Tuesday, November 24, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

سندھ ہائی کورٹ نے عادل صدیقی کی عبوری ضمانت منظور کرلی

سندھ ہائی کورٹ نے نیب ریفرنس میں مفرور ایم کیو ایم کے عادل صدیقی کی عبوری ضمانت منظور...

محمد رضوان عرفان کی حکومتِ سندھ سے اپیل

کراچی الیکٹرونکس ڈیلرز ایسوسی ایشن کے صدر محمد رضوان عرفان کی حکومتِ سندھ سے اپیل، 6 بجے دکانیں...

اے این ایف کی کاروائی، منشیات فروش گرفتار

 اے این ایف نے مختلف کارروائیوں میں منشیات برآمد کر کے دو ملزمان کو گرفتار کر لیا،تفصیلات کے...

کراچی میں آج بونداباندی کا امکان

موسم کی صورتحال، کراچی میں آج بونداباندی کا امکان ہے۔ آج کم سے کم درجہ حرارت 16 ڈگری...

پاکستان اسلامی نظریاتی مملکت ہے، یہاں تشدد کی گنجائش نہیں، حافظ سعید

Hafiz Saeedکراچی، جماعة الدعوة کراچی کے تحت نظریہ پاکستان کارواں سے ٹیلیفونک خطاب کرتے ہوئے امیر جماعة الدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ پاکستان اسلامی نظریاتی ملک ہے، یہاں تشدد اور قتل و غارت کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ لا الہ الا اللہ والا پاکستان امریکا و بھارت کی راہ میں رکاوٹ ہے۔ مذہبی و سیاسی جماعتیں ایک صفحے پر جمع ہوکر نظریہ پاکستان کی تجدید کا عہد کریں۔ پاکستان کو اس کے اساسی بنیاد پر استوار کرنا حکمرانوں کی اولین ترجیح ہونی چاہیے۔ مسلح افواج کی پریڈ سے قوم کو حوصلہ ملاہے۔ نظریہ پاکستان کے پرچار سے دشمنوں کی سازشیں ناکام ہوں گی۔ کراچی پریس کلب کے باہر جلسہ عام سے جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر اسداللہ بھٹو، جماعة الدعوة پاکستان کے مرکزی رہنما حافظ طلحہ سعید، جماعة الدعوة کراچی کے امیر ڈاکٹر مزمل اقبال ہاشمی، جمعیت علمائے پاکستان کے قاضی احمد نورانی، جمعیت علمائے اسلام (ف) کے اسلم غوری، جمعیت علمائے اسلام (س) کے رہنما حافظ احمد علی، عوامی مسلم لیگ کے رہنما محفوظ یار خان، عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے رہنما حافظ عبدالرﺅف، جماعة الدعوة کے رہنما حافظ محمد امجد و دیگر نے بھی خطاب کیا۔ کارواںکا آغاز جماعة الدعوة کے مرکزی رہنما حافظ طلحہ سعید اور امیر کراچی ڈاکٹر مزمل اقبال ہاشمی کی قیادت میں سفاری پارک سے کیا گیا۔ سیکڑوں گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں پر مشتمل قافلے کی صورت میں کارواں کے شرکاءسفاری پارک سے کراچی پریس کلب پہنچے، جہاں کارواں جلسہ عام کی صورت اختیار کرگیا۔ کارواں کے ہزاروں شرکاءنے تحفظ نظریہ پاکستان کے لیے بلا دریغ ہر قسم کی قربانی دینے کا عزم کیا۔ کارواں کے آغاز سے ہی کراچی کی شاہراہیں پاکستان کا مطلب کیا؟ لاالہ الااللہ، جیوے جیوے پاکستان اور کشمیر بنے گا پاکستان کے فلک شگاف نعروں سے گونجتی رہیں۔ اس موقع پر کارواں کو دیکھنے کےلئے شاہراہوں کے اطراف لوگوں کا ہجوم موجود رہا۔ پریس کلب کے باہر جلسہ عام سے ٹیلیفونک خطاب کرتے ہوئے امیر جماعة الدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا کہ پاکستان کلمہ طیبہ کی بنیاد پر بننے والا ملک ہے، دشمن قوتیں اس کا کچھ نہیں بگاڑ سکتی۔ جماعة الدعوة پورے ملک میں پروگرامات کے ذریعے نظریہ پاکستان کے حوالے سے عمومی شعور کو بیدار کرنا چاہتی ہے۔ اگر نظریہ پاکستان پر عمل درآمد کیا جائے تو ملک سے دہشت گردی اور انتشار کا خاتمہ کیا جاسکتا ہے۔ ہماری کوتاہیوں کی وجہ سے مشرقی پاکستان ہم سے علیحدہ ہوا۔ پاکستان مزید کوتاہیوں کا متحمل نہیں ہوسکتا۔ زخمی پاکستان کو اس کے نظریاتی اساس پر استوار کرنے سے ہی ملک میں خوشحالی آسکتی ہے۔ جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر اسداللہ بھٹو نے کہا کہ نظریہ پاکستان ایک مقصد اور فکر کا نام ہے۔ جس کے لیے ہندوستان کے مسلمانوں نے گراں قدر قربانیاں دیں۔ پاکستان کسی معاشی نظریے کے تحت نہیں بلکہ اسلام کے نام پر حاصل کیا گیا۔ پاکستان کے اسلامی ہونے میں غیر مسلموں کو بھی کوئی شک نہیں تھا۔ پاکستان کو امریکا و بھارت کی طفیلی ریاست بنانے کی تمام کوششیں ناکام بنائیں گے۔ اسلامی پاکستان ہی خوشحال پاکستان کی ضمانت ہے۔ جماعة الدعوة پاکستان کے مرکزی رہنما حافظ طلحہ سعید نے کہا کہ پاکستان کا قیام عظیم قربانیوں کے نتیجے میں عمل میں آیا۔ سازش کے تحت اس کی نظریاتی حیثیت کو مسخ کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔ پروپیگنڈہ کرنے والے تاریخی حقائق کو جھٹلا نہیں سکتے۔ پاکستان کو ایک بار پھر انہی جذبوں اور ولولوں کی ضروت ہے، جس کے تحت اسے قائم کیا گیا تھا۔ جماعة الدعوة کراچی کے امیر ڈاکٹر مزمل اقبال ہاشمی نے کہا کہ ہندوستان طویل عرصہ مسلمانوں کی جاگیر رہا، لیکن انگریزوں نے ہماری آزادی کو غلامی میں بدل ڈالا۔ تحریک پاکستان کے اکابرین نے نظریہ پاکستان عین تعلیمات نبوی کے مطابق مرتب کیا ہے۔ اسے سازش سمجھنے والے سخت گمراہی میں مبتلا ہے۔ جب تک ہندوستان کے مسلم مقبوضہ ریاستیں پاکستان کا حصہ نہ بن جائے پاکستان نامکمل رہے گا۔ پاکستان کے عوام اور حکمرانوں کو جرات اور دلیری کے ساتھ آگے بڑھنا ہوگا۔ جمعیت علمائے پاکستان کے قاضی احمد نورانی نے کہا کہ حکمران طبقہ ذاتی مفادات پر قومی مفاد کو مقدم رکھیں۔ ہماری بغاوتوں کی وجہ سے ہی ملک 1971ءمیں دو لخط ہوا۔ نظریہ پاکستان سے غداری کرنے والے ہمیشہ ذلیل و خوار رہیں گے۔ محمد علی جناح نے قرآن کو دستور اور قانون قرار دیا تھا، سازشی ٹولہ پہلے بھی ناکام رہا اب بھی ناکام رہے گا۔ جمعیت علمائے اسلام (ف) کے اسلم غوری نے کہا کہ جس مقصد کے تحت اس ملک کو قائم کیا گیا تھا، بدقسمتی سے اسے نظر انداز کیا جا رہا ہے۔ پاکستان کو سیکولر ریاست بنانے والے ناکام رہیں گے۔ جمعیت علمائے اسلام (س) کے رہنما حافظ احمد علی نے کہا کہ ہمارے اکابرین نے ہر جگہ پاکستان کا پرچم بلند کیے رکھا۔ پاکستان کی بد امنی کی واحد وجہ نظریہ پاکستان کو فراموش کرنا ہے۔ عوامی مسلم لیگ کے رہنما محفوظ یار خان نے کہا کہ نظریہ پاکستان کی بنیاد پر پاکستانی قوم ایک ہیں۔ ہمار اکھلا دشمن بھارت ہمیشہ پاکستان کے خلاف سازشوں میں مصروف رہتا ہے۔ تمام بڑی طاقتوں بھارت کی مکمل پشت پناہی کر رہی ہیں۔ ہمیں اتحاد کے ذریعے ان کی سازشوں کو ناکام بنانا ہوگا۔ عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے رہنما حافظ عبدالرﺅف نے کہا کہ ہمارے اکابرین نے پاکستان کے خلاف ماضی میں کی جانے والی ہر سازش کونام بنایا۔ اب ہمیں آگے بڑھ کر کردار ادا کرنا ہوگا۔

Open chat