Wednesday, October 28, 2020
Home Trending رفاعی پلاٹس اور عوامی پارکس پر قائم تجاوزات کو قائم نہیں رہنے...

رفاعی پلاٹس اور عوامی پارکس پر قائم تجاوزات کو قائم نہیں رہنے دیا جائے گا، شرجیل میمن

Sharjeel Memon  کراچی، سندھ کے وزیر اطلاعات و بلدیات شرجیل انعام میمن نے کہا ہے کہ اب اس ملک سے اسٹے آرڈر کلچر کا خاتمہ ہونا ضروری ہے۔ ماہانہ صفائی و انسداد تجاوزات مہم کے دوران صفائی ستھرائی کے ساتھ ساتھ رفاعی پلاٹس اور بالخصوص عوامی پارکس پر قائم کسی بھی تجاوزات کو قائم نہیں رہنے دیا جائے گا۔ غیر قانونی طور پر تجاوزات کی اجازت دینے والے محکمے کے افسران کو نہ صرف معطل کردیا جائے گا بلکہ ان کے خلاف قانونی کارروائی بھی عمل میں لائی جائے گی۔ عوام اور میڈیا اس مہم میں ہمارا بھرپور ساتھ دیں اور تجاوزات قائم کرنے والوں کے خلاف ہماری اس مہم کا حصہ بنیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کے روز کراچی کے علاقے شہید ملت روڈ پر کے ایم سی کے زیر انتظام جلال الدین افغانی پارک پر قائم غیر قانونی فٹنس سینٹر اور پارک کے دوسرے حصے میں کینٹین کے نام پر چلائے جانے والے شیشہ پارلر کو مسمار کرنے کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ صوبائی وزیر نے اچانک پارک پر پہنچ کر وہاں کے ایم سی کے اینٹی انکروچمنٹ سیل کی بھاری مشینری کی مدد سے غیر قانونی فٹنس سینٹر کے اطراف قائم چار دیواری کو اپنی نگرانی میں مسمار کروایا جبکہ پارک کے اندر قائم غیر قانونی شیشہ پارلر اور وہاں موجود شیشہ استعمال کرنے کے سامان کو بھی باہر پھینکوا کر توڑ دیا۔ اس موقع پر صوبائی وزیر کے ہمراہ ارکان سندھ اسمبلی نواب تیمور تالپور اور فیاض بھٹ، ایڈمنسٹریٹر کراچی رﺅف اختر فاروقی، سنیئر ڈائیریکٹر کے ایم سی مسعود عالم، اینٹی انکروچمنٹ کے ڈائریکٹر بلال منظر اور دیگر بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔ صوبائی وزیر نے پارک کے اطراف قائم ناجائز دکانوں اور ٹھیلوں کو بھی اپنی نگرانی میں مسمار کروایا جبکہ ناجائز طور پر شیشہ پارلر چلانے والے مالکان کے وکیل کی جانب سے موقع پر پیش کردہ اسٹے آرڈر کو تسلیم کرنے سے انکار کردیا اور کہا کہ سندھ اسمبلی نے شیشہ کے کاروبار کو غیر قانونی قرار دیا ہے جبکہ پارک کے اندر قائم کینٹین پر شیشہ پارلر چلانا کسی صورت قانونی نہیں ہے۔ اس موقع پر فٹنس سینٹر کے مالک کی جانب سے بھی اجازت نامہ دکھایا گیا جو کہ جعلی ثابت ہوا، جس پر صوبائی وزیر نے موقع پر ہی جعلی اجازت نامہ دینے والے کے ایم سی کے افسران کو فوری طور پر معطل کرنے کے احکامات صادر کئے۔ اس موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے شرجیل انعام میمن نے کہا کہ عدالتوں کی جانب سے غیر قانونی کاموں پر اسٹے کے باعث سندھ حکومت اور بالخصوص محکمہ بلدیات کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب اس طرح کے غیر قانونی اسٹے آرڈر کلچر کا اس ملک سے خاتمہ ناگزیر ہوگیا ہے اور میری معزز عدالتوں سے استدعا ہے کہ وہ غیر قانونی کاموں پر اسٹے آرڈر دینے کا سلسلہ بند کریں۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں بھی پارکس اور رفاعی پلاٹس پر تجاوزات قائم کئے گئے تھے تاہم اب یہ سلسلہ کسی صورت نہیں چلنے دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ پارکس عوام کی تفریح کا واحد ذریعہ ہے اور پارکس پر تجاوزات کے باعث عوام کو ان کی تفریح سے محروم کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت اور محکمہ بلدیات سندھ کی جانب سے 22 ستمبر سے شروع کئے جانے والی صفائی و انسداد تجاوزات مہم میں روزانہ کی بنیاد پر اس طرح کی صوبے بھر میں کارروائیاں کی جائیں گی اور اس سلسلے میں میڈیا اور عوام سے بھی اپیل ہے کہ وہ ہمارا بھرپور ساتھ دے۔ ایک سوال کے جواب میں صوبائی وزیر نے کہا کہ لیاری ایکسپریس وے کا باقی مانندہ حصہ وفاقی حکومت کی جانب سے ان کے حصے کی رقم آنے کے بعد مکمل کرلیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ میں ذاتی طور پر قابضین کو معاوضہ دینے کے خلاف ہوں لیکن افسوس کہ لیاری ایکسپریس وے کے 75 فیصد قابضین کو جب معاوضہ دے دیا گیا ہے تو پھر باقی مانندہ 25 فیصد کو بھی دیا جانا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ تجاوزات قائم کرنے والے قابضین کو اب کسی قسم کا معاوضہ دینے کی روایت کا بھی خاتمہ کیا جائے گا اور ان کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ میں میڈیا کے توسط سے تمام غیر قانونی طور پر سرکاری زمینوں، رفاعی پلاٹس اور پارکس پر قائم شادی ہالز ، فٹنس سینٹرز سمیت کسی بھی قسم کی تجاوزات قائم کرنے والوں کو متنبہ کرتا ہوں کہ وہ ازخود تمام تجاوزات ہٹالیں ورنہ اب ان کے خلاف کارروائی کو کوئی نہیں روک سکے گا ۔ ایک اور سوال پر صوبائی وزیر نے کہا کہ ہم نے صفائی اور انسداد تجاوزات کے لئے خصوصی سیل سیکرٹری بلدیات اور ایڈمنسٹریٹر کراچی کی آفس میں قائم کردیا ہے اور وہاں کے فون اور فیکس نمبرز اور ای میل کے پتہ تمام بڑے چھوٹے اخبارات کے ذریعے تشہیر کردئئے ہیں۔ اب عوام سے بھی اپیل ہے کہ وہ اس مہم کو کامیاب بنانے اور تجاوزات کے خاتمے میں اپنا کردار ادا کریں اور ان شکایتی سیل پر شکایات کا اندراج کرائیں اور اگر اس پر کارروائی نہ ہوئی تو افسران کو معطل کردیا جائے گا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

سرجانی ٹاون، گھرمیں چھریوں کے وار سے ایک خاتون ومرد قتل، ریسکیو ذرائع

کراچی: سرجانی ٹاون سیکٹر 4 ڈی میں گھر میں چھریوں کے وار سے ایک خاتون و مرد قتل، ریسکیو کے مطابق دونوں...

کورونا کیسز میں اضافہ، کراچی میں متعدد سرکاری اسکول بند

کراچی :کورونا کیسز میں اضافہ کے پیش نظر ضلع ملیر کے متعدد سرکاری اسکول بند کردیئے گئے ہیں،ضلع ملیر کے 8 سرکاری...

کراچی میں آئندہ 4 روز کے دوران رات میں موسم سرد ہوسکتا ہے،محکمہ موسمیات

کراچی: محکمہ موسمیات نے آئندہ دنوں شہر میں موسم سرد ہونے کی نوید سنادی۔ محکمہ موسمیات کے ترجمان خالد ملک کے مطابق...

تمام شہری گھر سے باہر نکلنے پر ماسک کے استعمال کو یقینی بنائیں( این سی او سی)

کراچی:: نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے گھروں سے باہر نکلنے پر ماسک کا استعمال لازمی قرار دے دیا۔ این سی او...