Saturday, October 24, 2020
Home کالم /فیچر امن امان کے قابل ستائش کام (مولانامحمدجہان یعقوب)

امن امان کے قابل ستائش کام (مولانامحمدجہان یعقوب)

122318235وطن عزیزپاکستان میں دہشت گردی اوردہشت گردوں کے خلاف فائنل رائونڈ کھیلاجارہاہے، یہ کام ہمارے جمہوری حکمران اپنی جمہوری مجبوریوں کی وجہ سے کبھی نہیں کرسکتے تھے، جوآج مسلح افواج کر یا کرارہی ہے۔ اس کے روح رواں چیف آف آرمی اسٹاف جنرل راحیل شریف ہیں، جن کی رگوں میں دوڑنے والاخون ملی ودینی غیرت کی وجہ سے جوش مار رہا ہے، میج رراجا عبدالعزیز بھٹی کے بھانجے اورمیجر شبیر شریف کے بھائی میں یہی اوصاف ہونے بھی چاہییں، جواللہ تعالیٰ کی عطا سے جنرل راحیل شریف میں موجود ہیں۔ جنرل صاحب یقیناََ ایک طویل عرصے سے دہشت گردی اوردہشت گردوں کے نیٹ ورک، پشت پناہوں، سپورٹرز او راسپانسرز کے حوالے سے ہوم ورک کیے بیٹھے تھے، جس کے لیے کسی مناسب وقت کے منتظرتھے، جو پشاور کے آرمی پبلک اسکول میں کھیلے جانے والے گھناونے کھیل کی صورت میں مل بھی گیا، اس سے نہ صرف آپریشن ضرب عضب کو مہمیز ملی، بلکہ اس کا دائرہ بھی شمال کے پہاڑوں کے مکینوں سے وسیع وعریض قلعوں، محلات اور بینک بیلنس والوں تک پھیل گیا۔ جنرل صاحب نے اپنی حکمت عملی اورحب الوطنی سے ایک طرف توبلوچستان کے عوام سے اپنائیت سے بات کی اور”میں تمھیں وہاں سے ہٹ کروں گاکہ تمھیں پتابھی نہیں چلے گا“ کی قبیل کے فوجی لہجے سے گھائل ان احساس محرومی کی چکی میں پستے عوام کی سماعتوں سے جب محبت سے بھرپور یہ لہجہ ٹکرایا کہ آپ کی محرومیوں کا ازالہ کیا جائے گا، آپ کے حقوق کا تحفظ کیا جائے گا، تو دل سے نکلی یہ بات ان کے دلوں کوبھی یوں ہی مسخر کرنے میں کامیاب ہوگئی، جس طرح اس سے قبل قبائل کے کئی ہتھیار بند کمانڈروں کو کرگئی تھی۔ شہر قائد کی حالت دودہائیوں سے دگرگوں تھی، یہاں بھی پورے ہوم ورک کے ساتھ عین فساد کے مراکز پر نشترکاری کی گئی، جوقابل اصلاح تھے، وہ رام ہوگئے اور جو ”بغل میں چھری منہ میں رام رام“ والے ہندو بنیے کے راتب پرپلتے تھے، ان کے کس بل بھی نکل گئے، اللہ کرے یہ ایکشن اپنے منطقی انجام کوپہنچے، جس کی قوی امید ہے، مگرقائم علی شاہ کی نوازعلی شاہ سے ملاقاتیں، یوسف رضا گیلانی کے وکٹری کے نشانات اوربڑے زورچھوٹے زرداری صاحبان کی انتقامی کارروائی والی باتیں اس حوالے سے تھوڑے شکوک ضرور پیدا کررہی ہیں۔ امید ہے میجر جنرل بلال اکبر اسی طرح جذبہ بلالی کے ساتھ سیف ہاوسز کا تعاقب جاری رکھیں گے اور ”غریبوں کی ماں کراچی“ کو دہشت کی آماج گاہ بنانے والوں کی تمام سازشیں اسی طرح ناکام ہوتی رہیں گی۔
55546d8c6a97fبیرونی راتب پر پلنے والوں کے بعض ایجنڈے ایک سے بھی ہوتے ہیں، ان میں دینی مدارس کی کردارکشی اورمدارس کودہشت گردی کے اڈے اوردہشت گردوں کی آماج گاہ کہنا بھی شامل ہے، بلکہ اس ”کارخیر“ میں تویہ سب ایک سے ایک بڑھ کرحصہ لیتے ہیں، کہ اس کے دام بہت اچھے ملتے ہیں۔ جنرل صاحب نے حکومت کو اندرونی خوف سے نکالتے ہوئے سوا سال قبل نیشنل ایکشن پلان اورتحفظ پاکستان آرڈیننس منظورکرایا، جس کی کارکردگی بلاشبہ تیز بلکہ تیزتررہی، جس کا ایک اندازہ صرف اس بات سے لگائیے کہ ایک رپورٹ کے مطابق ماہ گزشتہ میں کراچی میں سب سے زیادہ ہلاکتیں پولیس مقابلوں کے نتیجے میں ہوئیں، ہزاروں افرادپس دیوار زنداں ڈالے گئے، پولیس نے موقع غنیمت جان کرخوب دیہاڑی بنالی، بہت سے چور”چورچور“ کی صدا لگا کربچ نکلنے میں کامیاب ہوگئے، مجرموں کے لیے بنائے جانے والے قانون میں بے گناہ بھی رگڑے میں لائے گئے، صرف لاوڈ اسپیکر ایکٹ پرعمل درآمد کی تیزی کی ایک مثال ملاحظہ فرمائیے کہ ”صحیفہ اہل حدیث“ نامی ہفت روزہ کے ایڈیٹر کے خلاف نمازجمعہ میں اشتعال انگیز تقریر کا مقدمہ جس تاریخ کا بنایا گیا، وہ بجائے جمعہ کے بدھ کادن تھا اورموصوف جن پرکراچی میں بیان کا یہ مقدمہ درج ہوا، اس روزلاہورمیں تھے۔ ایسے ایک دونہیں درجنوں لطیفے سامنے آئے۔
