور جنید نے نہیں بلکہ اسوقت کے کورکمانڈر نے الزام لگایا،لیکن وہ جھوٹا ثابت ہوا،ایس ایس پی راﺅ انوار کی تو اپنی کریڈیبیلیٹی مشکوک ہے،۔فاروق ستار نے کہا کہ طاہر لمبا کو ستائیس فروری کو گرفتار کیا گیا،فاروق ستار نے کہا کہ طاہرلمبا اور جنید نے آزاد حیثیت میں نہیں بلکہ سرکاری تحویل میں بیان دیا،راﺅ انوار نے ایم کیو ایم کو کالعدم کرنے کی سفارش کی،انکی تو اپنی کریڈیبلٹی مشکوک ہے۔فاروق ستار نے وزیراعظم اور راحیل شریف سے مطالبہ کیا کہ وہ ایم کیوایم کیخلاف میڈیا ٹرائل بند کرائیں۔

Open chat