Monday, November 30, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

کراچی کی چند خوبصورت مقامات کی ڈرون فوٹیج

کراچی پاکستان کا سب سے بڑا اور آباد شہر ہے۔ سابقہ دارالحکومت ہونے کی وجہ سے ، یہ ایک ممکنہ تجارتی...

جامعہ کراچی کی پوائنٹس سروس

وفاقی سطح پر قائم تعلیمی کمیٹی نے اعلان کیا ہے کہملک بھر کے تعلیمی ادارے 15 ستمبر...

پلاسٹک آلودگی ( کرن اسلم)

اگر آپ اپنے ارد گرد نظر دوڑائیں تو آپ کو کسی نہ کسی صورت میں پلاسٹک کی اشیا ضرور ملیں گی۔ مثال کے طور...

بہادرآباد، ڈکیتی کی بڑی واردات،شہری40 لاکھ روپے سے محروم

بہادرآباد میں ڈکیتی کی بڑی واردات، شہری 40 لاکھ روپے سے محروم، ذرائع کے مطابق بہادرآباد شاہ...

گورنمنٹ سیکٹرمیں ماہر انجینئرز کی کمی ہے،وزیراعلیٰ

cm in convocationکراچی جامعہ این ای ڈی کے تحت سالانہ جلسہ تقسیمِ اسناد2017-18کا انعقادہفتہ 6جنوری کو کیا گیاجس کی صدارت وزیرِ اعلی سندھ سید مرادعلی شاہ نے کی جب کہ سابق وفاقی وزیر اور سینٹر جاوید جبار، اعزازی مہمان تھے۔ ترجمان جامعہ کے مطابق ہفتے کو منعقدہ اس جلسہ تقسیم اسناد 2017-18 میں2طالب علموں ڈاکٹرثنا ارشد اورڈاکٹر مرزا محمد علی بیگ کوپی ایچ ڈی کی سند جب کہ24 طالبِ علموں کوگولڈ میڈلز سے نوازاگیا۔ جامعہ سے سال 2017-18 کے پاس آؤٹ گریجویٹ طالب علموں کی تعداد2024 جب کہ ماسٹرز کی تعداد 803 ہے جب کہ کانووکیشن میں 1812طالبِ علموں ڈگریوں سے نوازا گیا۔ کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر سروش حشمت لودھی کا کہنا تھاکہ پچھلی نو دہائیوں سے ہماری جامعہ انجینئرنگ ، آرکیٹکٹس ، پلینرزکمپیوٹر سائنٹس اور سائنس کے دیگر شعبہ جات کے ماہر فراہم کررہی ہے جو کہ ملک و قوم کی خدمت کا فریضہ انجام دے رہے ہیں ۔وائس چانسلر نے کیمپوٹیشنل فنانس ، انڈسٹریل کیمسٹری اور اپلائیڈ فزکس کے پہلے پا س آؤٹ بیج کو خصوصی مبارک باد پیش کی جب کہ والدین کی محنت وصول ہونے پر اُن کی کاوشوں کو سلام پیش کیا۔ مزید کہا کہ جامعہ کو 2021میں سو سال مکمل ہوجائیں گے تو صد سالہ جشن کی تیاری بھی کررہے ہیں۔اعزازی مہمان سابق وزیر اور سینیٹر جاوید جبار نے جامعہ کے کردارکو سراہتے ہوئے کہا کہ این ای ڈی یونی ورسٹی انجینئرنگ کا بہترین ادارہ ہے جو قوم کو اہل افراد فراہم کررہا ہے۔انہوں نے طالبِ علموں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وقت کا دُرست سیکھیں اور مطالعے کی عادت ڈالیں تو کامیابی آپ کے قدم چومے گی۔مہمانِ خصوصی وزیراعلی سندھ سیّد مراد علی شاہ نے کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے اپنے زمانہ طالبِ علمی کو یاد کیا ۔طالبِ علموں کو پیغام دیتے ہوئے تین نصیحتیں کیں کہ نوجوان اپنے والدین کو خود پر فخر کرنے کا موقع ضرور دیں، اپنے تعلیمی ادارے اور اساتذہ کا احترام کریں اور اپنے دوستوں سے رابطے ہموار رکھیں۔انہوں نے کہا کہ گریجویٹس زندگی کے نئے مرحلے میں داخل ہورہے ہیں تو یاد رکھیں کہ جو بھی کام کررہے ہیں اس سے محبت ضرور کریں تو کا میابی خود بخود حاصل ہوگی۔ نوجوانوں کی توجہ موجودہ صورتحال کی جانب مبذول کرواتے ہوئے اُن کا کہناتھاکہ گورنمنٹ سیکٹر میں ماہر انجینئرز کی کمی ہے جب کہ اقتصادی راہداری منصوبے کے حوالے سے کہا کہ انجینئرز کی ضرورت ہے تونوجوان بیرون ملک جانے کے بجائے اپنے ملک کے لیے خدمات فراہم کریں۔تھر پارکر کو ترقی کا زینہ قرار دیتے ہوئے انہوں نے زور دیا کہ صوبہ سند ھ کی ترقی آپ نوجوانوں کی مرہونِ منت ہے تو آپ نوجوانوں ہی کی بدولت ترقی کا خواب تکمیل کو پہنچے گا

Open chat