این جی اوزنے اپنے دام کھرے کرنے کے لیے پوری کوشش کی کہ اس کا رخ دینی مدارس کی جانب پھیرا جائے، اور وہ اس میں کافی حد تک کامیاب بھی ہوئے۔ مدارس میں چھاپے، تلاشیاں، طلبہ واساتذہ کوہراساں کرنے اور گرفتاریوں کا گویا ایک سلسلہ شروع ہوگیا، جوتھمنے میں نہ آتا تھا۔ اہل مدارس کومشتعل کرنے کے لیے رجسٹریشن کے پراسس کو نہ صرف مشکل بنادیا گیا بلکہ اس میں ایسے ایسے سوالات ڈالے گئے، جن کا کوئی جواز نہیں بنتا تھا۔ اہل مدارس کا یہ صبر ہی تھا کہ بالآخر جنرل صاحب نے حکومتی قیادت اورمدارس نمائندگان کوساتھ بٹھایا، دونوں طرف کی باتیں سنیں، حکومتی اہل کاروں کی من مانیوں پرسرپیٹ کررہ گئے۔ جلتی پرتیل ڈالنے والی این جی اوزکی گردن ناپنے کا بھی فیصلہ ہوا۔ وزیرداخلہ چوہدری نثارعلی خان کی پریس بریفنگ اورتنظیمات مدارس کے قائدین بالخصوص مولانا قاری محمد حنیف جالندھری اورمولانا مفتی منیب الرحمن کے قومی اخبارات میں شایع ہونے والے کالموں میں اس سلسلے میں تمام تفصیلات آچکی ہیں۔ نصاب کی اصلاح کا فیصلہ ہو، مدارس کی رجسٹریشن آسان بنانے کا معاملہ ہو، یکساں نصاب رائج کرنے کی بات ہویا اشتعال انگیزی پھیلانے والوں کے خلاف کارروائی، تمام معاملات کا افہام وتفہیم سے حل ہو جانا ایک بہت بڑی پیش رفت ہے۔ امید ہے یہ خلیج جواین جی اوزکی محنت سے حائل ہوئی ہے، اب دورہوجائے گی۔
hjjjجنرل صاحب کے ان اقدامات اورشریف حکومت کے ان پرعمل درآمد سے ملکی مسائل ان شاءاللہ بڑی حد تک حل ہوجائیں گے، ہم سمجھتے ہیں کہ ان تمام اقدامات کے ساتھ جنرل صاحب ایک قدم اوربھی اٹھائیں۔ وہ ہے ملک سے فرقہ واریت کے عفریت کا ہمیشہ ہمیشہ کے لیے خاتمہ۔ اس مسئلے کے حل اورخاتمے کے لیے ماضی میں کئی قابل قدر کوششیں ہوئی ہیں اورحسن اتفاق، کہ ہوئی بھی میاں محمد نوازشریف کی حکومتوں میں، ان میں مولانا عبدالستار خان نیازی ؒ کی سربراہی میں بننے والی کمیٹی، ڈاکٹر اسرار احمد مرحوم ؒ کی سربراہی میں بننے والی کمیٹی، سپریم کورٹ کے اس وقت کے چیف جسٹس(ر) جسٹس سید سجاد علی شاہ کا سوموٹو ایکشن وغیرہ قابل ذکرہیں، ان کی فائلوں میں دبی کارگزاریوں کی روشنی میں اہل سنت والجماعت اوراہل تشیع کی قیادت اور دونوں فرقوں کے غیرجانب داراہل علم کوبٹھا کر اس مسئلے کے اصل اسباب وعوامل کاجائزہ لینے، ان کاتجزیہ کرنے، ان میں اندرونی وبیرونی رول کی نشان دہی کرنے، اس کی حوصلہ شکنی کرنے اور فساد و جدال کا باعث بننے والے جملہ امور، جن میں اشتعال انگیز تقاریر، بیانات، کتب، لٹریچر وغیرہ سب ہی شامل ہے، کوزیربحث لانے اور اس پر پابندی عائدکرنے کی ضرورت ہے۔ ہم سمجھتے ہیں کہ سیاست دان کبھی بھی یہ مسئلہ حل نہیں کرناچاہتے، کیوں کہ ان کی بقا کا مداراس پر ہے کہ قوم مختلف ایشوز پر لڑتی رہے، اور وہ حکومت کرتے رہیں۔ اگر جنرل راحیل شریف صاحب اس جانب بھی پیش قدمی فرمائیں، توان کا اس دکھی قوم پراحسان عظیم ہوگا۔ ویسے بھی محرم الحرام قریب ہے اورضلعی وصوبائی سطح پر ابھی سے محرم میں امن وامان کے قیام کے پلان مرتب ہونے شروع ہوچکے ہیں، جن کا حشر قوم ماضی میں دیکھ چکی ہے، سانحہ راول پنڈی کوئی زیادہ پرانی بات نہیں۔ بیوروکریسی میں بیٹھے حکومتی کل پرزے اب بھی اسی نوع کی ڈنگ ٹپاو پالیسیاں ترتیب دیں گے، جن سے فائدے سے زیادہ نقصان ہوتا رہا ہے۔ تو جنرل صاحب! بسم اللہ کیجیے! ایک آپریشن ضرب عضب فرقہ واریت کے خلاف بھی ہوناچاہیے۔

