Tuesday, October 20, 2020
Home کالم /فیچر فیس بک اور میرو چرسی (حزب اللہ مجاہد)

فیس بک اور میرو چرسی (حزب اللہ مجاہد)

social-media-arrow-handایک روز ایک صاحب اپنے بیٹے کو ڈانٹ رہے تھے اور ڈانٹ کی وجہ ےہ تھی اسکول سے شکاےت آئی تھی کہ بچہ پڑھائی کی طرف توجہ نہیں دے رہا ہے اس کے ہوم ورک مکمل نہیں ہیں اور اس کی وجہ یہ ہے کہ ےہ بچہ آج کل فیس بک استعمال کر رہا ہے ڈانٹ کے اس منظر کو دیکھ کر مجھے وہ ڈانٹ ےاد آئی جب ہم لڑکپن کی عمر میں تھے تب ہم اسکول کی ہاسٹل سے بھاگ کر گلی کے نکڑ والے سنوکر کلب، کیرم بورڈ کلب جاتے تھے تو ہمیں محترم اساتذہ و ہاسٹل وارڈن کی جانب سے اسی طرح ڈانٹ پڑتی تھی اور ہمیں یہ سمجھایاجاتا تھا کہ سنوکر کلب ےا کیرم بورڈ کلب نہ جائیں کیونکہ وہاں موالی اور چرسی آتے ہیں مگر اس وقت ہم اس بات کو نہیں سمجھتے تھے اور ڈانٹ کے باوجود کیرم بورڈکلب اور سنوکر کلب جاتے تھے مگر جب تھوڑے بڑے ہوئے تب ہمیں اس بات کا شعور آےا کہ سنوکر کلب میں جو میرو چرسی اور اس کے دوست آتے تھے ان کو چرسی اسی لئے کہتے تھے کیونکہ وہ چرس پیتے تھے اور چرس کیا چیز ہے اس کی تعارف کیلئے میرے خیال میں یہ جملہ ہی کافی ہے کہ چرس وہ شئے ہے جو انسان کو چرسی بنادیتا ہے شاید ہمارے محترم اساتذہ و ہاسٹل وارڈن ہمیں چرسی نہیں بنانا چاہتے تھے تب ہمیں سنوکر اور کیرم بورڈ کلب جانے سے منع کرتے تھے وہ دراصل ہمیں سنوکر یا کیرم بورڈ سے دور رکھنا نہیں چاہتے تھے بلکہ وہ ہمیں میرو چرسی اور اس کے دوستوں سے دور رکھنا چاہتے تھے اور میرو چرسی اور اس کے دوستوں سے دور رکھنے کا طریقہ یہی تھا کہ ہمیں سنوکر ےا کیرم بورڈ کلب جانے سے روک دےا جائے کیونکہ اس علاقے میں ےہ ایک ناممکن بات تھی کہ میرو چرسی کے علاوہ کسی یونیوورسٹی کا کوئی پروفیسر ےا کسی میڈیکل کالج کا کوئی طالب علم، کسی مدرسے کا کوئی عالم دین ےا فوج کا کوئی کرنل، کوئی معروف صحافی، کوئی محقق، کوئی سائنسدان،کوئی ادیب ےا پھر کوئی ڈاکٹر بھی انہی کلبوں میں سنوکر ےا کیرم بورڈ کھیلنے آجاتاہوتاکہ ہمارے اساتذہ میرو چرسی سے دور رکھنے کیلئے ہمیں یہ تلقین کرتیں کہ بیٹا آپ میرو چرسی ےاکسی اور کے ساتھ کھیلنے کے بجائے پروفیسر الف ،جیم ایڈوکیٹ، ڈاکٹر شین ےا پھر مولانا غین کے ساتھ کھیلنا تاکہ کھیلتے کھیلتے ان سے کچھ اچھی چیزیں بھی سیکھنے کو بھی مل جائیں کیونکہ ہمیں مکمل ےقین ہے کہ وہ ہمیں سنوکر ےا کیرم بورڈ سے نہیں بلکہ میرو چرسی سے دور رکھنا چاہتے تھے۔ کیونکہ کچھ دن بعد طلباءکیلئے ہاسٹل میںہی کیرم کھیلنے کا انتظام کیا گےا۔
تو یہاں سوال ےہ بنتا ہے کہ کیا گلی کے نکڑ والے اس سنوکر کلب کی طرح فیس بک پر بھی میرو چرسی کا راج ہے اور موصوف اس بچے کو اس وجہ سے ڈانٹ رہے تھے کیونکہ وہ اس کو فیس بکی میرو چرسیوں سے دور رکھنا چاہتے تھے کیونکہ اس بات سے کوئی بھی انکار نہیں کر سکتا کہ سوشل میڈیا مثلا فیس بک ےا ٹویٹر وغیرہ پر کوئی منفی کام نہیں ہوتا ہے جہاں زندگی کے ہر شعبے سے تعلق رکھنے والے ہر شئے کا ایک مثبت استعمال ہے تو ایک منفی استعمال بھی ہے بالکل اسی طرح سوشل میڈےا کا بھی منفی استعمال ہے جو کہ کافی نقصان کا باعث بھی بن سکتا ہے لیکن اس بات سے انکاربھی نا ممکن ہے کہ جہاں فیس