Tuesday, December 1, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

نیو میمن مسجدمختصر ڈاکومینٹری

کراچی میں موجود بعض قدیم مساجد تاریخ کاحصہ بن چکی ہیں۔ ان ہی میں سے ایک ایم اے جناح روڈ پر واقع...

کراچی کی متعدد سڑکوں پر اسٹریٹ لائٹس درست کردی گئیں

بلدیہ عظمیٰ کراچی کا کہنا ہے کہ کمشنر و ایڈمنسٹریٹر کراچی افتخار شالوانی کی ہدایت پر کے ایم سی کے ورکس اینڈ سروسز ڈپارٹمنٹ...

گلبرک پولیس کی کاروائی، اسٹریٹ کرائم کی واردات ناکام

گلبرگ پولیس کی کاروائی، اسٹریٹ کرائم کی واردات کو ناکام بنادیا، کاروائی میں 4 اسٹریٹ کرمنلز گرفتار، ملزمان سے چھینی ہوئی نقد رقم، موٹر...

گھر میں اتفاقیہ گولی لگنے سے ایک شخص زخمی

لانڈھی دادو بالی کے قریب گھر میں اتفاقیہ گولی لگنے سے ایک شخص زخمی، زخمی شخص کو جناح ہسپتال منتقل کردیا گیا، جہاں اس...

وفاق کراچی کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک نہ کرے، وزیراطلاعات سندھ

SharjeelInamMemonسندھ کے وزیر اطلاعات و بلدیات شرجیل انعام میمن نے کہا ہے کہ کراچی کو وفاق سے ملنے والی 650 میگاواٹ بجلی کی فراہمی کی رہ میں چند وفاقی وزراءرکاوٹ بن کر صوبے اور وفاق کے درمیان اختلافات پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ وفاقی حکومت سندھ حکومت کے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک نہ کرے۔650 میگاواٹ بجلی پر کراچی کا بھی حق ہے۔کراچی اس ملک کی معیشت کا 65 فیصد ریونیو دینے والا شہر ہے ، وفاق سے 650 میگاواٹ بجلی پر ہمارا بھی پورا حق ہے اور یہ حق ہم ادائیگی کرکے حاصل کررہے ہیں۔وزیر اعظم سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ اپنے وزراءکو صوبے کے خلاف بیانات دینے سے روکیں۔ منگل کی شب جاری اپنے ایک بیان میں شرجیل انعام میمن نے کہا کہ وفاقی حکومت کے چند وزراءکراچی کو وفاق سے ملنے والی 650 میگاواٹ بجلی کی فراہمی پر بری نظر رکھے ہوئے ہیں جو کہ انتہاہی افسوس ناک ہے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی اس ملک کی معیشت کو 65 فیصد آمدنی فراہم کرنے والا شہر ہے اور اس کے ساتھ اس طرح کا سلوک سوتیلی ماں جیسا سلوک ہے۔ شرجیل انعام میمن نے کہا کہ کراچی کے اس کے حق سے دستبردار کرنا انصاف نہیں بلکہ شرمناک ہے۔ انہوں نے کہا کہ 650 میگاواٹ بجلی کی وفاق سے کراچی کو فراہمی روکنا قابل مذمت ہے اور اس پر سندھ حکومت ہر فورم پر آواز بلند کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں بجلی کی پیداوار کے پلانٹ زیادہ تر کراچی کی آمدنی سے لگائے گئے ہیں اور آج بھی جو پلانٹ لگ رہے ہیں اس میںبھی کراچی کی آمدنی ہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے چند روز قبل وزیر اعظم سے بجلی کی 650 میگاواٹ فراہمی کے معاہدے میں توسیع کے لئے خط لکھا تھا، جس پر انہوں نے اس پر نظرثانی کی یقین دہانی کرائی تھی لیکن وفاق کے چند وزراءجو پہلے سے ہی اس کی مخالفت میں لگے ہوئے تھے وہ اس معاہدے میں توسیع کی رہ میں رکاوٹ بن رہے ہیں اور اس کو التواءکا شکار رکھنا چاہتے ہیں۔ شرجیل انعام میمن نے کہا کہ 650 میگاواٹ وفاق سے کراچی کو بجلی اسی نرخ پر ملنی چاہیے، جس نرخ پر ملک کے دیگر شہروں اور صوبوں کو فراہم کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسا نہ کرنے یا قیمت میں ردوبدل کرنے سے کراچی کے صارفین پر بجلی کے بلوں کا اضافی بوجھ پڑ جائے گا۔ شرجیل میمن نے کہا کہ 650 میگاواٹ بجلی ملک کی کل بجلی کی پیداوار کا 3 سے 4 فیصد ہے اور کیا کراچی کے شہریوں، تاجروں اور صنعتکاروں کا جو اس ملک کی ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں ان کا یہ حق نہیں کہ وہ یہ بجلی حاصل کریں۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں یہ بجلی مفت یا کم نرخ پر نہیں بلکہ اسی نرخ پر خرید رہے ہیں، جس نرخ پر دیگر صوبوں اور شہروں کو فراہم کی جارہی ہے۔ شرجیل انعام میمن نے کہا کہ کراچی کے شہریوں کو ان کے حق سے دستبردار نہیں کیا جاسکتا اور اگر ایسا کیا گیا تو سندھ حکومت اس کے خلاف ہر فورم پر آواز بلند کرے گی۔ انہوں نے ہم وزیر اعظم پاکستان سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ کراچی کو ملنے والی 650 میگاواٹ بجلی کے معاہدے میں فوری طور پر توسیع کریں اور اپنا چند وفاقی وزراءجو صوبوں اور وفاق کے مابین اختلافات پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں انہیں صوبے کے خلاف بیانات دینے سے روکیں۔ انہوں نے کہا کہ وفاق اور صوبوں کے مابین ہم آہنگی پیدا کرنے کی ذمہ داری وزیر اعظم پر عائد ہوتی ہے۔

Open chat