Saturday, October 31, 2020
Home Trending کشمیر شہ رگ اور جوناگڑھ پاکستان کی دھڑکن ہے، اقبال ساندھ

کشمیر شہ رگ اور جوناگڑھ پاکستان کی دھڑکن ہے، اقبال ساندھ

nawab juna garhریاست جونا گڑھ پاکستان کا حصہ تھی ، ہے اور رہے گی۔ حکومت پاکستان بھارت کے قبضہ کو ختم کروانے کے لیے اقوام متحدہ میں بھرپورآواز اٹھائے۔ پاکستان میں مقیم لاکھوں جونا گڑھی 9نومبر کو ’یوم سقوط جونا گڑھ“ منائیںگے۔ کراچی میں اس دن کی مناسبت سے سےمینار، مذاکرے اوراحتجاجی ریلی سمیت دیگر پروگرامات منعقد ہوں گے۔ 9 نومبر کو سب سے بڑی ریلی جوناگڑھ لان نیشنل اسٹیڈیم سے کراچی پریس کلب تک نکالی جائے گی۔ یوم سقوط جونا گڑھ منانے کا مقصد ریاست جونا گڑھ کی آزادی کے لیے عالمی سطح پر آواز بلند کرنا ہے۔ ان خیالات کا اظہار نواب آف جوناگڑھ جہانگیر خانجی، جونا گڑھ اسٹیٹ مسلم فیڈریشن کے صدر اقبال ساندھ اور جنرل سیکرٹری عبدالعزیز عرب نے جوناگڑھ ہاﺅس میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر فیڈریشن کے جوائنٹ سیکریٹری قاضی مصطفی، خازن فاروق شیخ اور جوناگڑھ فیڈریشن کے دیگر عہدیداران رفیق زہری، عبدالستار ترک، بشیر قریشی، یوسف شیخ، سید سجاد علی، ناصر جمال، علی محمد پنجہ، امان اللہ ملک، محمد یوسف اورنگ آباد، عبدالرزاق و دیگر بھی موجود تھے۔

نواب جہانگیر خانجی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قائد اعظم محمد علی جناح نے جونا گڑھ کوپاکستان کا حصہ بنایا تھا۔ مگرافسوس آج نئی نسل پاکستان میں شامل اس ریاست سے لاعلم ہے، جس پر بھارت نے 9نومبر 1947ءکواپنی فوجیں اتار کر قبضہ کر لیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان کشمیر کی طرح اس مسئلہ کی جانب بھی اقوام متحدہ کی توجہ مبذول کروائے۔ پاکستان کی دینی و سیاسی جماعتوں کے قائدین بھی جونا گڑھ کے مسئلہ کو عالمی سطح پر اجاگر کریں تاکہ ریاست جونا گڑھ کو بھارتی قبضہ سے چھڑا کر پاکستان کا حصہ بنایا جا سکے۔

اقبال ساندھ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ اور جوناگڑھ پاکستان کی دھڑکن ہے۔ 9 نومبر وہ دن ہے جس دن ریاست جوناگڑھ پر بھارت نے ناجائز قبضہ کر لیا تھا، جس کو 67 سال گزر چکے ہیں۔ جونا گڑھ کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے اس کا کیس اقوام متحدہ میںبھی پیش کیا گیا ہے لیکن حکومتی سردمہری کی وجہ سے آج تک اس حوالے سے کوئی خاص پیش رفت نہیں ہوئی۔ پاکستان اقوام متحدہ میں جونا گڑھ کا مسئلہ اٹھا کر اسے بھارتی تسلط سے آزاد کروائے۔ اقبال ساندھ نے کہا کہ پاکستان میں 20 لاکھ سے زائد جونا گڑھی موجود ہیں۔ جو صنعت و تجارت سے منسلک ہیں اور پاکستان کی ترقی و خوشحالی کے لیے ہمیشہ اپنا کردار ادا کر تے ہیں۔ مگر افسوس اس بات کا ہے کہ حکومت پاکستان کے ساتھ ریاست جونا گڑھ نے جو معاہدہ کیا تھا اس کی پاسداری اور نکات پر عمل نہیں کیا جارہا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ جونا گڑھ کے نواب اور عوام کے حقوق بحال کیے جائیں۔ جونا گڑھ کی عوام کے بے شمار مسائل ہیں جن میں سرفہرست شہریت کا مسئلہ ہے۔ جونا گڑھ پاکستان کا حصہ تھا جس پر بھارت نے قبضہ کیا جبکہ وہاں کی عوام کے دل و روح آج بھی پاکستان کے ساتھ دھڑکتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ میڈیا بھی ریاست جونا گڑھ کے مسئلے کو اجاگر کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کرے۔ عبدالعزیز عرب نے کہا کہ ریاست جوناگڑھ پاکستان کا قانونی حصہ ہے اور اس کی آزادی کے لیے جدوجہد کرنا حکومت پاکستان کی ذمہ داری بنتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت کی جانب سے کوئی حوصلہ افزاءکوشش نہیں کی گئی تو کشمیری عوام کی طرز پر اپنی تحریک کو آگے بڑھائیں گے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

سندھ میں کورونا سے5 افراد جاں بحق، 237 متاثر

راچی: صوبہ سندھ میں عالمی وبا کورونا وائرس سے 5 افراد جاں بحق جب کہ مزید 237 افراد متاثر ہوئے ہیں۔وزیراعلیٰ سندھ...

ٹریفک پولیس اہلکاروں کو جان سے مارنے کی دھمکیاں موصول

کراچی: ٹریفک پولیس پر حملے کی دھمکیاں ملنے کے بعد تمام افسران و اہلکاروں کو بلٹ پروف جیکٹس پہننے کی ہدایات جاری...

گاڑیوں کی ٹکر سے نیوی افسر سمیت3 اہلکار جاں بحق،پولیس اہلکار زخمی

کراچی: گلشن اقبال ابوالحسن اصفہانی روڈ پر تیز رفتار گاڑی کی ٹکر سے ایک شخص جاں بحق ہوگیا، ریسکیو حکام کے مطابق...

کراچی سینٹرل جیل میں عید میلاد النبیﷺ کا بڑا پروگرام

عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وسلم کے موقع پر کراچی سینٹرل جیل میں عید میلاد النبی ﷺ کا بڑا پروگرام منعقد...