بک پر میرو چرسی بھی موجود ہیں مگر وہاں پروفیسر الف، جیم ایڈوکیٹ، ڈاکٹر شین، اور مولانا غین بھی فیس بک پر موجود ہیں بجائے اس کے آپ بچے کو ڈانٹ کر فیس بک سے دور رکھیں تاکہ وہ میرو چرسیوں سے محفوظ رہیں والدین اور اساتذہ کو چاہئے کہ وہ بچوں کو سوشل میڈےا (فیس بک، ٹویٹر وغیرہ ) کے مثبت استعمال کا شعور دیں تاکہ بچے میرو چرسی کے بجائے فیس بک ےا ٹویٹر پر پروفیسر الف ،جیم ایڈوکیٹ ،ڈاکٹر شین ےا مولانا غین کے ساتھ منسلک رہیں اور ان سے کچھ نہ کچھ سیکھنے کی کوشش کریں وہ فیس بک ےا ٹویٹرپر ایسی سرگرمیوں میں حصہ لیں جو ان بچوں میں بیداری شعور sociaolکے ساتھ ساتھ علم، عمل اور جستجو کا باعث بنیں اور بچوں کو تدریس و تحقیق کی جانب راغب کریں کیونکہ علم اور تعلیم کا مطلب ہوم ورک مکمل کرنا ےا کچھ کتابی جملے رٹ کر امتحان میں پہلی پوزیشن کا حصول نہیںبلکہ ہر وہ عمل تعلیم ہے جس سے کچھ مثبت سوچنے مثبت سمجھنے اور مثبت سیکھنے کو مل جائے ویسے بھی اگر آپ کسی مریض کو اس ڈر سے کھانا نہ کھلائیں کہ اگر اس نے کھانا کھالیا تو اس کے پیٹ میں درد ہوگا تو اس کا ہر گز مطلب ےہ نہیں ہے کہ اگر آپ نے کھانا نہیں کھلاےا ہے تو اب اس کے پیٹ میں درد نہیںہوگا بلکہ کچھ عرصے کے بعد اس کے پیٹ میں بھوک کی وجہ سے بھی درد ہوگا اور جب بھوک کی وجہ سے اس کا پیٹ درد کرلے گا تب اس کے پاس جو کچھ بھی رکھا ہوگا وہ کھالے گا اور وہ کھانا اس کیلئے پیٹ درد سے بھی زےادہ نقصان دہ ثابت ہوسکتے ہیں تواس سے پہلے کہ نوبت یہاں تک آجائے کہ وہ بھوک سے کچھ بھی کھالے اوراس کے اثرات انتہائی منفی ہوں آپ اس مریض کو اس کی صحت کے مطابق کھاناکھلادیں تاکہ اس کھانے کے مثبت اثرات مرتب ہوں بالکل اسی طرح اگر سوشل میڈیا پر موجود میرو چرسیوں سے بچوں کو بچانے کیلئے والدین اور اساتذہ ان کو ڈانٹیں گے تو اس کابھی ہر گز ےہ مطلب نہیں ہے کہ بچے فیس بک ےا ٹویٹر کا استعمال ہی چھوڑ دیں گے بلکہ اساتذہ اور والدین کی ڈر سے اب وہ چھپ چھپ کراس کا استعمال کریں گے اور یہ دنےا کی ایک مسلمہ حقیقت ہے کہ اگر کوئی کام چھپ کر کیا جائے تو اس میں مثبت اور منفی کا تمیزپھر ختم ہوجاتا ہے کیونکہ اس کو چھپ کرہی اس لئے کیا جاتا ہے کہ اس کو منفی سمجھا جاتا ہے اور جب کسی کام کو منفی سمجھ کر کیا جائے تو اس کے مثبت استعمال کی طرف جانے والے تمام راستے بند ہوجاتے ہیں اور اس کے اثرات بھی انتہائی منفی ہوسکتے ہیں تو والدین و اساتذہ بچوں کو سوشل میڈےا کے میرو چرسیوں سے بچانے کیلئے انہیں زبردستی اس کے استعمال سے روکنے کے بجائے اس کے مثبت استعمالات اور اثرات کے بارے میں بچوں کو آگاہی دیں اور اس کے منفی استعمال کی صورت میں اس کے منفی اثرات و نقصانات کابھی شعور دیں اور ہمہ وقت انکی نگرانی و رہنمائی بھی کریں اور حکومت کو بھی چاہئے کہ نصابی کتابوں میںاب مواصلات (Communication) سے متعلق اسباق میںفرسودہ ریڈیو اور خط کے علاوہ سوشل میڈےا جیسے جدید مواصلاتی ذرائع کے متعلق بھی طلباءکو آگائی دیں تاکہ ہم اور ہماری نسلیںشعوری طور پر فیس بک سمیت تمام سوشل میڈیا و دیگر جدید مواصلاتی ذرائع کے مثبت پہلووں سے مستفید ہوجائیں اور منفی پہلووں سے گریز کریں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

