Tuesday, October 27, 2020
Home خاص خبریں شہری حکومت واٹر اینڈ سیوریج بورڈ ،آفیسرز ایسوسی ایشن اور واٹر بورڈ کلب پر...

واٹر اینڈ سیوریج بورڈ ،آفیسرز ایسوسی ایشن اور واٹر بورڈ کلب پر قبضے کی جنگ شدت اختیار کرگئی

KWSB-Logoکراچی،واٹر اینڈ سیوریج بورڈ میں آفیسرز ایسوسی ایشن اور واٹر بورڈ کلب پر قبضے کی جنگ شدت اختیار کرگئی ہے۔ غیر قانونی ایسوسی ایشن کے ممبران میں پھوٹ پڑگئی ہے۔واٹر بورڈ کے افسران اور انجینئر شہر میں فراہمی ونکاسی آب کی صورت حال پر توجہ دینے کے بجائے کلب اور ایسوسی ایشن کے معاملات میں زیادہ دلچسپی لینے لگے ہیں۔ گزشتہ روزایسوسی ایشن کے خود ساختہ چیئرمین محمد اسلم خان اور رابطہ کمیٹی ایم کیو ایم کے سابق ممبر اور واٹر بورڈ کے افسر سیف یار خان میں شدید لڑائی ہوئی اور بات گالم گلوچ تک پہنچ گئی۔ دونوں افسران نے ایک دوسرے کو سنگین نتائج بھگتنے کی دھمکیاں بھی دیں جبکہ غیر قانونی ایسوسی ایشن آفیسرز کے خود ساختہ تاحیات چیئرمین محمد اسلم کے خلاف افسران نے اتحاد قائم کرلیا ہے۔ اس سلسلے میں واٹر بورڈ کے افسران نے واٹر بورڈ کلب پر قبضے، شادی ہال میں تبدیل کرنے، کیٹرنگ کمپنی کو اونے پونے داموں ٹھیکے پر دینے پر شدید بے چینی اور شدید غصہ پایا جاتا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ کل تک جو افسران محمد اسلم کی وفاداری اور فرمانبرداری کا دم بھرتے تھے انہوں نے آفیسرز کلب پر قبضے کے خلاف اتحاد بنالیا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ افسران جن میں سلیم صدیقی، سیف یار خان، عادل خان، زاہد محمود، جاوید شمیم، اسد اللہ خان، طارق لطیف، شکیل قریشی، ایوب شیخ، سید شکیل احمد، آصف علی خان، ندیم احمد، ندیم باری، اعظم خان، شیزان احمد، نعیم احمد صدیقی، افتخار احمد، محمد عارف، غلام قادر، غیاث الدین، ظہیر عباس، محسن قائم خانی، اویس ملک، احسن اعجاز کاظمی سمیت درجنوں افسران نے محمد اسلم کی خود ساختہ چیئرمین شپ اور کلب پر غیر قانونی قبضے کے خلاف درخواست پر دستخظ کردیئے ہیں اور اس سلسلے میں وزیر بلدیات ناصر حسین شاہ سے رابطہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ گزشتہ روز ڈپٹی ڈائریکٹر ٹیکس اور ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی کے سابق رکن سیف یار خان جب دفتری کام سے غیر قانونی ایسوسی ایشن کے چیئرمین اور ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹر ٹیکس اینڈ ریکوری محمد اسلم خان کے پاس گئے تو انہوں نے دفتر کے کام کے بجائے سیف یار خان سے کلب اور ایسوسی ایشن کے مسئلے پر شدید بدزبانی کی اور انہیں انتہائی غلیظ گالیاں دیں جس پر موجود سیف یار خان نے اپنے ہاتھ میں موجود رجسٹرڈ اسلم خان کو دے مارا جس پر نوبت ہاتھا پائی تک پہنچ گئی۔ اس موقع پر چیخ وپکار مچ گئی اور ملازمین دفتروں سے نکل کر اسلم خان کے دفتر کے باہر جمع ہوگئے جہاں سے محمد اسلم اور سیف یار خان کی گالیوں کی آوازیں آرہی تھیں۔ چند ملازمین نے دفتر میں جا کر دونوں افسران کو علیحدہ کیا۔ دوسری جانب محمد اسلم نے بغیر اجازت کلب کی دیوار توڑ کر دروازے کی تعمیر شروع کردی ہے اور کلب پر اپنا قبضہ ظاہر کرنے کے لئے 1992ء کی تختی آویزاں کردی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ واٹر بورڈ نے افسران اور انجینئر شہر میں فراہمی ونکاسی آب کی صورت حال پر توجہ دینے کے بجائے کلب اور ایسوسی ایشن کے معاملات میں زیادہ دلچسپی لے رہے ہیں۔ واضح رہے کہ واٹر بورڈ آفیسر کلب ان دنوں پراسرار سرگرمیوں اور افراد کا مرکز بنا ہوا ہے۔ اس کے بارے میں افسران نے متعدد بار واٹر بورڈ انتظامیہ کو آگاہ کیا ہے۔ مگر انتظامیہ کوئی دلچسپی نہیں لے رہی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

پشاور دھماکے کی شدید مزمت و قیمتی جانوں کے نقصان پر اظہار افسوس کرتے ہیں، حلیم عادل شیخ

پشاور دھماکے پر پی ٹی آئی مرکزی رہنما حلیم عادل شیخ کی مزمت و قیمتی جانوں کے نقصان پر اظہار افسوس, ان...

سی ایس ایس امتحان، کراچی کے شہریوں کے لیے بڑی خوش خبری

کراچی: ایڈمنسٹریٹر کراچی افتخار علی شالوانی نے فریئر ہال میں سی ایس ایس کارنر کا افتتاح کر دیا، ان کا کہنا تھا...

کراچی چڑیا گھر اور برگد کا درخت

برگد کا درخت متعدد خصوصیات کا حامل سمجھا جاتا ہے۔اس کی ایک خاص بات یہ ہے کہ...

کراچی کی تاریخی لی مارکیٹ

لی مارکیٹ اہل کراچی کے لیے جانا پہچانا نام ہے۔یہ شہر کی قدیم آبادی لیاری کے قریب واقع ہے۔انگریز دور میں...