Monday, November 30, 2020
- Advertisment -

مقبول ترین

کراچی کی چند خوبصورت مقامات کی ڈرون فوٹیج

کراچی پاکستان کا سب سے بڑا اور آباد شہر ہے۔ سابقہ دارالحکومت ہونے کی وجہ سے ، یہ ایک ممکنہ تجارتی...

جامعہ کراچی کی پوائنٹس سروس

وفاقی سطح پر قائم تعلیمی کمیٹی نے اعلان کیا ہے کہملک بھر کے تعلیمی ادارے 15 ستمبر...

پلاسٹک آلودگی ( کرن اسلم)

اگر آپ اپنے ارد گرد نظر دوڑائیں تو آپ کو کسی نہ کسی صورت میں پلاسٹک کی اشیا ضرور ملیں گی۔ مثال کے طور...

بہادرآباد، ڈکیتی کی بڑی واردات،شہری40 لاکھ روپے سے محروم

بہادرآباد میں ڈکیتی کی بڑی واردات، شہری 40 لاکھ روپے سے محروم، ذرائع کے مطابق بہادرآباد شاہ...

سندھ حکومت کا کورونا ہسپتالوں کو شمسی توانائی سے بجلی فراہم کرنے کا فیصلہ

سندھ حکومت کا کورونا وائرس سے نمنٹےکے لئےبڑا فیصلہ، حکومت نے صوبے کے  کورونا ایمرجنسی سینٹرز کو شمسی توانائی سےبجلی فراہم  کرنے کافیصلہ کر لیا۔ صوبائی وزیر برائے توانائی امتیاز شیخ کے مطابق یہ فیصلہ صوبے میں بجلی کی قلت اور کورونا بحران سے نکلنے کےلئے کیا گیا ہے۔ وزیر توانائی امتیاز احمد شیخ اور عالمی بینک کے افسران نے ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس کا انعقاد کیا، جس میں عالمی بینک کی معاونت سے سندھ میں جاری شمسی توانائی کے منصوبوں پر پیشرفت اور عملدرآمد کی رفتار کا جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں عالمی بینک کے سینئر انرجی اسپیشلسٹ اولیور نائٹ،عالمی بینک کے انجم احمد، ماہاارشد اور دیگر افسران کے علاوہ سیکریٹری توانائی سندھ طارق علی شاہ، پراجیکٹ ڈائریکٹر محکمہ توانائی قاضی محفوظ اور دیگر افسران موجود تھے۔ اس موقع پر وزیر  توانائی سندھ امتیاز شیخ نے ضلع جامشورو میں 560 میگا واٹ اور گھارو کے ضلع ٹھٹہ میں 330 میگاواٹ کے دو سولر پارک بنانے کی ضرورت پر زور دیا۔ اُن کا کہنا تھا کہ ان پارکوں کی تعمیر سے بجلی کی شدید قلت اور بحران پر قابو  پانا ممکن ہوگا۔ امتیاز شیخ نے عالمی بینک کے افسران کو بتایا کہ سندھ حکومت نے پہلے مرحلے میں مختلف ہسپتالوں میں قائم کرونا ایمرجنسی سینٹرز کو شمسی توانائی کے ذریعے بجلی فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ سندھ حکومت صوبے کے 29 اسپتالوں کو شمسی بجلی پر چلانے کے لئے 1.2 ارب روپے لاگت کے منصوبے پر مارچ 2021 تک کام مکمل کر لے گی۔

Open chat