نارتھ ناظم آباد میں لڑکی کی ٹارگٹ کلنگ

نارتھ ناظم آباد کے علاقے بلاک اے انٹرمیڈیٹ بورڈ آفس کے سامنے گلی میں کار پر فائرنگ سے ایک خاتون شدید زخمی...

امریکا میں 14 سالہ بچی نے کورونا کے علاج میں مددگار مالیکیول دریافت کرلیا

مریکی نشریاتی ادارے سی این این کے مطابق ریاست ٹیکساس کے علاقے فریسکو کی رہائشی نوجوان طالبہ انیقہ چیبرولو کو ’تھری...

اسٹوڈنٹس پیرنٹس فیڈریشن آف پاکستان کا نجی اسکول مالکان کےخلاف احتجاجی مظاہرہ

کراچی:اسٹوڈنٹس پیرنٹس فیڈریشن آف پاکستان کا نجی اسکول مالکان کےخلاف احتجاجی مظاہرہ، گلشن اقبال میں واقع بیکن لائٹ اسکول کے سامنے والدین...

نارتھ ناظم آباد میں گاڑی پر فائرنگ سے 21سالہ لڑکی جاں بحق

نارتھ ناظم آباد میں گاڑی پر فائرنگ سے 21سالہ لڑکی جاں بحق ہوگئی,پولیس کے مطابق ناظم آباد انٹر بورڈ آفس کےقریب نامعلوم...