mjehany26@gmail.com

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

شہباز گل نے کراچی واقعہ کو سازش قرار دے دیا

کراچی: وزیراعظم عمران خان کےمعاون خصوصی شہباز گل نے کراچی واقعہ کو سازش قرار دیدیا اور کہا کہ کیپٹن(ر)صفدر کی گرفتاری کا...

ایف آئی اے کی کراچی میں کارروائی، را نیٹ ورک کا اہم رکن گرفتار

ایف آئی اے نے گلستان جوہر میں کارروائی کرتے ہوئے را تیٹ ورک کا اہم رکن گرفتار کرلیا، ترجمان ایف آئی اے...

کرپشن کا الزام، میونسپل کمشنر اور ڈائریکٹر ایڈورٹائزمنٹ معطل

کراچی:غیر قانونی طریقے سے من پسند کمپنیوں کو اشتہارات کے ٹھیکے دینے اور سرکاری فیس وصولی میں خرد برد کے معاملے پر...

رینجرزکی شہرکےمختلف علاقوں میں کارروائیاں، 18ملزم گرفتار

کراچی: سندھ رینجرز نے شہر کے مختلف علاقوں میں کارروائیاں کرتے ہوئے مختلف وارداتوں میں ملوث 18 ملزمان کو گرفتار کر لیا،...