Monday, November 30, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

کراچی کی چند خوبصورت مقامات کی ڈرون فوٹیج

کراچی پاکستان کا سب سے بڑا اور آباد شہر ہے۔ سابقہ دارالحکومت ہونے کی وجہ سے ، یہ ایک ممکنہ تجارتی...

جامعہ کراچی کی پوائنٹس سروس

وفاقی سطح پر قائم تعلیمی کمیٹی نے اعلان کیا ہے کہملک بھر کے تعلیمی ادارے 15 ستمبر...

پلاسٹک آلودگی ( کرن اسلم)

اگر آپ اپنے ارد گرد نظر دوڑائیں تو آپ کو کسی نہ کسی صورت میں پلاسٹک کی اشیا ضرور ملیں گی۔ مثال کے طور...

بہادرآباد، ڈکیتی کی بڑی واردات،شہری40 لاکھ روپے سے محروم

بہادرآباد میں ڈکیتی کی بڑی واردات، شہری 40 لاکھ روپے سے محروم، ذرائع کے مطابق بہادرآباد شاہ...

گورنر راج کا امکان نہیں،ٹارگٹڈ آپریشن گزشتہ دور سے جاری ہے، شرجیل میمن

Pakistan-sharjeel-memon_12-25-2014_169770_lکراچی: وزیر اطلاعات سندھ شرجیل انعام میمن نے کہا ہے کہ سندھ میں گورنر راج کا کوئی امکان نہیں جب کہ حکومت نے اپنے کسی بھی دور میں کسی بھی مجرم کو کوئی سہولت فراہم نہیں کی۔ کراچی میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے شرجیل میمن نے کہا کہ پھانسی سے قبل صولت مرزا کا بیان سنسنی خیز اور باعث تشویش ہے لیکن میں واضح کردوں کہ سندھ حکومت نے کسی بھی دور میں کسی بھی مجرم کو کوئی سہولت فراہم نہیں کی، اگر ہم مجرمان کو سہولت فراہم کر رہے ہوتے تو صولت مرزا اور اجمل پہاڑی کو کراچی سے دور جیل منتقل نہیں کیا جاتا جب کہ گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد اپنے اوپر لگائے الزامات کا خود جواب دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی جب بھی حکومت رہی جیلوں میں سرچ آپریشن ہوئے جن میں مجرمان سے موبائل فونز اور لیپ ٹاپ بھی برآمد ہوئے جب کہ جیلوں میں جیمرز بھی لگائے گئے ہیں۔ شرجیل میمن کا کہنا تھا کہ سندھ میں گورنر راج کا کوئی امکان نہیں، کراچی میں ٹارگٹڈ آپریشن گزشتہ دور میں بھی کیا گیا اور ایم کیو ایم جب حکومت میں تھی تب بھی آپریشن ہورہا تھا۔ انہوں نے کہا کہ لیاری میں بھی جرائم پیشہ عناصر کے خلاف آپریشن ہوا لیکن ہم نے اس میں مداخلت نہیں کی کیونکہ تمام سیاسی جماعتیں دہشت گردی کا خاتمہ چاہتی ہیں اور رینجرز اور پولیس کو وزیر اعلیٰ کی جانب سے اس کے لئے فری ہینڈ دیا گیا ہے۔

Open chat